وزیر اعظم نے سنت شرومنی گرودیو شری روی داس جی میموریل کا سنگ بنیاد رکھا جو 100 کروڑ روپے سے زیادہ کی لاگت سے تعمیر کیا
1580 کروڑ روپے سے زیادہ کی لاگت سے تیار کیے جانے والے دو سڑک پروجیکٹوں کا سنگ بنیاد رکھا
2475 کروڑ روپے سے زیادہ کی لاگت سے تیار کردہ کوٹا-بینا ریل روٹ کی ڈبلنگ کو قوم کے نام وقف کیا
’’ سنت شرومنی گرودیو شری روی داس جی میموریل میں شان و شوکت کے ساتھ ساتھ الوہیت بھی ہوگی‘‘
’’سنت روی داس جی نے ظلم کے خلاف لڑنے کے لیے سماج کو طاقت فراہم کی‘‘
’’ آج قوم آزادی کے جذبے کے ساتھ آگے بڑھ رہی ہے اور غلامی کی ذہنیت کو مسترد کر رہی ہے‘‘
’’امرت کال میں ہم ملک سے غربت اور بھوک کو ختم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں‘‘
’’میں غریبوں کی بھوک اور عزت نفس کا درد جانتا ہوں۔ میں آپ کے خاندان کا رکن ہوں اور آپ کے درد کو سمجھنے کے لیے مجھے کتابوں میں جھانکنے کی ضرورت نہیں ہے‘‘
’’ہماری توجہ غریبوں کی فلاح و بہبود اور سماج کے ہر طبقے کو بااختیار بنانے پر ہے‘‘
’’ آج ، چاہے کوئی دلت ہو ، محروم ہو ، پسماندہ ہو یا آدیواسی ، ہماری حکومت انھیں مناسب احترام اور نئے مواقع

بھارت ماتا کی جے۔

بھارت ماتا کی جے۔

پروگرام میں موجود مدھیہ پردیش کے گورنر جناب منگو بھائی پٹیل، وزیر اعلیٰ شیو راج سنگھ چوہان، مرکزی کابینہ کے میرے ساتھی جناب ویریندر کھٹک جی، جیوترادتیہ سندھیا جی، پرہلاد پٹیل جی، مدھیہ پردیش حکومت کے وزرا، تمام اراکین پارلیمنٹ، مختلف جگہوں سے آئے ہوئے تمام معزز سنت اور بڑی تعداد میں آئے ہوئے میرے پیارے بھائیو اور بہنوں۔

ساگر کی سرزمین، سنتوں کی صحبت، سنت روی داس جی کا آشیرواد، اور آپ سبھی جو سماج کے ہر طبقے سے، ہر کونے سے، اتنی بڑی تعداد میں آئے ہوئے ہیں۔ آج ساگر میں ہم آہنگی کا ایک سمندر موجود ہے۔ ملک کی اس مشترکہ ثقافت کو مزید تقویت دینے کے لیے آج یہاں سنت روی داس میموریل اور آرٹ میوزیم کی بنیاد رکھی گئی ہے۔ کچھ عرصہ پہلے سنتوں کی مہربانی سے مجھے اس مقدس یادگار کا بھومی پوجن کرنے کا موقع ملا تھا اور میں کاشی کا ممبر پارلیمنٹ ہوں اس لیے یہ میرے لیے دوہری خوشی ہے۔ اور محترم سنت روی داس جی کے آشیرواد سے، میں یقین کے ساتھ کہتا ہوں کہ آج میں نے سنگ بنیاد رکھا ہے، ڈیڑھ سال بعد مندر بنے گا، اس کے افتتاح کے لیے بھی میں ضرور آؤں گا۔ اور سنت روی داس جی مجھے اگلی بار یہاں آنے کا موقع دینے والے ہیں۔ مجھے کئی بار بنارس میں سنت روی داس جی کی جائے پیدائش پر جانے کا شرف حاصل ہوا ہے۔ اور آج میں آپ سب کی موجودگی میں حاضر ہوں۔ آج ساگر کی اس سرزمین سے، میں سنت شیرومنی روی داس جی کے قدموں میں جھکتا ہوں۔

 

بھائیو اور بہنوں،

سنت روی داس میموریل اور میوزیم میں شان و شوکت کے ساتھ ساتھ الوہیت بھی ہوگی۔ یہ الوہیت روی داس جی کی تعلیمات سے آئے گی جو آج اس یادگار کی بنیاد میں شامل کی گئی ہے۔ ہم آہنگی کے جذبے سے لبریز 20,000 سے زیادہ دیہاتوں اور 300 سے زیادہ دریاؤں کی مٹی آج اس یادگار کا حصہ بن چکی ہے۔ مٹھی بھر مٹی کے ساتھ ایم پی کے لاکھوں خاندانوں نے سمرستا بھوج کے لیے مٹھی بھر اناج بھی بھیجا ہے۔ اور میرا ماننا ہے کہ ہم آہنگی کا یہ سفر یہیں ختم نہیں ہوا، بلکہ یہاں سے سماجی ہم آہنگی کا ایک نیا دور شروع ہوا ہے۔ میں اس کام کے لیے حکومت مدھیہ پردیش کو مبارک باد پیش کرتا ہوں، وزیر اعلی بھائی شیو راج جی کو مبارک باد دیتا ہوں اور آپ سب کو مبارک باد دیتا ہوں۔

ساتھیوں،

تحریک اور ترقی، جب آپس میں جڑ جاتے ہیں تو ایک نئے دور کی بنیاد ڈالتے ہیں۔ آج ہمارا ملک، ہمارا ایم پی اسی طاقت کے ساتھ آگے بڑھ رہا ہے۔ اسی سلسلے میں آج یہاں کوٹہ بینا سیکشن پر ریلوے ٹریک کو دوہرا کرنے کے کام کا بھی افتتاح کیا گیا ہے۔ نیشنل ہائی وے پر دو اہم راستوں کا سنگ بنیاد بھی رکھا گیا ہے۔ ان ترقیاتی کاموں سے ساگر اور آس پاس کے علاقوں کے لوگوں کو بہتر سہولیات میسر آئیں گی۔ اس کے لیے میں یہاں کے تمام بھائیوں اور بہنوں کو مبارک باد پیش کرتا ہوں۔

ساتھیوں،

سنت روی داس میموریل اور میوزیم کی یہ بنیاد ایسے وقت رکھی گئی ہے جب ملک اپنی آزادی کے 75 سال مکمل کر چکا ہے۔ اب امرت کال کے اگلے 25 سال ہمارے سامنے ہیں۔ امرت کال میں یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم اپنی وراثت کو آگے بڑھائیں اور ماضی سے سبق بھی لیں۔ بحیثیت قوم ہم نے ہزار سال کا سفر طے کیا ہے۔ اتنے طویل عرصے میں معاشرے میں کچھ برائیوں کا آنا بھی فطری ہے۔ یہ ہندوستانی سماج کی طاقت ہے کہ ان برائیوں کو دور کرنے کے لیے وقتاً فوقتاً اس معاشرے سے کوئی نہ کوئی عظیم آدمی، کوئی ولی، کوئی اولیا نکلتا رہا ہے۔ روی داس جی ایسے ہی سنت تھے۔ وہ اس دور میں پیدا ہوئے جب ملک پر مغلوں کی حکومت تھی۔ معاشرہ عدم استحکام، جبر اور استبداد کی لپیٹ میں تھا۔ اس وقت بھی روی داس جی سماج کو جگا رہے تھے، اس کی برائیوں سے لڑنے کا درس دے رہے تھے۔ سنت روی داس جی نے کہا تھا-

 

جات پانت کے پھیر مہی، ارجھ رہئی سب لوگ،

مانشتا کوں کھات ہی، ریداس جات کر روگ۔

یعنی ہر کوئی ذات پرستی میں الجھا ہوا ہے اور یہ بیماری انسانیت کو کھا رہی ہے۔ ایک طرف وہ سماجی برائیوں کے خلاف بول رہے تھے تو دوسری طرف ملک کی روح کو جھنجھوڑ رہے تھے۔ جب ہمارے عقائد پر حملے ہو رہے تھے، ہماری شناخت مٹانے کے لیے ہم پر پابندیاں لگائی جا رہی تھیں، تب روی داس جی نے کہا تھا، اس وقت مغلوں کے دور میں، یہ حوصلہ دیکھو، یہ حب الوطنی دیکھو، روی داس جی نے کہا تھا۔

پرادھینتا پاپ ہے، جان لیہو رے میت،

ریداس پرادھین سو، کون کریہے پریت۔

یعنی محکومی سب سے بڑا گناہ ہے۔ جو محکومی کو قبول کر لے، اس کے خلاج جو جنگ نہیں کرتا، اس سے کوئی محبت نہیں کرتا۔ ایک طرح سے انھوں نے معاشرے کو ظلم کے خلاف لڑنے کی ترغیب دی۔ چھترپتی ویر شیواجی مہاراج نے اسی احساس کے ساتھ ہندوی سوراجیہ کی بنیاد رکھی تھی۔ یہ احساس جدوجہد آزادی کے لاکھوں آزادی پسندوں کے دلوں میں تھا۔ اور اسی احساس کے ساتھ آج ملک غلامی کی ذہنیت سے نجات کے عزم پر آگے بڑھ رہا ہے۔

ساتھیوں،

ریداس جی نے اپنے ایک دوہے میں کہا تھا اور ابھی شیو راج جی نے اسے بیان بھی کیا –

ایسا چاہوں راج میں، جہاں ملے سبن کو انّ،

چھوٹ بڑوں سب سم بسے، ریداس رہے پرسن-۔

یعنی معاشرہ ایسا ہو کہ کوئی چھوٹا یا بڑا بھوکا نہ رہے، اس سے اوپر اٹھ کر سب مل جل کر رہیں۔ آج آزادی کے سنہری دور میں ہم ملک کو غربت اور بھوک سے نجات دلانے کی کوششیں کر رہے ہیں۔ آپ نے دیکھا ہوگا کہ کورونا کی اتنی بڑی وبا آئی۔ ساری دنیا کا نظام درہم برہم ہو گیا، ٹھپ ہو گیا۔ ہر کوئی ہندوستان کے غریب طبقے، دلت قبائلیوں کے لیے تشویش کا اظہار کر رہا تھا۔ کہا جا رہا تھا کہ سو سال بعد اتنی بڑی آفت آئی ہے، سماج کا یہ طبقہ کیسے بچ پائے گا۔ لیکن پھر میں نے فیصلہ کیا کہ کچھ بھی ہو جائے میں اپنے غریب بھائی بہن کو خالی پیٹ نہیں سونے دوں گا۔ دوستو میں اچھی طرح جانتا ہوں کہ بھوکا رہنے کا درد کیا ہوتا ہے۔ میں جانتا ہوں کہ غریب کی عزت نفس کیا ہوتی ہے۔ میں آپ کے خاندان کا فرد ہوں، آپ کی خوشی اور غم کو سمجھنے کے لیے مجھے کتابیں تلاش کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ اسی لیے ہم نے پردھان منتری غریب کلیان انّ یوجنا شروع کیا۔ 80 کروڑ سے زیادہ لوگوں کو مفت راشن کی فراہمی کو یقینی بنایا گیا۔ اور دیکھیں آج پوری دنیا میں ہماری کوششوں کو سراہا جا رہا ہے۔

 

ساتھیوں،

آج ملک میں غریبوں کی فلاح و بہبود کے لیے جو بھی بڑی اسکیمیں چل رہی ہیں، اس کا سب سے زیادہ فائدہ دلت، پسماندہ قبائلی سماج کو مل رہا ہے۔ آپ سب بخوبی جانتے ہیں کہ پچھلی حکومتوں کے دور میں جو اسکیمیں آتی تھیں وہ الیکشن کے موسم کے مطابق آتی تھیں۔ لیکن، ہم سمجھتے ہیں کہ ملک کو زندگی کے ہر موڑ پر دلتوں، محروم، پسماندہ، قبائلی، خواتین کے ساتھ کھڑا ہونا چاہیے، ہمیں ان کی امیدوں اور امنگوں کا ساتھ دینا چاہیے۔ اگر آپ اسکیموں پر نظر ڈالیں تو آپ کو معلوم ہوگا کہ جب بچے کی پیدائش کا وقت آتا ہے تو حاملہ ماں کو ماتر وندنا یوجنا کے ذریعے 6 ہزار روپے دیے جاتے ہیں تاکہ ماں اور بچہ صحت مند رہیں۔ آپ یہ بھی جانتے ہیں کہ پیدائش کے بعد بچوں کو بیماریوں، متعدی امراض کا خطرہ ہوتا ہے۔ غربت کی وجہ سے وہ دلت قبائلی بستیوں میں سب سے زیادہ متاثر ہوئے۔ آج نو زائیدہ بچوں کی مکمل حفاظت کے لیے مشن اندر دھنش چلایا جا رہا ہے۔ بچوں کو تمام بیماریوں سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے جائیں، یہ فکر حکومت کرتی ہے۔ میں مطمئن ہوں کہ پچھلے سالوں میں 5.5 کروڑ سے زیادہ ماؤں اور بچوں کو ٹیکے لگائے گئے ہیں۔

ساتھیوں،

آج ہم ملک کے 7 کروڑ بہن بھائیوں کو سکیل سیل انیمیا سے نجات دلانے کی مہم چلا رہے ہیں۔ 2025 تک ملک کو ٹی بی سے پاک بنانے کے لیے کام جاری ہے، کالا آزار اور گردن توڑ بخار کی وبا آہستہ آہستہ کم ہو رہی ہے۔ دلت، محروم، غریب خاندان ان بیماریوں کا سب سے زیادہ شکار ہوئے۔ اسی طرح اگر علاج کی ضرورت ہو تو آیوشمان یوجنا کے ذریعے اسپتالوں میں مفت علاج کا انتظام کیا گیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ انہیں مودی کارڈ مل گیا ہے، بیماری کی وجہ سے 5 لاکھ روپے تک کا بل ادا کرنا ہے تو آپ کا بیٹا کرتا ہے۔

ساتھیوں،

زندگی میں تعلیم بہت ضروری ہے۔ آج ملک میں قبائلی بچوں کی تعلیم کے لیے اچھے اسکولوں کا اہتمام کیا جا رہا ہے۔ قبائلی علاقوں میں 700 ایکلویہ رہائشی اسکول کھولے جا رہے ہیں۔ حکومت انہیں تعلیم کے لیے کتابیں اور وظائف دیتی ہے۔ مڈ ڈے میل کے نظام کو بہتر بنایا جا رہا ہے تاکہ بچوں کو غذائیت سے بھر پور خوراک مل سکے۔ بیٹیوں کے لیے سوکنیا سمردھی یوجنا شروع کی گئی ہے، تاکہ بیٹیاں بھی یکساں طور پر ترقی کریں۔ ایس سی، ایس ٹی، او بی سی لڑکوں اور لڑکیوں کے لیے اسکول کے بعد اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کے لیے الگ الگ اسکالرشپ کا انتظام کیا گیا ہے۔ ہمارے نوجوانوں کو خود انحصار کرنے اور اپنے خوابوں کو پورا کرنے کے لیے مدرا لون جیسی اسکیمیں بھی شروع کی گئی ہیں۔ مدرا یوجنا کے اب تک جتنے بھی مستفیدین ہیں، ان میں بڑی تعداد ایس سی-ایس ٹی کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے میرے بھائی بہن ہیں۔ اور ساری رقم بغیر گارنٹی کے دی جاتی ہے۔

 

ساتھیوں،

ایس سی-ایس ٹی سماج کو ذہن میں رکھتے ہوئے، ہم نے اسٹینڈ اپ انڈیا اسکیم بھی شروع کی تھی۔ اسٹینڈ اپ انڈیا کے تحت، ایس سی-ایس ٹی کمیونٹی کے نوجوانوں کو 8 ہزار کروڑ روپے کی مالی امداد ملی ہے، 8 ہزار کروڑ روپے ہماری ایس سی- ایس ٹی کمیونٹی کے نوجوانوں کو دیے گئے ہیں۔ ہمارے بہت سے قبائلی بھائی اور بہنیں جنگل کی دولت سے اپنی روزی کماتی ہیں۔ ملک ان کے لیے وان دھن یوجنا چلا رہا ہے۔ آج تقریباً 90 جنگلاتی مصنوعات کو بھی ایم ایس پی کا فائدہ مل رہا ہے۔ یہی نہیں، کوئی دلت، محروم، پسماندہ شخص بغیر گھر کے نہ رہے، ہر غریب کے سر پر چھت ہونی چاہیے، اس کے لیے پردھان منتری آواس بھی دیا جا رہا ہے۔ گھر میں تمام ضروری سہولتیں، بجلی کا کنکشن، پانی کا کنکشن بھی مفت دیا گیا ہے۔ اسی کا نتیجہ ہے کہ آج ایس سی-ایس ٹی سماج کے لوگ اپنے پیروں پر کھڑے ہیں۔ انہیں برابری کے ساتھ معاشرے میں صحیح مقام مل رہا ہے۔

 

ساتھیوں،

ساگر ایک ایسا ضلع ہے، جس کے نام میں تو ساگر ہے ہی، اس کی شناخت 400 ایکڑ پر پھیلی لاکھا بنجارہ جھیل سے بھی ہوتی ہے۔ لاکھا بنجارہ جیسے ہیرو کا نام اس سرزمین سے جڑا ہے۔ لاکھا بنجارہ نے پانی کی اہمیت کو بہت سال پہلے سمجھا تھا۔ لیکن، جن لوگوں نے ملک میں کئی دہائیوں تک حکومتیں چلائیں، انہوں نے غریبوں کو پینے کا پانی فراہم کرنے کی ضرورت بھی نہیں سمجھی۔ ہماری حکومت بھی جل جیون مشن کے ذریعے یہ کام پورے زور و شور سے کر رہی ہے۔ آج پائپ سے پانی دلت بستیوں، پسماندہ علاقوں اور قبائلی علاقوں تک پہنچ رہا ہے۔ اسی طرح لاکھا بنجارہ کی روایت کو آگے بڑھاتے ہوئے ہر ضلع میں 75 امرت سروور بھی بنائے جا رہے ہیں۔ یہ جھیلیں آزادی کے جذبے کی علامت، سماجی ہم آہنگی کا مرکز بن جائیں گی۔

ساتھیوں،

آج ملک کے دلت ہوں، محروم طبقہ ہو، پسماندہ ہوں، قبائلی ہوں، ہماری حکومت ان کو عزت دے رہی ہے، نئے مواقع دے رہی ہے۔ نہ اس معاشرے کے لوگ کمزور ہیں، نہ ان کی تاریخ کمزور ہے۔ سماج کے ان طبقوں سے ایک ایک کر کے عظیم ہستیاں سامنے آئی ہیں۔ انہوں نے قوم کی تعمیر میں غیر معمولی کردار ادا کیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج ملک فخر کے ساتھ ان کی وراثت کو بھی محفوظ کر رہا ہے۔ بنارس میں سنت روی داس جی کی جائے پیدائش پر مندر کو خوبصورت بنایا گیا تھا۔ مجھے خود اس تقریب میں شرکت کا شرف حاصل ہوا۔ یہاں بھوپال کے گووند پورہ میں جو گلوبل اسکل پارک بنایا جا رہا ہے اس کا نام بھی سنت روی داس کے نام پر رکھا گیا ہے۔ ہم نے بابا صاحب کی زندگی سے متعلق اہم مقامات کو پنچ تیرتھ کے طور پر تیار کرنے کا کام بھی اٹھایا ہے۔ اسی طرح آج ملک کی کئی ریاستوں میں عجائب گھر بنائے جا رہے ہیں تاکہ قبائلی سماج کی شاندار تاریخ کو امر کیا جا سکے۔ ملک نے لارڈ برسا منڈا کے یوم پیدائش کو قبائلی فخر کے دن کے طور پر منانے کی روایت شروع کی ہے۔ مدھیہ پردیش کے حبیب گنج ریلوے اسٹیشن کا نام بھی گونڈ برادری کی ملکہ کملا پتی کے نام پر رکھا گیا ہے۔ پاتالپانی اسٹیشن کا نام تانتیا ماما کے نام پر رکھا گیا ہے۔ آج ملک میں پہلی بار دلت، پسماندہ اور قبائلی روایات کو وہ عزت مل رہی ہے جس کے وہ حقدار تھے۔ ہمیں ’سب کا ساتھ، سب کا وکاس، سب کا وشواس اور سب کا پریاس‘ کی اس قرارداد کے ساتھ آگے بڑھنا ہے۔ مجھے یقین ہے کہ ملک کے اس سفر میں سنت روی داس جی کی تعلیمات ہم سب اہل وطن کو متحد کرتی رہیں گی۔ ہم سب مل کر ہندوستان کو بغیر رکے ترقی یافتہ ملک بنائیں گے۔ اس جذبے کے ساتھ آپ سب کا بہت بہت شکریہ۔ بہت بہت نیک تمنائیں۔

شکریہ۔

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
PM Modi shares two takeaways for youth from Sachin Tendulkar's recent Kashmir trip: 'Precious jewel of incredible India'

Media Coverage

PM Modi shares two takeaways for youth from Sachin Tendulkar's recent Kashmir trip: 'Precious jewel of incredible India'
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM to visit Jharkhand, West Bengal and Bihar on 1st-2nd March
February 29, 2024
PM to inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth Rs 35,700 crore in Jharkhand
PM to dedicate Sindri Fertiliser Plant to the nation; Third fertiliser plant to be revived in the country after revival of fertiliser plants in Gorakhpur and Ramagundam
PM to dedicate to nation North Karanpura Super Thermal Power Project, Chatra
Railway sector to get major boost in Jharkhand; PM to flag off three new trains in the state
PM to inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth Rs 22,000 crore in West Bengal
PM to lay the foundation stone of Raghunathpur Thermal Power Station Phase II
PM to inaugurate Haldia-Barauni Crude Oil Pipeline
PM to dedicate and lay the foundation stone of multiple projects for strengthening infrastructure at Syama Prasad Mookerjee Port, Kolkata
Several other projects related to rail, road, LPG supply and wastewater treatment to be the key focus areas in West Bengal
In a significant boost to the energy sector, nationwide projects worth Rs 1.48 lakh crore related to oil and gas sector to be taken up at Begusarai
Marking the historic achievement in India's energy sector, PM to dedicate to the nation the extraction of ‘First Oil’ from KG Basin
PM to inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth more than Rs 34,800 crore in Bihar
PM to lay the foundation stone of the project for expansion of the Barauni refinery; PM to inaugurate several other projects at the refinery
PM to inaugurate the Barauni fertiliser plant; Fourth fertiliser plant to be revived in the country
National highways network, rail infrastructure, Namami Gange Programme to also get major boost in Bihar; PM to also flag off four new trains in Bihar
PM to lay foundation stone of a new six lane bridge across River Ganga in Patna
PM to lay foundation stone of Unity Mall in Patna
PM to dedicate ‘Bharat Pashudhan’- digital database for livestock animals in the country; PM to also launch ‘1962 Farmers App’ for farmers to utilise ‘Bharat Pashudhan’ database

Prime Minister Shri Narendra Modi will visit Jharkhand, West Bengal and Bihar on 1st-2nd March, 2024.

On 1st March, at around 11 AM, Prime Minister will reach Sindri, Dhanbad, Jharkhand and participate in a public programme, where he will inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth Rs 35,700 crore in Jharkhand. At around 3 PM, Prime Minister will participate in a public programme where he will inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth more than Rs 7,200 crore in Arambagh, Hooghly, West Bengal.

On 2nd March, at around 10:30 AM, Prime Minister will reach Krishnanagar, Nadia district, West Bengal, where he will inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth Rs 15,000 crore. At 2:30 PM, Prime Minister will inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth Rs 21,400 crore in Aurangabad, Bihar. At 5:15 PM, Prime Minister will reach Begusarai, Bihar where he will participate in a public programme and inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple oil and gas sector projects worth about Rs 1.48 lakh crore across the country, and several development projects in Bihar worth more than Rs 13,400.

PM at Sindri, Jharkhand

At the public programme in Sindri, Dhanbad, Prime Minister will inaugurate, dedicate to nation and lay the foundation stone of multiple developmental projects related to fertiliser, rail, power, and coal sector.

Prime Minister will dedicate to the nation the Hindustan Urvarak & Rasayan Ltd (HURL) Sindri Fertiliser Plant. Developed at a cost of more than Rs 8900 crore, the fertiliser plant is a step towards self-sufficiency in the Urea Sector. It will add about 12.7 LMT per annum indigenous urea production in the country benefiting the farmers of the country. This is the third fertiliser plant to be revived in the country, after the revival of fertiliser plants at Gorakhpur and Ramagundam, which were also dedicated to the nation by the Prime Minister in December 2021 and November 2022 respectively.

Prime Minister will inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of several rail projects worth more than Rs 17,600 crore in Jharkhand. The projects include 3rd & 4th Line connecting Sone Nagar-Andal; Tori- Shivpur first & second and Biratoli- Shivpur third railway line (part of Tori- Shivpur Project); Mohanpur – Hansdiha new rail line; Dhanbad-Chandrapura rail line, among others. These projects will expand the rail services in the state and lead to socio-economic development in the region. Prime Minister will also flag off three trains during the programme. This includes Deoghar – Dibrugarh train service, MEMU Train Service between Tatanagar and Badampahar (Daily) and long-haul freight train from Shivpur station.

Prime Minister will also dedicate to nation important power projects in Jharkhand including the Unit 1 (660 MW) of North Karanpura Super Thermal Power Project (STPP), Chatra. Developed at more than Rs 7500 crore, the project will lead to improved power supply in the region. It will also boost employment generation and contribute to socioeconomic development in the state. Also, Prime Minister will also dedicate to nation projects related to the coal sector in Jharkhand.

PM at Arambagh, West Bengal

At Arambagh, Hooghly, Prime Minister will lay the foundation stone and dedicate to nation multiple developmental projects related to sectors like rail, ports, Oil Pipeline, LPG supply and wastewater treatment.

Prime Minister will inaugurate Indian Oil's 518-km Haldia-Barauni Crude Oil Pipeline developed at a cost of about Rs 2,790 crore. This pipeline passes through Bihar, Jharkhand and West Bengal. The pipeline will supply crude oil to Barauni Refinery, Bongaigaon Refinery and Guwahati Refinery in a safe, cost-efficient, and environment-friendly manner.

Prime Minister will also dedicate to nation and lay the foundation stone of multiple projects for strengthening of infrastructure at Syama Prasad Mookerjee Port, Kolkata worth about Rs 1000 crore. The projects whose foundation stone will be laid include reconstruction of Berth No. 8 NSD and mechanisation of berth no. 7 & 8 NSD of Kolkata Dock System. Prime Minister will also dedicate to nation the project for augmentation of the firefighting system at oil jetties of Haldia Dock Complex, Syama Prasad Mookerjee Port. The newly installed fire-fighting facility is a state-of-the-art fully automated set-up equipped with cutting edge gas and flame sensors, ensuring immediate hazard detection. Prime Minister will dedicate the third Rail Mounted Quay Crane (RMQC) of Haldia Dock Complex with lifting capacity of 40 Tonnes. These new projects at Syama Prasad Mookerjee Port, Kolkata will boost the productivity of the port substantially by helping in faster and safer cargo handling and evacuation.

Prime Minister will dedicate to the nation important rail projects worth about Rs 2680 crore. The projects include the third rail line connecting Jhargram - Salgajhari (90 Kms); doubling of Sondalia – Champapukur rail line (24 Kms); and doubling of Dankuni – Bhattanagar – Baltikuri rail line (9 Kms). These projects will expand the rail transport facilities in the region, improve mobility and facilitate seamless service of freight traffic leading to economic and industrial growth in the region.

Prime Minister will also inaugurate Indian Oil’s LPG Bottling plant with a capacity of 120 TMTPA at Vidyasagar Industrial Park, Kharagpur. Developed at a cost of more than Rs 200 crore, the LPG bottling plant will be the first LPG bottling plant in the region. It will supply LPG to about 14.5 lakh customers in West Bengal.

Prime Minister will inaugurate three projects related to wastewater treatment and sewerage in West Bengal. These projects, developed at a cost of about Rs 600 crore have been funded by the World Bank. The projects include Interception and Diversion (I&D) works and Sewage Treatment Plants (STPs) at Howrah with a capacity of 65 MLD and a sewage network of 3.3 km; I&D works and STPs at Bally with capacity of 62 MLD and a sewage network of 11.3 km, and I&D works and STPs at Kamarhati & Baranagar with a capacity of 60 MLD and a sewage network of 8.15 Km.

PM at Krishnanagar, West Bengal

At Krishnanagar, Prime Minister will inaugurate, dedicate to nation and lay the foundation stone of several development projects related to sectors like power, rail and road.

Strengthening the power sector in the country, Prime Minister will lay the foundation stone of Raghunathpur Thermal Power Station Phase II (2x660 MW) located at Raghunathpur in Purulia district. This coal based thermal power project of the Damodar Valley Corporation employs highly-efficient super critical technology. The new plant will be a step towards strengthening the energy security of the country.

Prime Minister will inaugurate the Flue gas desulfurization (FGD) system of Unit 7 & 8 of Mejia Thermal Power Station. Developed at a cost of about Rs 650 crore, the FGD system will remove sulphur dioxide from flue gases and produce clean flue gas and forming gypsum, which can be used in cement industry.

Prime Minister will also inaugurate the road project for four laning of Farakka-Raiganj Section of NH-12 (100 Km). Developed at a cost of about Rs 1986 crore, the project will reduce traffic congestion, improve connectivity and contribute to socio economic development of North Bengal and Northeast region.

Prime Minister will dedicate to the nation four rail projects worth more than Rs 940 crore in West Bengal including project for doubling of Damodar - Mohishila rail line; third line between Rampurhat and Murarai; doubling of Bazarsau - Azimganj rail line; and New line connecting Azimganj – Murshidabad. These projects will improve rail connectivity, facilitate freight movement and contribute to economic and industrial growth in the region.

PM at Aurangabad, Bihar

At Aurangabad, Prime Minister will inaugurate, dedicate and lay the foundation stone of multiple development projects worth more than Rs 21,400 crore.

Strengthening the National Highways network in the state, Prime Minister will inaugurate and lay the foundation stone for several National Highway projects worth more than Rs 18,100 crores. The projects that will be inaugurated includes a 63.4 km long two- lane with paved shoulder Jaynagar-Narahia section of NH-227; section of six lane Patna ring road from Kanhauli to Ramnagar on NH-131G; a 3.2 km long second flyover parallel to existing flyover in Kishanganj town; four laning of 47 km long Bakhtiyarpur-Rajauli; and four laning of 55 km long Arra - Parariya section of NH–319.

Prime Minister will lay the foundation stone for six National Highway projects including the construction of 55 km long four lane access controlled Greenfield National Highway from Amas to village Shivrampur; 54 km long four lane access controlled Greenfield National Highway from Shivrampur to Ramnagar; 47 km long four lane access controlled greenfield National Highway from village Kalyanpur to village Balbhadarpur; 42 km long four-lane access controlled greenfield National Highway from Balbhadarpur to Bela Nawada; 25 km long four lane elevated corridor from Danapur – Bihta Section; and upgradation of existing two lane to four lane carriageway of Bihta - Koilwar section. The road projects will improve connectivity, reduce travel time, boost tourism and lead to socio economic development of the region.

Prime Minister will also lay the foundation stone of the six lane bridge across River Ganga that will be developed as a part of Patna Ring Road. This bridge will be one of the longest river bridges in the country. This project will decongest traffic through Patna city and provide faster and better connectivity between North and South parts of Bihar, promoting socio-economic growth of the entire region.

Prime Minister will also inaugurate twelve projects under Namami Gange in Bihar that have been developed at a cost of about Rs 2,190 crore. The projects include Sewage Treatment Plant at Saidpur & Pahari; Sewerage Network for Saidpur, Beur, Pahari Zone IVA; Sewerage system with Sewer network at Karmalichak; Sewerage scheme at Pahari Zone V; and Interception, Diversion & Sewage Treatment Plant at Barh, Chhapra, Naugachia, Sultanganj and Sonepur town. These projects ensure wastewater treatment before it is released into the river Ganga at several places, boosting cleanliness of the river and benefiting the people of the region.

Prime Minister will lay the foundation stone of Unity Mall in Patna. To be constructed at a cost of more than Rs 200 crore, the project is envisioned as a state-of-the-art facility, encompassing international design practices, technology, comfort, and aesthetics. The mall will provide dedicated spaces to states, union territories, and districts, enabling them to showcase their unique products and craftsmanship. There will be 36 large stalls for States/ UTs and 38 small stalls for each district of Bihar. Unity mall will promote local manufacturing and promotion of One District One Products, Geographical Indicators (GI) products and handicraft products of Bihar and India. The project will have a significant socio-economic benefit in terms of employment generation, infrastructure development and exports from the state.

Prime Minister will also dedicate to the nation three railway projects in Bihar including the project for doubling of Patliputra to Pahleza railway line; 26 km long new rail line between Bandhua – Paimar; and a MEMU Shed in Gaya. Prime Minister will also lay the foundation stone of the Ara Bye Pass rail line. The rail projects will lead to better rail connectivity, improve line capacity and mobility of trains and boost industrial development in the region.

PM at Begusarai, Bihar

The public function in Begusarai will witness a significant boost to the energy sector in the country as the Prime Minister will inaugurate, dedicate to the nation, and lay the foundation stone for multiple oil and gas projects worth about Rs 1.48 lakh crore. The projects are spread across the country in various states like Bihar, Haryana, Andhra Pradesh, Maharashtra, Punjab and Karnataka along with KG Basin.

Prime Minister will dedicate ‘First Oil’ from KG Basin to the nation and will flag off the first crude oil tanker from the ONGC Krishna Godavari deepwater project. The extraction of ‘First Oil’ from KG Basin marks a historic achievement in India's energy sector, promising to significantly reduce our dependence on energy imports. The project also heralds a new era in India's energy sector, promising to bolster energy security and foster economic resilience.

The oil and gas sector projects worth about Rs 14,000 crore will be taken up in Bihar. This includes foundation stone laying of the expansion of the Barauni Refinery with project cost of more than Rs 11,400 crore and inauguration of projects like Grid Infrastructure at Barauni Refinery; Paradip – Haldia – Durgapur LPG Pipeline's extension to Patna and Muzaffarpur, among others.

Other important oil and gas projects projects being taken up across the country include expansion of the Panipat Refinery & Petrochemical Complex in Haryana; 3G ethanol plant and Catalyst Plant at Panipat Refinery; Visakh Refinery Modernization Project (VRMP) in Andhra Pradesh; City Gas Distribution Network project, encompassing Fazilka, Ganganagar, and Hanumangarh districts of Punjab; new POL Depot at Gulbarga Karnataka, Mumbai High North Redevelopment Phase -IV in Maharashtra, among others. Prime Minister will also lay the foundation stone of the Indian Institute of Petroleum and Energy (IIPE), Vishakhapatanam, Andhra Pradesh.

Prime Minister will inaugurate the Hindustan Urvarak & Rasayan Ltd (HURL) fertiliser plant in Barauni. Developed at more than Rs 9500 crore, the plant will provide affordable urea to farmers and lead to increase in their productivity and financial stability. This will be the fourth fertiliser plant to be revived in the country.

Prime Minister will also inaugurate and lay the foundation stone of several railway projects worth about Rs 3917 crore. These include the project for Raghopur – Forbesganj Gauge Conversion; doubling of Mukuria-Katihar-Kumedpur rail line; project for Barauni-Bachhwara 3rd and 4th line, Electrification of Katihar-Jogbani rail section, among others. These projects will make travel more accessible and lead to socio economic development of the region. Prime Minister will flag off four trains also including Danapur - Jogbani Express (via Darbhanga – Sakri); Jogbani- Saharsa Express; Sonpur-Vaishali Express; and Jogbani- Siliguri Express.

Prime Minister will dedicate to nation ‘Bharat Pashudhan’ - a digital database for livestock animals in the country. Developed under the National Digital Livestock Mission (NDLM), ‘Bharat Pashudhan’ utilises a unique 12-digit Tag ID allocated to each livestock animal. Under the project, out of estimated 30.5 crore bovines, about 29.6 crore have already been tagged and their details are available in the database. ‘Bharat Pashudhan’ will empower the farmers by providing the traceability system for the bovines and also help in disease monitoring and control.

Prime Minister will also launch ‘1962 Farmers App’, an app which records all data and information present under the ‘Bharat Pashudhan’ database, which can be utilised by the farmers.