تمام بی آئی ایم ایس ٹی ای سی ممالک سے ہمارے تعلقات محض سفارتی نوعیت کے ہی نہیں ، بلکہ یہ رابطہ کاری تمدن، تاریخ، فن، زبان، کھان پان اور ساجھا ثقافت کی بھی ہے: وزیر اعظم مودی
وزیر اعظم مودی : بی آئی ایم ایس ٹی ای سی خطے میں تجارت ، اقتصادیات، نقل و حمل، ڈجیٹل اور عوام سے عوام کے درمیان رابطہ کاری کا بڑا موقع
بی آئی ایم ایس ٹی ای سی کا افتتاحی سیشن : وزیر اعظم مودی نے رکن ممالک سے دہشت گردی اور منشیات جیسی لعنت سے نمٹنے کے لئے افزوں تعاون کی اپیل کی۔

نئی دہلی،30؍اگست،

عالی جناب : رائٹ آن ریبل

وزیراعظم اولی جی،

بمسٹک رکن ممالک  سے آئے میرے ساتھی رہنمایان، سب سے پہلے میں اس چوتھے بمسٹک سربراہ اجلاس کی میزبانی اور کامیاب اہتمام کے لئے نیپال حکومت اور وزیراعظم اولی جی کے تئیں دل سے اظہار تشکر کرنا چاہتاہوں۔ حالانکہ میرے لئے یہ پہلا بمسٹک سربراہ اجلاس ہے لیکن 2016 میں مجھے گوا میں برکس سمٹ کے ساتھ بمسٹک ریٹریٹ کی میزبانی کرنے کا موقع ملا تھا۔ گوا میں ہم نے جو لائحہ عمل طے کیا تھا اسی کے مطابق ہماری ٹیموں نے قابل ستائش اعمال کئے ہیں۔

اس میں شامل ہیں:

پہلی سالانہ بمسٹک ڈیزاسٹر انتظام مشق کا اہتمام۔

قومی سلامتی کے سربراہوں کی دو ملاقاتیں،

بمسٹک ٹریڈ فیسلی ٹیشن معاہدے پر تبادلہ خیالات میں رونما ہوئی پیش رفت،

بمسٹک گرڈ انٹر کنکشن کے موضوع پر معاہدہ،

 اس کے لئے میں سبھی ممالک کے مندوبین کا خیر مقدم کرتا ہوں۔

 حضرات!

ان تمام شعبوں کے تمام ممالک کے ساتھ بھارت کے صرف سفارتکارانہ تعلق نہیں ہیں، ہم تمام ملک صدیوں سے تہذیب،  تاریخ، فنون، لسانیات، کھان پان اور ہماری مشترکہ ثقافت کے اٹوٹ تعلقات سے مربوط رہے ہیں۔ اس شعبے کے ایک  جانب  عظیم ہمالیہ کوہستانی سلسلہ ہے، دوسری جانب ہند اور پیسفک سمندروں کے درمیان واقع خلیج بنگال۔ خلیج بنگال کا یہ علاقہ ہم سبھی کی ترقی، سلامتی اور خوشحالی کے لئے خاص اہمیت رکھتا ہے اور اس لئے یہ کوئی حیرت کی بات نہیں ہے کہ بھارت کی نیبر ہڈ فرسٹ یعنی پڑوسی کو پہلی ترجیح اور ایکٹ ایسٹ یعنی مشرق کی جانب دیکھیں، دونوں پالیسیوں کا اتصال اسی خلیج بنگال میں ہوتا ہے۔ 

 حضرات!

ہم سبھی ترقی پذیر ممالک ہیں، اپنے اپنے ملکوں میں امن، خوشحالی  ہمارے لئے سب سے بڑی ترجیح ہے لیکن آج کی باہمی  طور پر مربوط دنیا میں کوئی  اکیلے کام نہیں کرسکتا ہے۔ ہمیں ایک دوسرے کے ساتھ چلنا ہے، ایک دوسرے کا سہارا بننا ہے، ایک دوسری کی کوششوں کا لازم حصہ بننا ہے، میں تسلیم کرتا ہوں کہ یہ سب سے بڑا موقع ہے کنکٹی ویٹی کا۔ تجارتی رابطہ کاری، اقتصادی رابطہ کاری، نقل وحمل کی رابطہ کاری، ڈیجیٹل رابطہ کاری اور  پیپل ٹو پیپل کنکٹی ویٹی یعنی عوام سے عوام کے مابین رابطہ،  تمام زاویوں پر ہمیں کام کرنا ہوگا۔ بمسٹک میں ساحلی جہاز رانی اور موٹر گاڑی سمجھوتوں کو  آگے بڑھانے کے لئے ہم مستقبل میں بھی ملاقات کی میزبانی کرسکتے ہیں۔ ہمارے صنعت کاروں کے مابین تعلق اور رابطہ بڑھانے کے لئے بھارت بمسٹک اسٹارٹ اپ اجتماع کا اہتمام کرنے کے لئے تیار ہے۔ ہم میں سے بیشتر ممالک زرعی ممالک ہیں اور موسمیاتی تبدیلی کے خدشات کا سامنا کررہے ہیں، اس پس منظر میں زرعی تحقیق، تعلیم اور ترقی پر تعاون کے لئے بھارت موسمیاتی اسمارٹ کاشتکاری نظام کے موضوع پر ایک بین الاقوامی اجلاس کا اہتمام کرے گا۔ ڈیجیٹل کنکٹی ویٹی کے شعبے میں بھارت اپنے قومی نالج نیٹ ورک کو  سری لنکا، بنگلہ دیش، بھوٹان اور نیپال میں ترقی دینے کے لئے پہلے سے ہی عہد بند ہے۔ ہم اسے میانمار اور تھائی لینڈ میں بھی بڑھانے کی تجویز رکھتے ہیں۔ مجھے امید ہے کہ تمام بمسٹک ملک اس سال اکتوبر میں نئی دہلی میں منعقد کی جارہی بھارت موبائل کانگریس میں شراکت دار ہوں گے۔ اس کانگریس میں بمسٹک وزارتی اجتماع بھی شامل ہے۔ بمسٹک کے رکن ممالک کے ساتھ رابطہ کاری بڑھانے میں بھارت کے شمال مشرقی خطے کا اہم کردار ہوگا۔ بھارت کے شمال مشرقی خطے کی ترقی کے لئے سائنس اور ٹیکنالوجی شمال مشرقی خطے میں نام کی ایک پہل قدمی ہے۔ ہم اس پروگرام کو بمسٹک ممالک کے لئے توسیع دینے کی تجویز رکھتے ہیں۔ اس کےتوسط سے دہی علاقوں میں توانائی، فضلہ انتظام، زراعت اور صلاحیت سازی کی  حوصلہ افزائی کی جاسکتی ہے۔ ساتھ بھارت کے شمال مشرقی خلائی اپلی کیشن مرکز میں بمسٹک ممالک کے محققین طلباء اور پیشہ وارانہ کے ہم 24 وظائف بھی فراہم کریں گے۔

حضرات!

 اس علاقے کے عوام کے مابین صدیوں پرانے تعلقات ہمارے رابطے کو ایک مضبوط بنیاد فراہم کرتے ہیں۔ اور ان روابط کی ایک خصوصی کڑی بدھ مذہب اور بدھ فلسفہ رہا ہے۔ اگست 2020 میں بھارت بین الاقوامی بدھسٹ اجتماع کی میزبانی کرے گا۔ میں بمسٹک ممالک کو اس موقع پر مہمان ذی وقار کی شکل میں شرکت کی دعوت دیتا ہوں۔ ہماری نوجوان پیڑھی کے مابین رابطہ کاری کو فروغ دینے کے لئے بمسٹک نوجوان ملاقات اور بمسٹک بینڈ فیسٹول کے اہتمام کی تجویز بھارت پیش کرنا چاہتا ہے، اس کے ساتھ ہی ہم بمسٹک یوتھ واٹر اسپورٹس کا اہتمام بھی کرسکتے ہیں۔ بمسٹک ممالک کے نوجوان طلباء کے لئے نالندہ یونیورسٹی میں 30 وظائف اور جپمر انسٹی ٹیوٹ میں ایڈوانسڈ میڈسین کیلئے 12 ریسرچ  فیلو شپ بھی دی جائے گی۔ ساتھ ہی ساتھ بھارت کے آئی ٹیک پروگرام کے تحت سیاحت، ماحولیات، تباہ کاری انتظام، قابل احیاء توانائی، زراعت ، تجارت، اور ڈبلیو ٹی او جیسے موضوعات پر سو مختصر مدتی تربیتی کورس بھی فراہم کرائے جائیں گے۔ خلیج بنگال میں فنون، ثقافت ، بحری قوانین اور دیگر موضوعات پر تحقیق کے لئے ہم نالندہ یونیورسٹی میں خلیج بنگال مطالعات کا ایک مرکز بھی قائم کریں گے۔ اس مرکز میں تمام ملکوں کی زبانوں کے ایک دوسرے سرے وابستہ سلسلے کے بارے میں بھی تحقیق کی جاسکتی ہے۔ ہم تمام ملکوں کی اپنی طویل تاریخ اور اس سے وابستہ سیاحت کے مضمرات کا بھرپور فائدہ اٹھانے کے لئے تاریخی عمارتوں اور مقابر کی مرمت اور احیاء کے لئے تعاون کرسکتے ہیں۔

حضرات!

علاقائی اتحاد اور اقتصادی ترقی اور خوشحالی کے لئے ہماری مشترکہ کوششوں کی کامیابی کے لئے یہ ضروری ہے کہ ہمارے خطے میں امن اور سلامتی کا ماحول قائم ہو۔ ہمالیہ اور خلیج بنگال سے مربوط ہمارے ملک بار بار قدرتی آفات کا سامنا کرتے رہتے ہیں، کبھی سیلاب، کبھی سائیکلون، کبھی زلزلہ، اس پس منظر میں ایک دوسرے کے ساتھ انسانی وسائل کی امداد اور آفات  ارض وسماں کی صورت میں راحت کاری کی کوششوں میں ہمارا تعاون اور تال میل بہت ضروری ہے۔ ہمارے خطے کی جغرافیائی صورت حال عالمی بحری تجارتی راستے سے مربوط ہے اور ہم سبھی کی معیشتوں میں بھی نیلگوں معیشت کی خاص اہمیت ہے، ساتھ ہی آنے والے ڈیجیٹل عہد میں ہماری  معیشتوں کے لئے سائبر معیشت کی اہمیت بھی افزوں طور پر بڑھے گی۔ یہ بات واضح ہے کہ ہمارے خطہ جاتی سلامتی تعاون میں ان تمام موضوعات پر تعاون بڑھانے کی سمت میں ہمیں ٹھوس قدم اٹھانے ہوں گے اور اس لئے اگلے مہینے بھارت میں منعقد ہونے جارہی بمسٹک کثیر ملکی عسکری فیلڈ تربیت مشق اور  بری افواج کے سربراہان کے اجتماع کا میں خیر مقدم کرتا ہوں۔ بھارت بمسٹک ممالک کی سہ خدماتی انسانی امداد اور قدرتی آفات کی صورت میں راحت رسانی کی مشق کی بھی میزبانی کرے گا۔ دوسرے سالانہ بمسٹک ڈیزاسٹر انتظام کی مشق کی میزبانی کے لئے بھی بھارت تیار ہے۔ ہم ڈیزاسٹر انتظام کے شعبے میں مصروف عمل افسران کے لئے صلاحیت سازی میں بھی تعاون کرنے کے لئے تیار ہیں۔ بھارت نیلگوں معیشت پر تمام بمسٹک ملکوں کے نوجوانوں کا ایک ہیکتھن منعقد کرے گا۔ اس سے نیلگو معیشت کے امکانات اور تعاون پر توجہ مرکوز کرنے کا راستہ ہموار ہوگا۔

حضرات!

 ہم میں سے کوئی بھی ملک ایسا نہیں ہے جس نے دہشت گردی اور دہشت گردی کے نیٹ ورک سے مربوط ٹرانس نیشنل جرائم اور منشیات کی تجارت جیسے مسائل کا سامنا نہیں کیا ہو۔ منشیات سے متعلق موضوعات پر بمسٹک فریم ورک میں ایک کانفرنس کا اہتمام کرنے کے لئے تیار ہیں۔ یہ واضح ہے کہ یہ مسائل کسی ایک ملک کے قانون وانتظام سے مربوط مسائل نہیں ہیں، ان کا سامنا کرنے کے لئے ہمیں متحد ہونا ہوگا اور اس کے لئے ہمیں معقول قوانین اور ضوابط کا ڈھانچہ کھڑا کرنا ہوگا۔ اس پس منظر میں ہمارے قانون ساز خصوصا خواتین اراکین پارلیمنٹ کا باہمی رابطہ معاون ثابت ہوسکتا ہے۔ میری تجویز یہ ہے کہ ہمیں بمسٹک ویمن پارلیمنٹرینس فورم کی تشکیل کرنی چاہئے۔

حضرات!

پچھلی دو دہائیوں میں بمسٹک نے قابل ذکر پیش رفت حاصل کی ہے تاہم ابھی ہمارے سامنے بہت لمبا سفر باقی ہے۔ ہمارے اقتصادی اتحاد کو اور عمیق بنانے کے لئے ابھی بہت سے امکانات ہیں اور یہی ہمارے عوام کی ہم سے توقع بھی ہے۔ یہ چوتھی سربراہ ملاقات ہمارے عوام کی توقعات ، امیدوں اور آرزؤوں کو پورا کرنے کی سمت میں ٹھوس قدم اٹھانے کا بہت اچھا موقع ہے۔ اس چوتھی سربراہ ملاقات کا اعلانیہ بہت سے اہم فیصلوں کو اپنے اندر سمیٹے ہوئے ہے۔ ان سے بمسٹک کے ڈھانچے اور ضوابط کو بہت تقویت حاصل ہوگی۔ ساتھ ہی بمسٹک کے خصوصی اعمال کو ٹھوس شکل اور مضبوطی فراہم کرنے کے لئے اس سربراہ ملاقات کی کامیابی ایک اہم سنگ میل ثابت ہوگی۔ اس کے لئے میں میزبان ملک، نیپال کی حکومت، اولی جی اور تمام شریک رہنماؤں کی قیادت کا دلی خیر مقدم کرتا ہوں۔ آگے بھی بھارت آپ کے ساتھ کندھے سے کندھا ملاکر چلنے کے لئے عہد بند ہے۔

 شکریہ !

بہت بہت شکریہ!

 

 

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
As you turn 18, vote for 18th Lok Sabha: PM Modi's appeal to first-time voters

Media Coverage

As you turn 18, vote for 18th Lok Sabha: PM Modi's appeal to first-time voters
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM to visit Kerala, Tamil Nadu and Maharashtra on 27-28 February
February 26, 2024
PM to visit Vikram Sarabhai Space centre (VSSC), Thiruvananthapuram, and inaugurate three important space infrastructure projects worth about Rs 1800 crore
Projects include ‘PSLV Integration Facility’ at Satish Dhawan Space Centre, Sriharikota; ‘Semi-cryogenics Integrated Engine and stage Test facility’ at ISRO Propulsion Complex at Mahendragiri; and ‘Trisonic Wind Tunnel’ at VSSC
PM to also review progress of Ganganyaan
PM to inaugurate, dedicate to nation and lay the foundation stone of multiple infrastructure projects worth more than Rs 17,300 crore in Tamil Nadu
In a step to establish a transshipment hub for the east coast of the country, PM to lay the foundation stone of Outer Harbor Container Terminal at V.O.Chidambaranar Port
PM to launch India's first indigenous green hydrogen fuel cell inland waterway vessel
PM to address thousands of MSME entrepreneurs working in Automotive sector in Madurai
PM to inaugurate and dedicate to nation multiple infrastructure projects related to rail, road and irrigation worth more than Rs 4900 crore in Maharashtra
PM to release 16th instalment amount of about Rs 21,000 crore under PM-KISAN; and 2nd and 3rd instalments of about Rs 3800 crore under ‘Namo Shetkari MahaSanman Nidhi’
PM to disburse Rs 825 crore of Revolving Fund to 5.5 lakh women SHGs across Maharashtra
PM to initiate the distribution of one crore Ayushman cards across Maharashtra
PM to launch the Modi Awaas Gharkul Yojana

Prime Minister Shri Narendra Modi will visit Kerala, Tamil Nadu and Maharashtra on 27-28 February, 2024.

On 27th February, at around 10:45 AM, Prime Minister will visit Vikram Sarabhai Space centre (VSSC) at Thiruvananthapuram, Kerala. At around 5:15 PM, Prime Minister will participate in the programme ‘Creating the Future – Digital Mobility for Automotive MSME Entrepreneurs’ in Madurai, Tamil Nadu.

On 28th February, at around 9:45 AM, Prime Minister will inaugurate, and lay the foundation stone of multiple development projects worth about Rs 17,300 crore at Thoothukudi, Tamil Nadu. At around 4:30 PM, Prime Minister will participate in a public programme in Yavatmal, Maharashtra, and inaugurate and dedicate to nation multiple development projects worth more than Rs 4900 crore at Yavatmal, Maharashtra. He will also release benefits under PM KISAN and other schemes during the programme.

PM in Kerala

Prime Minister’s vision to reform the country’s space sector to realise its full potential, and his commitment to enhance technical and R&D capability in the sector will get a boost as three important space infrastructure projects will be inaugurated during his visit to Vikram Sarabhai Space Centre, Thiruvananthapuram. The projects include the PSLV Integration Facility (PIF) at the Satish Dhawan Space Centre, Sriharikota; new ‘Semi-cryogenics Integrated Engine and stage Test facility’ at ISRO Propulsion Complex at Mahendragiri; and ‘Trisonic Wind Tunnel’ at VSSC, Thiruvananthapuram. These three projects providing world-class technical facilities for the space sector have been developed at a cumulative cost of about Rs. 1800 crore.

The PSLV Integration Facility (PIF) at the Satish Dhawan Space Centre, Sriharikota will help in boosting the frequency of PSLV launches from 6 to 15 per year. This state-of-the-art facility can also cater to the launches of SSLV and other small launch vehicles designed by private space companies.

The new ‘Semi-cryogenics Integrated Engine and stage Test facility’ at IPRC Mahendragiri will enable development of semi cryogenic engines and stages which will increase the payload capability of the present launch vehicles. The facility is equipped with liquid Oxygen and kerosene supply systems to test engines up to 200 tons of thrust.

Wind tunnels are essential for aerodynamic testing for characterisation of rockets and aircraft during flight in the atmospheric regime. The “Trisonic Wind Tunnel” at VSSC being inaugurated is a complex technological system which will serve our future technology development needs.

During his visit, Prime Minister will also review the progress of Gaganyaan Mission and bestow ‘astronaut wings’ to the astronaut-designates. The Gaganyaan Mission is India’s first human space flight program for which extensive preparations are underway at various ISRO centres.

PM in Tamil Nadu

In Madurai, Prime Minister will participate in the programme ‘Creating the Future – Digital Mobility for Automotive MSME Entrepreneurs’, and address thousands of Micro, Small and Medium enterprises (MSMEs) entrepreneurs working in the automotive sector. Prime Minister will also launch two major initiatives designed to support and uplift MSMEs in the Indian automotive industry. The initiatives include the TVS Open Mobility Platform and the TVS Mobility-CII Centre of Excellence. These initiatives will be a step towards realising the Prime Minister’s vision of supporting the growth of MSMEs in the country and helping them to formalise operations, integrate with global value chains and become self-reliant.

In the public programme at Thoothukudi, Prime Minister will lay the foundation stone of Outer Harbor Container Terminal at V.O.Chidambaranar Port. This Container Terminal is a step towards transforming V.O.Chidambaranar Port into a transshipment hub for the east coast. The project aims to leverage India's long coastline and favourable geographic location, and strengthen India's competitiveness in the global trade arena. The major infrastructure project will also lead to creation of employment generation and economic growth in the region.

Prime Minister will inaugurate various other projects aimed at making the V.O.Chidambaranar Port as the first Green Hydrogen Hub Port of the country. These projects include desalination plant, hydrogen production and bunkering facility etc.

Prime Minister will also launch India's first indigenous green hydrogen fuel cell inland waterway vessel under Harit Nauka initiative. The vessel is manufactured by Cochin Shipyard and underscores a pioneering step for embracing clean energy solutions and aligning with the nation's net-zero commitments. Also, Prime Minister will also dedicate tourist facilities in 75 lighthouses across ten States/UTs during the programme.

During the programme, Prime Minister will dedicate to nation rail projects for doubling of Vanchi Maniyachchi - Nagercoil rail line including the Vanchi Maniyachchi - Tirunelveli section and Melappalayam - Aralvaymoli section. Developed at the cost of about Rs 1,477 crore, the doubling project will help in reducing travel time for the trains heading towards Chennai from Kanyakumari, Nagercoil & Tirunelveli.

Prime Minister will also dedicate four road projects in Tamil Nadu, developed at a total cost of about Rs 4,586 Crore. These projects include the four-laning of the Jittandahalli-Dharmapuri section of NH-844, two-laning with paved shoulders of the Meensurutti-Chidambaram section of NH-81, four-laning of the Oddanchatram-Madathukulam section of NH-83, and two-laning with paved shoulders of the Nagapattinam-Thanjavur section of NH-83. These projects aim to improve connectivity, reduce travel time, enhance socio-economic growth and facilitate pilgrimage visits in the region.

PM in Maharashtra

In a step that will showcase yet another example of commitment of the Prime Minister towards welfare of farmers, the 16th instalment amount of more than Rs 21,000 crores under the Pradhan Mantri Kisan Samman Nidhi (PM-KISAN), will be released at the public programme in Yavatmal, through direct benefits transfer to beneficiaries. With this release, an amount of more than 3 lakh crore, has been transferred to more than 11 crore farmers’ families.

Prime Minister will also disburse 2nd and 3rd instalments of ‘Namo Shetkari MahaSanman Nidhi’, worth about Rs 3800 crore and benefiting about 88 lakh beneficiary farmers across Maharashtra. The scheme provides an additional amount of Rs 6000 per year to the beneficiaries of Pradhan Mantri Kisan Samman Nidhi Yojana in Maharashtra.

Prime Minister will disburse Rs 825 crore of Revolving Fund to 5.5 lakh women Self Help Groups (SHGs) across Maharashtra. This amount is additional to the Revolving fund provided by the Government of India under National rural livelihood Mission (NRLM). Revolving Fund (RF) is given to SHGs to promote lending of money within SHGs by rotational basis and increase annual income of poor households by promoting women led micro enterprises at village level.

Prime Minister will initiate distribution of one crore Ayushman cards across Maharashtra. This is yet another step to reach out to beneficiaries of welfare schemes so as to realise the Prime Minister’s vision of 100 percent saturation of all government schemes.

Prime Minister will launch the Modi Awaas Gharkul Yojana for OBC category beneficiaries in Maharashtra. The scheme envisages the construction of a total 10 lakh houses from FY 2023-24 to FY 2025-26. Prime Minister will transfer the first instalment of Rs 375 Crore to 2.5 lakh beneficiaries of the Yojana.

Prime Minister will dedicate to nation multiple irrigation projects benefiting Marathwada and Vidarbha region of Maharashtra. These projects are developed at a cumulative cost of more than Rs 2750 crore under Pradhan Mantri Krishi Sinchai Yojna (PMKSY) and Baliraja Jal Sanjeevani Yojana (BJSY).

Prime Minister will also inaugurate multiple rail projects worth more than Rs. 1300 crore in Maharashtra. The projects include Wardha-Kalamb broad gauge line (part of Wardha-Yavatmal-Nanded new broad gauge line project) and New Ashti - Amalner broad gauge line (part of Ahmednagar-Beed-Parli new broad gauge line project). The new broad gauge lines will improve connectivity of the Vidarbha and Marathwada regions and boost socio-economic development. Prime Minister will also virtually flag off two train service during the programme. This includes train services connecting Kalamb and Wardha; and train service connecting Amalner and New Ashti. This new train service will help improve rail connectivity and benefit students, traders and daily commuters of the region.

Prime Minister will dedicate to nation several projects for strengthening the road sector in Maharashtra. The projects include four laning of the Warora-Wani section of NH-930; road upgradation projects for important roads connecting Sakoli-Bhandara and Salaikhurd-Tirora. These projects will improve connectivity, reduce travel time and boost socio-economic development in the region. Prime Minister will also inaugurate the statue of Pandit Deendayal Upadhyay in Yavatmal city.