Share
 
Comments

بھارتی جنتا پارٹی بھارت میں سب سے بڑی سیاسی جماعت ہے، جو ملک کے طول و ارض میں اپنی سرگرم موجودگی کے ساتھ ملاحظہ کی جا سکتی ہے۔ لوک سبھا کے 2014 کے انتخابات میں بی جے پی تین دہائیوں میں اپنے طور پر اکثریت حاصل کرنے والی پہلی جماعت بن گئی۔ اس لحاظ سے بھی یہ اولین غیر کانگریسی جماعت ہے جس نے یہ کرشمہ کرکے دکھایا ہے۔

26 مئی 2014 کو جناب نریندر مودی کو بھارت کے وزیر اعظم کے طور پر حلف دلایا گیا۔ ان کی قیادت میں، بی جے پی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت نے مبنی بر شمولیت اور ترقیات سے مملو حکمرانی کا ایک عہد متعارف کرایا ہے، کاشتکاروں، ناداروں، حاشیے پر زندگی بسر کرنے والوں، نوجوانوں، خواتین اور نو متوسط طبقے کی توقعات کی تکمیل کر رہی ہے۔

جناب نریندر مودی کو 2014 میں راشٹرپتی بھون میں بطور وزیر اعظم عہدے کا حلف دلایا جا رہا ہے۔

بی جے پی کی تاریخ 1980 سے شروع ہوتی ہے جب یہ پارٹی جناب اٹل بہاری واجپئی کی صدارت میں وجود میں آئی تھی۔ بی جے پی کا پیش رو بھارتی جن سنگھ بھارت کی سیاست میں 1950،60 اور 70 کی دہائیوں میں سرگرم رہا تھا اور اس کے قائد شیاما پرساد مکھرجی نے آزاد بھارت کی اولین کابینہ میں خدمات انجام دی تھیں۔ بھارتی جن سنگھ ، 1970 سے لے کر 1979 تک، جناب مرارجی دیسائی کی قیادت میں تشکیل کردہ جنتا پارٹی حکومت کا ایک مربوط حصہ تھا۔ یہ بھارت کی تاریخ میں اب تک کی اولین غیر کانگریسی حکومت تھی۔

BJP: For a strong, stable, inclusive& prosperous India

جناب ایل کے ایڈوانی، جناب اٹل بہاری واجپئی اور جناب مرلی منوہر جوشی ، نئی دہلی میں منعقدہ بی جےپی کی ایک میٹنگ میں

بی جے پی ایک مضبوط، خود کفیل، مبنی بر شمولیت اور خوشحال ہندوستان کے قیام کے لئے پابند عہد ہے، اور ہماری قدیم ثقافت اور روایات سے ترغیب حاصل کرتی ہے۔ یہ پارٹی پنڈت دین دیال اپادھیائے کے ذریعہ پیش کیے گئے ’متحدہ انسانیت‘ کے فلسفے سے گہرائی سے متاثر رہی ہے۔ بی جےپی بھارت کے معاشرے کے ہر طبقے، خصوصاً بھارت کے نوجوانوں سے تعاون حاصل کر رہی ہے۔

نسبتاً بہت مختصر سی مدت میں بھارت کے سیاسی نظام میں بی جے پی ایک اہم قوت بن کر ابھری ہے ۔1989 میں (اپنے آغاز کے 9 برسوں کے بعد) لوک سبھا میں پارٹی کی نشستیں دو (1984) سے بڑھ کر 86 نشستوں کی شکل میں سامنے آئی اور بی جے پی کانگریس مخالف تحریک کے مرکز میں تھی جس نے قومی محاذ قائم کیا اور اس محاذ نے 1989۔ 1990 کے دوران بھارت پر حکمرانی کی۔ یہ سلسلہ 1990 کی دہائی تک جاری رہا کیونکہ متعدد ریاستوں میں بی جے پی کی حکومتوں نے 1990 کے اسمبلی انتخابات میں حکومت سازی کی۔ 1991 میں لوک سبھا میں یہ پارٹی اہم حزب اختلاف کی جماعت بن گئی جو قدرے نو عمر جماعت کے لئے ایک قابل ذکر کامیابی تھی۔

bjp-namo-in3

بی جے پی کے قائدین نئی دہلی میں منعقدہ پارٹی کی ایک میٹنگ کے دوران

1996 کے موسم گرما میں جناب اٹل بہاری واجپئی کو ملک کے وزیر اعظم کے طور پر حلف دلایا گیا، اولین وزیر اعظم جس کا پس منظر مکمل طور پر غیر کانگریسی تھا۔ بی جے پی نے 1998 اور 1999 کے انتخابات میں عوام الناس کی رائے عامہ حاصل کی تھی۔ 1998 سے لے کر 2004 کے دوران چھ برسوں کی مدت کے دوران جناب واجپئی کی قیادت میں خدمات انجام دیں۔ جناب واجپئی کی قیادت میں این ڈی اے حکومت کو اب بھی ان ترقیاتی پہل قدمیوں کے لئے یاد کیا جاتا ہے جنہوں نے بھارت کو ترقی کی نئی بلندیوں سے ہمکنار کیا۔

bjp-namo-in2

جناب اٹل بہاری واجپئی کو نئی دہلی میں بطور وزیر اعظم حلف دلایا جا رہا ہے۔

جناب نریندر مودی نے 1987 میں قومی دھارے کی سیاست میں قدم رکھا اور ایک سال کے اندر گجرات بی جے پی کے جنرل سکریٹری بن گئے۔ ان کی تنظیمی ہنرمندیاں 1989 کی نیائے یاترا اور 1989 کی لوک شکتی یاترا کے پس پشت کارفرما رہی تھیں۔ ان کوششوں نے بی جے پی کو پہلے گجرات میں 1990 میں مختصر مدت کے لئے اور پھر 1995 سے تا حال برسر اقتدار رہنے میں مدد دی۔ جناب مودی 1995 میں بی جےپی کے قومی سکریٹری بن گئے 1998 میں انہیں جنرل سکریٹری (تنظیم) کی ذمہ داریاں سونپی گئیں، جو پارٹی کی تنظیم کا ازحد اہم عہدہ تھا۔ تین سال کے بعد 2001 میں پارٹی نے انہیں گجرات کے وزیر اعلیٰ کے طور پر عہدہ سنبھالنے کی ذمہ داری سونپی۔ 2002، 2007 اور 2012 میں وہ ازسر نو وزیر اعلیٰ منتخب ہوئے۔

بی جے پی کے بارے میں مزید جانیں، پارٹی کی آفیشل ویب سائٹ ملاحظہ کریں

بھارتیہ جنتا پارٹی کا ٹوئیٹر پیج

جناب ایل کے اڈوانی جی کی ویب سائٹ

جناب راج ناتھ سنگھ کی ویب سائٹ

راج ناتھ سنگھ کا ٹوئیٹر پیج

جناب نتن گڈکری کی ویب سائٹ

نتن گڈکری کا ٹوئیٹر پیج

بی جے پی صدر جناب جے پی نڈا کا ٹوئیٹر پیج

 

بی جے پی کے وزرائے اعلیٰ

گجرات کے وزیر اعلیٰ بھوپیندر پٹیل کی ویب سائٹ

بھوپیندر پٹیل کا ٹوئیٹر پیج

ہریانہ کے وزیر اعلیٰ منوہر لال کھتر کی ویب سائٹ

منوہر لال کھتر کا ٹوئیٹر پیج

اترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کا ٹوئیٹر اکاؤنٹ

اترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کی ویب سائٹ

اتراکھنڈ کے وزیر اعلیٰ پشکر سنگھ دھامی کا ٹوئیٹر اکاؤنٹ

آسام کے وزیر اعلیٰ جناب ہمانتا بسوا سرما کا ٹوئیٹر اکاؤنٹ

تری پورہ کے وزیر اعلیٰ بپلب کمار دیب کا ٹوئیٹر اکاؤنٹ

اروناچل پردیش کے وزیر اعلیٰ پیما کھنڈو کا ٹوئیٹر پیج

گوا کے وزیر اعلیٰ جناب پرمود ساونت کا ٹوئیٹر پیج

منی پور کے وزیر اعلیٰ این برین سنگھ کی ویب سائٹ

این برین سنگھ کا ٹوئیٹر پیج

ہماچل پردیش کے وزیر اعلیٰ جے رام ٹھاکر کی ویب سائٹ

جے رام ٹھاکر کا ٹوئیٹر پیج

کرناٹک کے وزیر اعلیٰ باسوراج بومائی کا ٹوئیٹر پیج

'من کی بات ' کے لئے اپنے مشوروں سے نوازیں.
وزیر اعظم نے ’پریکشا پے چرچا 2022‘ میں شرکت کے لیے مدعو کیا
Explore More
اترپردیش کے وارانسی میں کاشی وشوناتھ دھام کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کی تقریر کا متن

Popular Speeches

اترپردیش کے وارانسی میں کاشی وشوناتھ دھام کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کی تقریر کا متن
Corporate tax cuts do boost investments

Media Coverage

Corporate tax cuts do boost investments
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
سوشل میڈیا کارنر،25 جنوری 2022
January 25, 2022
Share
 
Comments

Economic reforms under the leadership of PM Modi bear fruit as a study shows corporate tax cuts implemented in September 2019 resulted in an economically meaningful increase in investments.

India appreciates the government initiatives and shows trust in the process.