Share
 
Comments
New reforms announced in the Budget not only give a boost to the economy: PM
Budget aims at the economic empowerment of every citizen in the country: PM Modi
The Union Budget adopts an integrated approach for the Agriculture sector: PM Modi

نئی دہلی  یکم  فروری  :وزیراعظم نریندرمودی نے آج مرکزی بجٹ 2020کو مستقبل کے خاکے اور قدم اٹھانے والابجٹ قراردیاہے ۔

لوک سبھامیں مرکزی بجٹ پیش کئے جانے کے بعد ، وزیراعطم نے اپنی رائے زنی میں کہا‘‘ بجٹ میں جن نئئ اصلاحات کا اعلان کیاگیاہے ، ان سے نہ صرف معاش کو فروغ حاصل ہوگا بلکہ اس کا مقصد ملک میں ہرشہری کو معاشی طورپر بااختیاربنانا بھی ہے ۔

انھوں نے کہاکہ ‘‘اس بجٹ سے نئی دہائی میں معیشت کو مزید مستحکم بنانے کی راہ میں پیش رفت ہوئی ہے ۔ ’’

 

روزگارکے مواقع پیداکرنے پرتوجہ

وزیراعظم نے کہا کہ بجٹ 2020 میں زراعت ، بنیادی ڈھانچے ، کپڑے کی صنعت اورٹکنالوجی جیسے ، روزگارکے مواقع پیداکرنے والے بڑے شعبوں پرتوجہ مرکوز کی گئی ہے ۔ انھوں نے کہا‘‘ 16نکات سے کسانوں کی آمدنی دوگناکرنے میں مددملے گی اوردیہی علاقوں میں روزگارکے مزید مواقع پیداہوں گے ’’۔

انھوں نے کہا ‘‘ مرکزی بجٹ میں زرعی شعبے کے لئے ایک مربوط نظریہ اختیارکیاگیاہے ، وہیں کاشتکاری کے روایتی طریقوں کے علاوہ باغبانی ، ماہی گیری اور مویشی پروری میں بھی ویلیو ایڈیشن میں اضافہ ہوگا’’۔

انھوں نے کہ‘‘ سمندری معیشت میں کوششو ں سے مچلی کی ڈبہ بندی اورمارکیٹنگ میں نواجوں کے لئے روزگارکے مزید مواقع پیداہوں گے ۔

کپڑے کی صنعت کا شعبہ

وزیراعظم نے کہاکہ تکنیکی ٹیکسٹائل میں نئی مشینوں پرایک فیصلہ کیاگیاہے ۔ انھوں نے کہ بجت میں خام مال کے محصول کے ڈھانچے میں بھی اس طرح  کے اصلاحات کا اعلان کیاگیاہے کہ اس سے بھارت میں انسان کے بنانے ہوئے فائیبر کی پیداوار میں اضافہ ہو۔ وزیراعظم نے کہا کہ اس اصلاح کا مطالبہ ، پچھلی 3دہائیوں سے کیاجارہاتھا۔

 

صحت کاشعبہ

وزیراعظم نے کہاکہ ‘‘ آیوش مان بھارت پروگرام کی وجہ سے ملک میں صحت کے شعبے میں وسعت آئی ہے ۔ اس سے مزید انسانی وسائل کی گنجائش میں وسعت پیداہوتی ہے ،چاہے ڈاکٹرز ہوں نرسیں ہوں یااٹینڈینٹس ہوں اس کے ساتھ ساتھ ملک میں طبی آلات کی مینوفیکچرنگکی ضرورت بھی ہے اورحکومت نے اس سمت میں بہت سے فیصلے کئے ہیں ۔

 

ٹیکنالوجی کا شعبہ

وزیراعظم نے کہاکہ حکومت نے ٹیکنالوجی شعبے میں روزگارکے مواقع پیداکرنے میں بہتری کے لئے بہت سے خصوصی اقدامات کئے ہیں ، ‘‘ ہم نے اسمارٹ سٹی ، الیکٹرانک مینوفیکچرنگ ، ڈیٹامرکز پارک، بایو ٹکنالوجی اورکوانٹم ٹیکنالوجی سے متعلق پالیسی کے سلسلے میں بہت سے اقدامات کئے ہیں ۔

انھوں نے کہا‘‘بجٹ میں ڈگری کورسز ، مقامی اداروں میں انٹرن شب اور آن لائن ڈگری کورسز میں اپیرنٹس شپ جیسے نئے اوراختراعی اقدامات کے ذریعہ نوجوانوں میں ہنرمندی کے فروغ پرتوجہ مرکوز کی ہے ’’۔

یہ کہتے ہوئے کہ ایم ایس ایم ای اوربرآمد کے شعبے ، روزگارکے مواقع پیداکرنے کے وسائل ہیں ، انھوں نے کہاکہ بجٹ میں چھوٹی صنعتوں کے فائنانسنگ کے ساتھ ساتھ برآمدمیں اضافے پربھی توجہ دی گئی ہے ۔

 

بنیادی ڈھانچہ

انھوں نے کہاکہ ایک جدید بھارت کو جدید بنیادی ڈھانچےے کی ضرورت ہے اور یہ شعبہ روزگار کے کافی زیادہ مواقع پیداکرنے والا شعبہ ہے ۔ انھوں نے کہ ‘‘ 100لاکھ کروڑروپے سے زیادہ رقم 6500سے زیادہ پروجیکٹوں میں لگائی جارہی ہے  اوراس سے بڑے پیمانے پرروزگار کے مواقع پیداہوں گے ۔ قومی لاجسٹکس پالیسی سے بھی تجارت ،صنعت اورروزگار میں مددملے گی ۔

انھوں نے کہاکہ 100نئے ہوائی اڈوں کی تعمیر کے اعلان سے ملک میں سیاحت کو فروغ حاصل ہوگا۔ اوراس کے ساتھ ساتھ روزگارکی بڑے پیمانے پرگنجائش پیداہوگی ۔ ’’

 

سرمایہ کاری

وزیراعظم نے کہاکہ سرمایہ کاری کو فروغ دینے کے لئے بہت سے تاریخی نوعیت کے اقدامات کئے ہیں جو روزگارکے مواقع پیداکرنے میں ایک بڑی مدد ثابت ہوگا۔

‘‘بانڈمارکیٹ کو مستحکم بنانے کے لئے بہت سے اقدامات کئے ہیں اورساتھ ہی ساتھ بنیادی ڈھانچے کے پروجیکٹوں کی طویل مدتی فائنانسنگ بھی کئ گئی ہے ۔ا س طرح ڈویڈینڈکی تقسیم پرٹیکس کو ختم کئے جانے سے کمپنیوں کو مزید سرمایہ کاری کے لئے 25ہزار کروڑروپے سے زیادہ کی رقم حاصل ہوگی ’’۔

‘‘راست غیرملکی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے لئے ٹیکس رعایت کا بھی اعلان کیاگیاہے ۔

انھوں نے کہا‘‘ اسی طرح ٹیکس فوائد اسٹارٹ اپس کو فراہم کرائے گئے ہیں اورریئل اسٹیٹ کے شعبے کو بھی ٹیکس فوائد دیئے گئے ہیں ’’۔

 

ٹیکس عائد کرنے میں اعتماد پرتوجہ

وزیراعظم نے کہاکہ حکومت ایسا ماحول بنارہی ہے جس میں کوئی تنازعی نہ لیکن انکم ٹیکس میں اعتماد قائم رہے ۔

انھوں نے کہا ‘‘کمپنی قانون میں چھوٹی چھوٹی غلطیوں تک کو جرم قراردیاگیاتھالیکن اب ہم نے اس طرح کے کاموں کو جرم قرارینا بند کرنے کافیصلہ کیاہے ’’۔

‘‘ہم ٹیکس دہندگان کا ایک چارٹرجاری کررہے ہیں ، جس میں ٹیکس دہندگان کے حقوق بیان کریں گے ۔ ’’

اسی سمت اعتماد میں اضافہ کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ اب بجٹ میں اعلان کیاگیاہے کہ آئی ایس ایم ای کا آڈٹ لازمی نہیں ہوگا۔ جن کی مجموعی تجارت 5کروڑتک ہے ۔

انھوں نے کہا‘‘اس سے پہلے یہ حدایک کروڑروپے تھی ، لیکن اب اس میں اضافہ کرکے یہ 5کروڑروپے کردی گئی ہے ۔

 

سرکاری ملازمتوں کے لئے متحدہ امتحان

انھوں نے کہا‘‘ اب تک ملک کے نوجوانوں کو مختلف سرکاری ملازمتوں کے لئے مختلف امتحانات دینے ہوتے تھے ۔ اس نظام میں نظم تبدیلیاں لاتے ہوئے بھرتی سے متعلق قومی ایجنسی ، آن لائن مشترکہ امتحانات کا انعقاد کریگی ۔ یہ امتحانات بینکوں ، ریلویز یاکسی بھی دیگر سرکاری ملازمت کے لئے ہوں گے ’’۔

 

کم سے کم حکومت زیادہ سے زیادہ حکمرانی

وزیراعظم نے کہاکہ فیس لیس اپیل ، آسان بنائے گئے براہ راست ٹیکس ، سرکاری شعبے کے یونٹوں کی حصص کی فروخت شروع کرنے کی کوششیں ، سرکاری خریداری کامتحدنظام /خودبخود اندراج جیسے سبھی اقدامات کا مقصد کم سے کم حکومت اور زیادہ سے حکمرانی ہے ۔

 

کام کرنے میں آسانی اورزندگی گزربسرمیں آسانی

وزیراعظم نے مزید کہاکہ بجٹ میں ایک لاکھ سے زیادہ گرام پنچایتو نکی آنگن واڑیوں ، اسکولوں ، تندرستی مرکزوں اور پولیس اسٹیشنوں کو براڈ بینڈ انٹرنیٹ کے ذریعہ مربوط کرنے کا اعلان کیاگیاہے ۔

انھوں نے کہاکہ اس سے ‘‘ کام کرنے میں آسانی اورگزربسرمیں آسانی ’’ میں مدد ملے گی ۔

انھوں نے کہا ‘‘ اس سے براڈبینڈ کو ذریعہ دوردراز کے بہت سے گاوؤں کو مربوط کرنے میں مددملے گی ۔

انھوں نے مرکزی بجٹ 2020کو ایسا بجٹ بتایاکہ جس سے آمدنی اور سرمایہ کاری ، مانگ اور صرفے کو استحکام ملتاہے ۔ایسا بجٹ جس سے مالی نظام اورقرضے کی آمد میں ایک نئی جان پیداہوگئی ۔

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

Click here to read full text speech

'من کی بات ' کے لئے اپنے مشوروں سے نوازیں.
20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Explore More
دیوالی کے موقع پر جموں و کشمیر کے نوشہرہ میں ہندوستانی مسلح افواج کے جوانوں کے ساتھ وزیر اعظم کی بات چیت کا متن

Popular Speeches

دیوالی کے موقع پر جموں و کشمیر کے نوشہرہ میں ہندوستانی مسلح افواج کے جوانوں کے ساتھ وزیر اعظم کی بات چیت کا متن
Indian economy shows strong signs of recovery, upswing in 19 of 22 eco indicators

Media Coverage

Indian economy shows strong signs of recovery, upswing in 19 of 22 eco indicators
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
Share
 
Comments
Inaugurates AIIMS, Fertilizer Plant and ICMR Centre
Double engine Government doubles the speed of Developmental works: PM
“Government that thinks of deprived and exploited, works hard as well get results”
“Today's event is evidence of determination new India for whom nothing is impossible”
Lauds UP Government for the work done for the benefit of sugarcane farmers

Prime Minister Shri Narendra Modi dedicated to the nation various development projects in Gorakhpur, Uttar Pradesh.

The Prime Minister congratulated the people of UP for the inauguration of AIIMS and fertilizer plant and for the new building of Regional Medical Research Center of ICMR in Gorakhpur. He recalled laying the foundation stone for AIIMS and fertilizer plant, 5 years ago and inaugurating both today, underlining the working style of the government of finishing projects once undertaken.

The Prime Minister remarked that when there is a double engine Government, then the speed of implementing developmental works is also doubled. He said when work is done with a good intention, then even disasters cannot become a hindrance. When there is a government that cares about the poor, vulnerable & disadvantaged, it also works hard and shows results by bringing them along. He said today's event is proof that when the new India is determined, nothing is impossible.

The Prime Minister said, in a three pronged approach, the Government stopped the misuse of urea by introducing 100% neem coating of urea. He said soil health cards are given to crores of farmers so that they can decide what kind of fertilizer is needed for their farm. He said the Government laid emphasis on increasing the production of urea. Closed fertilizer plants were also forced to reopen to increase the production. The Prime Minister informed that with the completion of 5 fertilizer plants in different part of the country, 60 lakh tonnes of urea will be available in the country.

The Prime Minister appreciated the Government of Uttar Pradesh for the unprecedented work done for the sugarcane farmers in the recent years. He lauded the Government for increasing the remunerative price for sugarcane farmers, recently up to ₹300/- and for paying almost as much as the previous governments paid to sugarcane farmers in the past 10 years.

The Prime Minister said after independence till the beginning of this century, there was only one AIIMS in the country. Former Prime Minister Shri Atal Bihari Vajpayee had approved 6 more AIIMS. The Prime Minister said work is going on across the country to build 16 new AIIMS in the last 7 years. He announced the goal of his Government is that every district in the country must have at least one medical college.

The Prime Minister said everyone knew the importance of the fertilizer plant in Gorakhpur for the farmers of this region and also for providing employment. He said that in spite of the importance of the plant, the earlier governments did not show any interest in reopening it. Everyone knew that the demand for AIIMS in Gorakhpur was being raised for years. But those who were running the government before 2017 made all kinds of excuses for providing land for the construction of AIIMS in Gorakhpur. The Prime Minister noted drastic reduction in the cases of Japanese Encephalitis in the area and growth of the medical Infrastructure in the area. “With AIIMS and ICMR Centre, the fight against JE will gain new strength”, he said.

The Prime Minister criticized the politics of display of authority, power politics, scams and mafia that brought misery to the people of the state in the past. He appealed to people to be vigilant against such forces.

The Prime Minister said today our government has opened government godowns for the poor and the UP Chief Minister is busy delivering food to every household. He added that about 15 crore people of UP are getting its benefit. Recently, PM GaribKalyan Anna Yojanahas been extended beyond Holi. Earlier governments had defamed the name of UP by giving protection to criminals. Today the mafia is in jail and investors are investing freely in UP. That's the double development of the double engine. That's why UP has faith in a double engine government, he added.