وزیر اعظم نے ایس ایچ جیز کو 1000 کروڑ روپئے منتقل کئے ، جس سے تقریباً 16 لاکھ خواتین ارکان کو فائدہ پہنچے گا
وزیر اعظم نے کاروباری نمائندہ – سَکھی کے لئے پہلے مہینے کا معاوضہ منتقل کیا اور مکھیہ منتری کنیا سُمنگلا اسکیم کا 1 لاکھ سے زیادہ فائدہ حاصل کرنے والوں کو رقم منتقل کی
وزیر اعظم نے اضافی تغذیہ بخش غذا تیار کرنے والے 200 سے زیادہ یونٹوں کا سنگِ بنیاد رکھا
’’ مکھیہ منتری کنیا سُمنگلا یوجنا جیسی اسکیمیں دیہی غریبوں اور لڑکیوں کے لئے اعتماد کا ایک بڑا ذریعہ بن رہی ہیں ‘‘
’’ یو پی کی ڈبل انجن والی حکومت کے ذریعے خواتین کو سکیورٹی ، وقار اور احترام کو یقینی بنایا جانا غیر معمولی ہے ۔ اتر پردیش کی خواتین نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ پہلے جیسی حالت واپس آنے کی اجازت نہیں دیں گی ‘‘
’’ میں بہنوں کے خواتین خود امدادی گروپوں کو آتم نربھر بھارت مہم کا چیمپئن سمجھتا ہوں ۔ یہ خود امدادی گروپ حقیقت میں قومی امدادی گروپ ہیں ‘‘
’’ بیٹیاں بھی چاہتی ہیں کہ انہیں بھی اپنی تعلیم جاری رکھنے کا وقت ملے اور برابر کے مواقع حاصل کریں ۔ اس لئے کوشش کی جا رہی ہے کہ بیٹیوں کی شادی کی قانونی عمر 21 سال کی جائے ۔ ملک ، بیٹیوں کی خاطر یہ فیصلہ کر رہا ہے ‘‘
’’ مافیا راج اور لا قانونیت کے خاتمے کا سب سے زیادہ فائدہ یو پی کی بہنوں اور بیٹیوں کو مل رہا ہے ‘‘

نئی دلّی ،21 دسمبر/  وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے پریاگ راج کا دورہ کیا اور خواتین ، خاص طور پر بنیادی سطح  کی خواتین  کو با اختیار بنانے کے لئے منعقد  ایک پروگرام میں شرکت کی ۔ وزیر اعظم نے خود امدادی گروپوں کے بینک کھاتوں میں 1000 کروڑ روپئے کی رقم منتقل کی ، جس سے ایس ایچ جی کے 16 لاکھ کے قریب ارکان کو فائدہ پہنچے گا ۔ یہ منتقلی  دین دیال انتودیہ یوجنا – نیشنل رورل  لائیولی ہُڈ مشن  ( ڈی اے وائی – این آر  ایل ایم ) کے تحت کی گئی ہے ، جس میں  80000 ایس ایچ جی کے  لئے 1.10 لاکھ روپئے فی ایس ایچ جی  کے کمیونٹی انوسٹمنٹ فنڈ ( سی آئی ایف ) اور 60000 ایس ایچ جی کے لئے 15000 روپئے فی ایس ایچ جی ریولونگ  فنڈ   شامل ہے ۔ پروگرام میں وزیر اعظم نے  20000 بزنس نمائندہ – سَکھی  ( بی سی – سَکھی ) کے کھاتوں میں  پہلے مہینے   کے لئے 4000 روپئے معاوضے کے طور پر منتقل کرکے ، اُن کی ہمت افزائی کی ۔ پروگرام کے دوران ، وزیر اعظم نے مکھیہ منتری کنیا سُمنگلا اسکیم  کے تحت  1 لاکھ فیض پانے والوں کو  20 کروڑ روپئے سے زیادہ کی رقم  بھی منتقل کی ۔ وزیر اعظم نے 202 سپلی منٹری نیوٹریشن  مینو فیکچرنگ یونٹوں  کا سنگِ بنیاد بھی رکھا ۔

          اس موقع پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے ، وزیر اعظم نے ہندی ادب کے ممتاز مصنف اچاریہ مہاویر پرساد دیویدی  کو ، اُن کی برسی پر خراجِ عقیدت پیش کیا ۔  انہوں نے کہا کہ پریاگ راج گنگا  ، یمنا اور سرسوتی کے سنگم کی سر زمین ہے اور ہزاروں سال  سے ہماری قوت کی دیوی کی علامت ہے ۔  آج یہ تیرتھ  اِستھان کا شہر  خواتین کی قوت کے اجتماع کا ایک شاندار مشاہدہ کر رہا ہے ۔

          وزیر اعظم نے کہا کہ  پورا ملک اتر پردیش میں  خواتین کو با اختیار بنانے کے لئے کئے جانے والے کام کا مشاہدہ کر رہا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ مکھیہ منتری  کنیا سُمنگلا یوجنا جیسی اسکیمیں  ، جس کے تحت ریاست کی ایک  لاکھ سے زیادہ فیض حاصل کرنے والی بیٹیوں کے کھاتوں میں کروڑوں روپئے منتقل کئے گئے ہیں ، دیہی غریبوں اور لڑکیوں کے لئے اعتماد کا ذریعہ بنتی جا رہی ہیں ۔

           وزیر اعظم نے کہا کہ اتر پردیش میں   ڈبل انجن والی حکومت نے   خواتین کو سکیورٹی ، وقار اور احترام کو غیر معمولی  طور پر یقینی بنایا ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ اتر پردیش کی خواتین نے فیصلہ کر لیا  ہے کہ وہ  پہلے  والے  حالات کو واپس آنے کی اجازت نہیں دیں گی ۔  وزیر اعظم نے ، اِس بات کا ذکر کیا کہ حکومت نے  ’ بیٹی بچاؤ - بیٹی پڑھاؤ ‘ مہم کے ذریعے  صنف پر مبنی    اسقاطِ حمل  کو روکنے کے لئے معاشرے میں  بیداری پیدا کرنے کی کوشش کی  ۔ اس کے نتیجے میں  کئی ریاستوں میں بیٹیوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے ۔  وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت  حاملہ خواتین کی ٹیکہ کاری ، اسپتالوں میں زچگی اور حمل کے دوران تغذیہ  پر توجہ  مرکوز کر رہی ہے ۔ پردھان منتری  ماترو  وندنا یوجنا کے تحت  5000 روپئے  حمل کے دوران خواتین کے بینک کھاتوں میں  جمع کرائے جاتے ہیں تاکہ وہ مناسب غذا لے سکیں ۔

          وزیر اعظم نے  کئی اقدامات کا ذکر کیا ، جن سے خواتین کے وقار میں اضافہ ہوا ہے ۔   وزیر اعظم نے مزید کہا کہ سووچھ بھارت مشن کے تحت کروڑوں بیت الخلاء کی تعمیر ، اجوولا اسکیم کے تحت گیس کنکشن کی سہولت اور گھروں میں ہی نل کے پانی کے کنکشن  جیسی سہولیات  بہنوں کی زندگی میں آ رہی ہیں ۔

          وزیر اعظم نے کہا کہ کئی دہائیوں سے مکان اور جائیداد  صرف مردوں کا حق سمجھا جاتا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ  حکومت کی اسکیمیں  ، اِس نابرابری کو ختم کر رہی ہیں ۔ پردھان آواس یوجنا ، اِس کی ایک سب سے بڑی مثال ہے ۔ پردھان منتری آواس یوجنا کے تحت مکانات ترجیحی بنیاد پر  خواتین کے نام میں تعمیر کئے جا رہے ہیں ۔

          وزیر اعظم نے کہا کہ روز گار کے لئے چلائی جانے والی اسکیموں  اور خاندان کی آمدنی میں اضافہ کرنے کے لئے خواتین کو برابر کا ساجھیداری بنایا جا رہا ہے ۔ آج مُدرا یوجنا  ، گاؤوں میں غریب کنبوں تک میں نئی خواتین صنعت کاروں کی ہمت افزائی کر رہی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ خواتین کو دین دیال انتودیہ یوجنا کے ذریعے خود امدادی گروپوں  اور  دیہی اداروں کے ساتھ  جوڑا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ  میں سمجھتا ہوں کہ خواتین خود امدادی گروپوں کی بہنیں آتم نربھر بھارت مہم کی اصل چیمپئن ہیں ۔ یہ امدادی گروپ حقیقت میں قومی امدادی گروپ ہیں ۔

          وزیر اعظم نے کہا کہ  ڈبل انجن والی حکومت  کسی امتیاز کے بغیر مسلسل  بیٹیوں کے مستقبل کو با اختیار بنانے کے لئے کام کررہی ہے ۔  انہوں نے لڑکیوں کی شادی کی  قانونی عمر سے متعلق اہم  فیصلے کے بارے میں بھی بتایا ۔ وزیر اعظم جناب مودی نے کہا کہ ’’ اس سے پہلے لڑکوں کے لئے شادی کی قانونی عمر 21 سال تھی لیکن لڑکیوں کے لئے یہ 18 سال تھی ۔ بیٹیاں بھی چاہتی ہیں کہ انہیں اپنی تعلیم مکمل کرنے  اور برابر کے مواقع حاصل  کرنے کا وقت ملے ۔ اس لئے کوششیں کی جا رہی ہیں کہ  بیٹیوں کی شادی کی عمر 21 سال کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک بیٹیوں کی خاطر یہ فیصلہ کر رہا ہے ۔

          وزیر اعظم نے حالیہ برسوں میں ریاست میں  امن و قانون کی صورتِ حال میں بہتری کا حوالہ دیا ۔ انہوں نے کہا کہ مافیا راج اور لا قانونیت کے خاتمے  کا سب سے زیادہ فائدہ اتر پردیش کی بہن اور بیٹیوں کو ہوا ہے ۔ انہوں نے  صورتِ حال کو قابو میں لانے کے لئے وزیر اعلیٰ جناب یوگی آدتیہ ناتھ کی ستائش کی ۔

          وزیر اعظم نے کہا کہ ’’ آج اتر پردیش میں  سکیورٹی کے ساتھ ساتھ  حقوق بھی ہیں ۔ آج یو پی میں کاروبار کے ساتھ ساتھ مواقع بھی ہیں۔ مجھے  پورا اعتماد ہے کہ  جب ہماری ماؤں اور بہنوں کا آشیر واد ہے  ، کوئی بھی ، اس نئی یو پی کو  اندھیرے میں نہیں  دھکیل سکتا ۔ ‘‘

تقریر کا مکمل متن پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
Unstoppable bull run! Sensex, Nifty hit fresh lifetime highs on strong global market cues

Media Coverage

Unstoppable bull run! Sensex, Nifty hit fresh lifetime highs on strong global market cues
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM Modi ignites massive Barasat rally, West Bengal
May 28, 2024
TMC's narrative against the CAA has been fuelled by appeasement politics: PM Modi in Barasat
The Calcutta High Court's verdict has unmasked TMC's deception towards the OBCs in Bengal: PM Modi
Bengal was first looted by Congress and then Left. Now, TMC is looting it with both hands: PM Modi in Barasat

Prime Minister Narendra Modi, in a grand Barasat rally, vowed to combat corruption in Bengal and propel its culture and economy to new heights. Addressing the huge gathering, PM Modi said, “Today, India is on the path to becoming developed. The strongest pillar of this development is eastern India. In the last 10 years, the expenses made by the BJP Government in eastern India was never made in 60-70 years."

Initiating his spirited address, PM Modi said that he closely monitored the cyclone's progress, commending the NDRF and other teams for their exemplary efforts. He also assured that “The Central Government is committed to providing all necessary support to the State Government.”

Delving deep into his speech, PM Modi underscored the pivotal role of Eastern India in India's developmental trajectory and remarked, “In the journey of India's progress, Eastern India stands as a significant force. Over the past decade, the BJP government has allocated more funds to Eastern India than in the preceding six to seven decades. Our efforts have been dedicated to enhancing connectivity across the region, spanning railways, expressways, waterways, and airports.”

The PM also shed light on Bengal’s rich history and its current economic challenges, “Before independence, Bengal was a thriving hub of employment for countless Indians. Today, however, many factories in Bengal lie dormant, forcing its youth to seek opportunities elsewhere. The blame for this decline falls squarely on the shoulders of Congress, followed by the Left, and now TMC. Each party has contributed to Bengal's woes, with every vote for CPM ultimately benefiting TMC.”

Reflecting on his past promises, PM Modi reiterated his commitment to combating corruption in India, “Ten years ago, I pledged to eradicate corruption, and I've upheld that promise. Now, I assure the nation that ‘Naa Khaunga, Naa Khane Dunga’! Recent recoveries of illicit funds from TMC leaders will be thoroughly investigated, and legal measures are being implemented to ensure justice.”

Amidst discussions on scrutinizing the finances of the common citizens by the INDI Alliance, PM Modi shifted the focus to those engaged in corruption and explicitly commented, “Modi vows to examine the ill-gotten gains of corrupt individuals. An X-ray so powerful that it will deter future generations from indulging in corruption.”

“The Calcutta High Court's verdict has unmasked TMC's deception towards the OBCs in Bengal. By designating 77 Muslim castes as OBCs, TMC unlawfully deprived lakhs of OBC youths of their rights. Yet, observe the response of the TMC CM following this judicial decision, here questions are being raised on the intentions of the judges...” the PM reprimanded strongly.

PM Modi shared that a troubling incident unfolded when a TMC MLA made derogatory remarks about Hindus and Bengal's saints rightfully demanded an apology, “However, instead of rectifying the error, TMC resorted to insulting the saint community itself. Notably, saints associated with ISKCON, Ramakrishna Mission, and Bharat Sevashram Sangh faced disparagement. All this just to appease their vote bank. Furthermore, when sisters from Sandeshkhali sought justice, TMC chose to target them instead.”

“Despite its claims of advocating for the welfare of the people and the land, TMC's actions have sowed fear among mothers and insulted the sanctity of the soil. Even TMC's women MLAs who dare to speak out against its hooliganism face retaliation. Recently, a distressing video surfaced featuring mothers and sisters from Keshpur, West Medinipur, pleading for protection from TMC's goons. It's imperative to hold such acts accountable through the power of your vote,” the PM expressed deep grief.

PM Modi mentioned that “TMC's narrative against the Citizenship Amendment Act (CAA) has been fuelled by appeasement politics. However, the reality is evident as hundreds of refugees have successfully obtained citizenship, visible to the entire nation.” “Forget TMC, no power in the world can impede the implementation of CAA,” PM Modi reassured strongly.

“With the country's resolute decision to elect the Modi government in Delhi”, PM Modi urged the audience, “Come June 1, let the lotus blossom across every seat, including Barasat.” The PM also asked the crowd to venture door to door, village to village, and seek blessings at every temple and place of worship.

“Together, let's usher in a Viksit Bengal and a Viksit Bharat,” the PM concluded.