Dedicates five AIIMS at Rajkot, Bathinda, Raebareli, Kalyani and Mangalagiri
Lays foundation stone and dedicates to nation more than 200 Health Care Infrastructure Projects worth more than Rs 11,500 crore across 23 States /UTs
Inaugurates National Institute of Naturopathy named ‘Nisarg Gram’ in Pune
Inaugurates and dedicates to nation 21 projects of the Employees’ State Insurance Corporation worth around Rs 2280 crores
Lays foundation stone for various renewable energy projects
Lays foundation stone for New Mundra-Panipat pipeline project worth over Rs 9000 crores
“We are taking the government out of Delhi and trend of holding important national events outside Delhi is on the rise”
“New India is finishing tasks at rapid pace”
“I can see that generations have changed but affection for Modi is beyond any age limit”
“With Darshan of the submerged Dwarka, my resolve for Vikas and Virasat has gained new strength; divine faith has been added to my goal of a Viksit Bharat”
“In 7 decades 7 AIIMS were approved, some of them never completed. In last 10 days, inauguration or foundation stone laying of 7 AIIMS have taken place”
“When Modi guarantees to make India the world’s third largest economic superpower, the goal is health for all and prosperity for all”

 بھارت ماتا کی جئے !

بھارت ماتا کی جئے !

اسٹیج پر موجود گجرات کے مقبول وزیر اعلیٰ بھوپیندر بھائی پٹیل، مرکز میں وزراء کی کونسل میں میرے ساتھی منسکھ مانڈویا، گجرات پردیش بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدر اور پارلیمنٹ میں میرے ساتھی سی آر پاٹل، اسٹیج پر تشریف فرما  دیگر تمام معززین، اور راجکوٹ کے میرے بھائیو، اور بہنو،نمسکار۔

آج کے اس  پروگرام میں ملک کی کئی ریاستوں سے دیگر لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے بھی شرکت کی۔ کئی ریاستوں کے معزز وز راء  اعلیٰ،  عزت مآب  گورنر،  ممبران اسمبلی ، ممبران پارلیمنٹ ، مرکزی وزرا، ان سب نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے اس پروگرام میں ہمارے ساتھ شمولیت اختیار کی ہے۔ میں بھی ان سب کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کرتا ہوں۔

 

ایک وقت تھا جب ملک کے تمام بڑے پروگرام دہلی میں ہی ہوتے تھے۔ میں حکومت ہند کو دہلی سے نکال کر ملک کے کونے کونے تک پہنچا دیا ہے اور آج راجکوٹ پہنچ گئے۔ آج کا یہ پروگرام بھی اس کا گواہ ہے۔ آج اس ایک پروگرام کے ذریعے ملک کے کئی شہروں میں ترقیاتی کاموں کا افتتاح   ہونااور سنگ بنیاد رکھنا ایک نئی روایت کو آگے بڑھا رہا ہے۔ ابھی کچھ دن پہلے میں جموں و کشمیر میں تھا۔ وہاں سے میں نے جموں سے بیک وقت آئی آئی ٹی بھلائی، آئی آئی ٹی تروپتی، ٹرپل آئی ٹی ڈی ایم کرنول، آئی آئی ایم بودھ گیا، آئی آئی ایم جموں، آئی آئی ایم وشاکھاپٹنم اور آئی آئی ایس کانپور کے کیمپس کا افتتاح کیا تھا اور اب آج راجکوٹ سے  اے آئی آئی ایم ایس راجکوٹ، اے آئی آئی ایم ایس رائے بریلی، اے آئی آئی ایم ایس منگل گیری، اے آئی آئی ایم ایس بھٹنڈہ، اے آئی آئی ایم ایس کلیانی کا افتتاح ہورہا ہے۔ پانچ ایمس، ترقی پذیر ہندوستان، اتنی تیز رفتاری سے کام کر رہے ہیں اور کام مکمل کر رہے ہیں۔

دوستو

آج جب میں راجکوٹ آیا ہوں تو مجھے بہت سی پرانی باتیں یاد آ رہی ہیں۔ کل میری زندگی کا ایک خاص دن تھا۔ میرے انتخابی سفر کے آغاز میں راجکوٹ کا بڑا کردار ہے۔ 22 سال پہلے 24 فروری کو راجکوٹ نے مجھے پہلی بار آشیرواد دیا تھا اور مجھے اپنا ایم ایل اے منتخب کیا تھا اور آج 25 فروری کوہی میں نے زندگی میں پہلی بار راجکوٹ سے ایم ایل اے کے طور پر گاندھی نگر اسمبلی میں حلف لیا تھا۔  آپ نے مجھے اپنی محبت اور اپنے اعتماد کا مقروض بنا دیا تھا۔ لیکن آج، 22 سال بعد، میں راجکوٹ کے ہر خاندان کے فرد کو فخر سے کہہ سکتا ہوں کہ میں نے آپ کے اعتماد پر پورا اترنے کی پوری کوشش کی ہے۔

آج پورا ملک اتنا پیار اور آشیرواد دے رہا ہے، اس  کےلیے راجکوٹ بھی شکریہ کا مستحق ہے۔ آج جب پورا ملک این ڈی اے حکومت کو تیسری بار مبارکباد دے رہا ہے، آج جب پورا ملک 400 پارکا  یقین  دلا رہا ہے۔ تب میں دوبارہ سر جھکا کر اور راجکوٹ کے خاندان کے ہر فرد کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ میں دیکھ رہا ہوں، نسلیں بدل گئی ہیں، لیکن مودی کے لیے محبت ہر عمر کی حد سے پرے ہے۔ یہ جو آپ کا قرض ہے، میں اسے سود کے ساتھ اور ترقی کے ذریعے واپس کرنے کی کوشش کرتا ہوں۔

دوستو

میں آپ سب سے بھی معذرت خواہ ہوں، اور میں تمام  الگ الگ  ریاستوں کے معزز وزرائے اعلیٰ اور شہریوں سے بھی معذرت خواہ ہوں کیونکہ آج مجھے آنے میں تھوڑی  تاخیر ہوئی ہے، آپ کو انتظار کرنا پڑا۔ لیکن اس کے پیچھے وجہ یہ تھی کہ آج میں دوارکا میں بھگوان دوارکادھیش کے درشن کر کے اور ان کو نمن کرنے کے بعد راجکوٹ آیا ہوں۔ میں نے دوارکا سے بیٹ دوارکا کو جوڑنے والے سدرشن پل کا بھی افتتاح کیا ہے۔ دوارکا کی اس خدمت کے ساتھ، آج مجھے ایک شاندار روحانی  سادھنا کا فائدہ بھی ملا ہے۔ قدیم دوارکا جس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ بھگوان شری کرشن نے  اسےخود آباد کیا تھا، آج سمندر میں ڈوب گئی ہے، آج مجھے سمندر کی گہرائی میں جانا نصیب ہوا اور اندر جانے کے بعد  مجھے اس سمندر میں ڈوب چکی  شری کرشن والی دوارکا درشن  کرنے، اس کی باقیات کا دورہ کرنے اور ان باقیات کو چھو کر زندگی کو بابرکت بنانے، ان کی پوجا کرنے اور وہاں چند لمحوں کے لیے بھگوان شری کرشن کو یاد کرنے کا اعزاز حاصل ہوا ہے۔ میرے ذہن میں بہت دنوں سے یہ خواہش تھی کہ بھلے ہی بھگوان کرشن کا مسکن دوارکا پانی کے نیچے ہو، کسی دن میں وہاں جا کر نمن کروں اور آج مجھے وہ خوش نصیبی  حاصل ہوئی ۔ قدیم  مذہبی کتابوں میں  دوارکا کے بارے میں پڑھ کر، ماہرین آثار قدیمہ کی دریافتوں کو جان کر، یہ  یہ سب کچھ ہمیں حیرت سے بھر دیتا ہے۔ آج سمندر کے اندر جانے کے بعد میں نے وہی منظر اپنی آنکھوں سے دیکھا اور اس مقدس سرزمین کو چھوا۔ عبادت کے ساتھ ساتھ میں نے وہاں مور کے پنکھ بھی چڑھائے۔ میرے لیے الفاظ میں بیان کرنا مشکل ہے کہ یہ تجربہ میرے لیے کتنا جذباتی تھا۔ سمندر کے گہرے پانیوں میں، میں اپنے ہندوستان کی شان و شوکت کے بارے میں سوچ رہا تھا  کہ اس کی ترقی کی سطح کتنی بلند  رہی ہے۔ جب میں سمندر سے باہر آیا تو بھگوان کرشن کے آشیرواد کے ساتھ ساتھ دوارکا کی تحریک بھی اپنے ساتھ لے کر آیا ہوں۔ آج ترقی اور وراثت کی میری قراردادوں کو ایک نئی طاقت، ایک نئی توانائی ملی ہے،آج ایک ترقی یافتہ ہندوستان کے میرے مقصد سے روحانی یقین بھی وابستہ ہو گیا ہے۔

 

دوستو

آج بھی آپ کو اور پورے ملک کو یہاں سے48 ہزار کروڑ روپے سے زیادہ کے پروجیکٹ ملے ہیں۔ آج نیو موندرا-پانی پت پائپ لائن پروجیکٹ کا سنگ بنیاد رکھا گیا ہے۔ اس سے گجرات سے خام تیل پائپ کے ذریعے سیدھا ہریانہ کی ریفائنری تک پہنچے گا۔ آج راجکوٹ سمیت پورے سوراشٹر کو سڑکیں، اس کے پل، ریلوے لائنوں کو دوگنا کرنے، بجلی، صحت اور تعلیم سمیت بہت سی سہولیات میسر ہیں۔ بین الاقوامی ہوائی اڈے کے بعد اب ایمس بھی راجکوٹ کے لیے وقف ہے اور اس کے لیے راجکوٹ، پورے سوراشٹر اور پورے گجرات کو بہت بہت مبارک باد ہو! اور ملک کے ان مقامات کے تمام شہریوں، بھائیوں اور بہنوں کو میری دل کی گہرائیوں سے مبارکباد، جہاں آج ایمس قائم کیا جا رہا ہے۔

دوستو

آج کا دن نہ صرف راجکوٹ اور گجرات کے لیے بلکہ پورے ملک کے لیے ایک تاریخی دن ہے۔ دنیا کی 5ویں بڑی معیشت کا صحت کا شعبہ  کیسا  ہونا چاہیے؟ ترقی یافتہ ہندوستان میں صحت کی سہولیات کی سطح کیا ہوگی؟ آج ہم راجکوٹ میں اس کی ایک جھلک دیکھ رہے ہیں۔ آزادی کے بعد 50 سال تک ملک میں صرف ایک ایمس تھا اور وہ بھی دہلی میں۔ آزادی کی 7 دہائیوں میں، صرف 7 ایمس کو منظوری دی گئی، لیکن وہ بھی کبھی مکمل نہیں ہوئے۔ اور آج ہی دیکھ لیں پچھلے 10 دنوں کے اندر 7 نئے ایمس کا سنگ بنیاد رکھا اور افتتاح کیا گیا۔ اس لیے میں کہتا ہوں کہ ہم ملک کو اس سے کئی گنا زیادہ تیزی سے ترقی کر رہے ہیں جو گزشتہ 7-6 دہائیوں میں نہیں ہوا ہے اور اسے ملک کے لوگوں کے قدموں میں وقف کر رہے ہیں۔ آج، 23 ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں 200 سے زیادہ صحت کی دیکھ بھال کے بنیادی ڈھانچے کے منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھا گیا ہے اور ان کا افتتاح بھی کیا گیا ہے۔ ان میں میڈیکل کالجز ہیں، بڑے بڑے اسپتالوں کے سیٹلائٹ سینٹرز اور سنگین بیماریوں کے علاج سے وابستہ بڑے اسپتال شامل ہیں۔

دوستو

آج ملک کہہ رہا ہے، مودی کی گارنٹی کا مطلب ہے گارنٹی کی تکمیل کی ضمانت۔ مودی کی ضمانت پر یہ اٹل یقین کیوں ہے اس کا جواب بھی ایمس میں مل جائے گا۔ میں نے راجکوٹ کو گجرات کے پہلے ایمس کی ضمانت دی تھی۔ 3 سال پہلے سنگ بنیاد رکھا اور آج افتتاح کیا – آپ کے خادم نےگارنٹی پوری کردی۔ میں نے ایک ایمس کی گارنٹی پنجاب کو دی تھی، میں نے بھٹنڈہ ایمس کا سنگ بنیاد بھی رکھا تھا اور آج اس کا افتتاح بھی کر رہا ہوں- آپ کے  خادم  نے گارنٹی پوری کر دی۔ میں نے یوپی میں رائے بریلی کو ایمس کی گارنٹی دی تھی۔ کانگریس کے شاہی خاندان نے صرف رائے بریلی میں سیاست کی، کام مودی نے کیا۔ میں نے 5 سال پہلے رائے بریلی ایمس کا سنگ بنیاد رکھا تھا اور آج اس کا افتتاح کیا۔ آپ کے اس خادم  نے ضمانت پوری کر دی۔ میں نے مغربی بنگال کو پہلے ایمس کی گارنٹی دی تھی، آج کلیانی ایمس کا افتتاح بھی ہوا - آپ کے  خادم  نے گارنٹی پوری کردی۔ میں نے آندھرا پردیش کو پہلے ایمس کی گارنٹی دی تھی، آج منگل گری ایمس کا افتتاح ہوا - آپ کے خادم  نے اس گارنٹی کو بھی پورا کیا۔ میں نے ہریانہ کے ریواڑی میں ایمس کی گارنٹی دی تھی، ابھی کچھ دن پہلے 16 فروری کو اس کا سنگ بنیاد رکھا گیا تھا۔ یعنی آپ کے خادم نے یہ ضمانت بھی پوری کر دی۔ پچھلے 10 سالوں میں ہماری حکومت نے ملک کی مختلف ریاستوں میں 10 نئے ایمس کو منظوری دی ہے۔ کبھی  ریاستوں کے لوگ مرکزی حکومت سے ایمس کا مطالبہ کرتے کرتے تھک جاتے تھے۔ آج ملک میں ایک کے بعد ایک جدید اسپتال اور ایمس جیسے میڈیکل کالج کھل رہے ہیں۔ اسی لیے تو پورا  ملک کہتا ہے- جہاں دوسروں سے امید ختم ہوتی ہے، مودی کی گارنٹی وہیں سے شروع ہوتی ہے۔

 

دوستو

ہندوستان نے کس طرح کورونا کو شکست دی آج پوری دنیا میں اس کا چرچا ہے۔ ہم ایسا کرنے میں اس لئے کامیاب ہوئے کیونکہ پچھلے 10 سالوں میں ہندوستان کا صحت کی دیکھ بھال کا نظام مکمل طور پر بدل گیا ہے۔ پچھلی دہائی میں، اے آئی آئی ایم ایس، میڈیکل کالجوں اور اہم دیکھ بھال کے بنیادی ڈھانچے کے نیٹ ورک میں بے مثال توسیع ہوئی ہے۔ ہم نے چھوٹی موٹی بیماریوں کے لیے ہر گاؤں میں ڈیڑھ لاکھ سے زیادہ آیوشمان آروگیہ مندر بنائے ہیں، ڈیڑھ لاکھ سے زیادہ۔ 10 سال پہلے ملک میں 390-380 میڈیکل کالج تھے، آج 706 میڈیکل کالج ہیں۔ 10 سال پہلے ایم بی بی ایس کی سیٹیں 50 ہزار کے لگ بھگ تھیں، آج 1 لاکھ سے زیادہ ہیں۔ 10 سال پہلے پوسٹ گریجویٹ میڈیکل کی سیٹیں 30 ہزار کے لگ بھگ تھیں، آج 70 ہزار سے زیادہ ہیں۔ آنے والے چند سالوں میں ہندوستان میں ڈاکٹر بننے والے نوجوانوں کی تعداد آزادی کے 70 برسوں میں پیدا ہونے والی تعداد سے کہیں زیادہ ہے۔ آج ملک میں 64 ہزار کروڑ روپے کا آیوشمان بھارت ہیلتھ انفرااسٹرکچر مشن چل رہا ہے۔ آج بھی ٹی بی کے علاج سے متعلق کئی میڈیکل کالجوں، اسپتالوں اور تحقیقی مراکز کا سنگ بنیاد، پی جی آئی کے سیٹلائٹ سینٹر، کریٹیکل کیئر بلاکس، اس طرح کے کئی پروجیکٹوں کا سنگ بنیاد رکھا گیا اور افتتاح کیا گیا۔ آج درجنوں ای ایس آئی سی اسپتال بھی ریاستوں کے حوالے کیے گئے ہیں۔

دوستو

ہماری حکومت کی ترجیح بیماری کی روک تھام اور بیماری سے لڑنے کی صلاحیت کو بڑھانا بھی ہے۔ ہم نے غذائیت، یوگا-آیوش اور صفائی پر زور دیا ہے، تاکہ بیماریوں سے بچا جا سکے۔ ہم نے روایتی ہندوستانی ادویات اور جدید ادویات دونوں کو فروغ دیا ہے۔ آج ہی مہاراشٹر اور ہریانہ میں یوگا اور نیچروپیتھی سے متعلق دو بڑے اسپتالوں اور تحقیقی مراکز کا بھی افتتاح کیا گیا ہے۔ روایتی طبی نظام سے متعلق ڈبلیو ایچ او کا عالمی مرکز بھی یہاں گجرات میں بنایا جا رہا ہے۔

دوستو

ہماری حکومت کی یہ مسلسل کوشش ہے کہ غریب ہو یا متوسط ​​طبقہ، اس کا علاج بھی بہتر ہو اور اس کی بچت بھی ہو۔ آیوشمان بھارت اسکیم کی وجہ سے غریبوں کو ایک لاکھ کروڑ روپے خرچ کرنے سے بچایا گیا ہے۔ جن اوشدھی کیندروں میں 80 فیصد ڈسکاؤنٹ پر ادویات کی دستیابی کی وجہ سے غریب اور متوسط ​​طبقے کو 30 ہزار کروڑ روپے خرچ کرنے سے بچایا گیا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ حکومت نے نہ صرف جانیں بچائی ہیں بلکہ اس بوجھ کو غریب اور متوسط ​​طبقے پر پڑنے سے بھی بچایا ہے۔ غریب خاندانوں نے اجولا یوجنا کے ذریعے بھی 70 ہزار کروڑ روپے سے زیادہ کی بچت کی ہے۔ ہماری حکومت کے ذریعے سستے کئے گئے ڈیٹا کی وجہ سے ہر موبائل صارف ہر ماہ تقریباً 4 ہزار روپے کی بچت کر رہا ہے۔ ٹیکس سے متعلق اصلاحات کی وجہ سے ٹیکس دہندگان کو تقریباً 2.5 لاکھ کروڑ روپے کی بچت ہوئی ہے۔

 

دوستو

اب ہماری حکومت ایسی ہی ایک اور اسکیم لے کر آئی ہے، جس سے آنے والے سالوں میں کئی خاندانوں کی بچت میں مزید اضافہ ہوگا۔ ہم بجلی کے بل کو صفر پر لانے کے لیے کام کر رہے ہیں اور بجلی کے ذریعے خاندانوں کو آمدنی بھی فراہم کرنے کا انتظام کرنے جارہے ہیں۔ پی ایم سوریہ گھر- مفت بجلی اسکیم کے ذریعے، ہم ملک کے لوگوں کو بچانے اور کمانے میں مدد کریں گے۔ اس اسکیم میں شامل ہونے والے افراد کو 300 یونٹ تک مفت بجلی ملے گی اور حکومت باقی بجلی خرید کر آپ کو پیسے دے گی۔

دوستو

ایک طرف ہم ہر خاندان کو شمسی توانائی پیدا کرنے والا بنا رہے ہیں تو دوسری طرف سورج اور ہوا کی توانائی کے بڑے بڑے پلانٹ بھی لگا رہے ہیں۔ آج ہی کَچھ میں دو بڑے سولر پروجیکٹ اور ایک ونڈ انرجی پروجیکٹ کا سنگ بنیاد رکھا گیا ہے۔ یہ قابل تجدید توانائی کی پیداوار میں گجرات کی صلاحیت کو مزید وسعت دے گا۔

دوستو

ہمارا راجکوٹ کاروباریوں، محنت کشوں اور کاریگروں کا شہر ہے۔ یہ وہ ساتھی  ہیں جو خود انحصار ہندوستان کی تعمیر میں بہت بڑا کردار ادا کر رہے ہیں۔ ان میں سے بہت سے دوست ایسے ہیں جنہیں پہلی بار مودی نے  پوچھا ہے، مودی نے پوجا  ہے۔ ملک کی تاریخ میں پہلی بار ہمارے وشوکرما دوستوں کے لیے ملک گیر اسکیم بنائی گئی ہے۔ اب تک 13 ہزار کروڑ روپے کی پی ایم وشوکرما اسکیم میں لاکھوں لوگ شامل ہو چکے ہیں۔ اس کے تحت انہیں اپنی صلاحیتوں کو بہتر بنانے اور اپنے کاروبار کو آگے بڑھانے میں مدد مل رہی ہے۔ اس اسکیم کی مدد سے گجرات میں 20 ہزار سے زائد لوگوں کی تربیت مکمل کی جا چکی ہے۔ ان میں سے ہر ایک وشوکرما استفادہ کنندگان کو 15,000 روپے تک کی امداد بھی ملی ہے۔

دوستو

آپ جانتے ہیں کہ ہمارے راجکوٹ میں سونار کا کام کتنا بڑا کام ہے۔ اس کاروبار سے جڑے لوگوں کو بھی اس وشوکرما اسکیم کا فائدہ ملا ہے۔

دوستو

پہلی بار پی ایم سواندھی اسکیم ہمارے لاکھوں اسٹریٹ وینڈرز کے لیے بنائی گئی ہے۔ اب تک ان دوستوں کو اس اسکیم کے تحت تقریباً 10 ہزار کروڑ روپے کی امداد دی جا چکی ہے۔ یہاں گجرات میں بھی ریہڑی، پٹری اور ٹھیلا لگانے والے بھائیوں کو تقریباً 800 کروڑ روپے کی مدد ملی ہے۔ آپ اندازہ لگا سکتے ہیں کہ کس طرح بی جے پی ان ریہڑی  پٹری والوں  کی عزت کر رہی ہے جن کو پہلے دھتکار دیا جاتا تھا۔یہاں راجکوٹ میں بھی پی ایم سواندھی یوجنا کے تحت 30 ہزار سے زیادہ قرض دیئے گئے ہیں ۔

 

دوستو

جب ہمارے یہ شراکت دار بااختیار ہوتے ہیں تو ترقی یافتہ ہندوستان کے مشن کو تقویت ملتی ہے۔ جب مودی ہندوستان کو نمبر تین معاشی سپر پاور بنانے کی ضمانت دیتے ہیں تو ان کا ہدف سب کے لیے صحت اور سب کے لیے خوشحالی ہے۔ آج ملک کو ملنے والے یہ منصوبے ہمارے عزم کو پورا کریں گے، اسی  امید کے ساتھ آپ نے ہمارا  جوشاندار استقبال کیا، ہمیں ایئرپورٹ سے لے کر یہاں تک اور درمیان میں بھی آپ کو دیکھنے کا موقع ملا۔ برسوں بعد آج کئی پرانے ساتھیوں کے چہرے دیکھے، سب کو نمستے کہا اور سلام کیا۔ مجھے یہ بہت اچھا لگا۔ میں بی جے پی کے راجکوٹ ساتھیوں کو تہہ دل سے مبارکباد دیتا ہوں۔ اس طرح کے ایک عظیم الشان پروگرام کے انعقاد کے لیے اور ایک بار پھر ان تمام ترقیاتی کاموں کے لیے اور ایک ترقی یافتہ ہندوستان کے خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے کے لیے، آئیے ہم سب مل کر آگے بڑھیں۔ آپ سب کو بہت بہت مبارک ہو۔ میرے ساتھ بولے – بھارت ماتا کی جئے! بھارت ماتا کی جئے! بھارت ماتا کی جئے!

بہت بہت شکریہ!

اعلان دستبرداری: وزیر اعظم کی تقریر کے کچھ حصے گجراتی زبان میں بھی ہیں، جن کا یہاں ترجمہ کیا گیا ہے۔

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
BJP manifesto 2024: Super app, bullet train and other key promises that formed party's vision for Indian Railways

Media Coverage

BJP manifesto 2024: Super app, bullet train and other key promises that formed party's vision for Indian Railways
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM Modi holds a public meeting in Tirunelveli, Tamil Nadu
April 15, 2024
People are regarding BJP's ‘Sankalp Patra’ as Modi Ki Guarantee card: PM Modi in Tirunelveli
BJP is dedicated to advancing the vision of leaders like MGR in Tamil Nadu, contrasting with DMK's historical disregard for MGR's legacy: PM Modi
Today, those who want to build the future of their children are voting for BJP: PM Modi
Today, the people of Tamil Nadu, as well as surveys, echo the resounding blessings towards Modi, leaving many puzzled: PM Modi

Prime Minister Narendra Modi graced a public meeting ahead of the Lok Sabha Elections, 2024 in Tirunelveli, Tamil Nadu. The audience welcomed the PM with love and adoration. Manifesting a third term, PM Modi exemplified his vision for Tamil Nadu and the entire nation as a whole.

Initiating his interaction with the crowd, PM Modi extended his heartfelt wishes on the auspicious occasion of Puthandu. The PM also shared that the BJP has released its manifesto for the resolution of New India in the New Year. PM Modi confidently added, “People are regarding BJP's Sankalp Patra as Modi Ki Guarantee card, promising free treatment for seniors over 70, expanding Kisan Samriddhi Kendras, and establishing India as a food processing hub. Additionally, BJP pledges to develop new production clusters for fisheries and promote seaweed and pearl cultivation among fishermen, all in line with Modi's vision for a prosperous Tamil Nadu and India.”

PM Modi also shared snippets from the NDA government’s tireless efforts towards Tamil Nadu’s development and said, “Initiatives like the Vande Bharat Express from Tirunelveli to Chennai have enhanced convenience and spurred progress. Now, the BJP's manifesto promises to extend this progress with the introduction of bullet trains in the South, with surveys set to begin once the third term commences.”

“Today, the people of Tamil Nadu, as well as surveys, echo the resounding blessings towards Modi, leaving many puzzled. What they fail to grasp is Modi's decade-long commitment to serving and winning the hearts of mothers and sisters. Emerging from humble beginnings, Modi understands the struggles faced by impoverished women first-hand. Upon assuming office, he dedicated himself to improving their quality of life, a mission that has greatly benefited the mothers, sisters, and daughters of Tamil Nadu,” the PM observed with humility.

Taking his firm stand on women empowerment, PM Modi thanked the schemes introduced by the BJP government through which “women in Tamil Nadu have gained new employment and self-employment opportunities. The Mudra Scheme alone has provided around Rs 3 lakh crore to Tamil Nadu residents, greatly benefiting women. Now, BJP's manifesto promises to increase Mudra Yojana assistance from Rs 10 lakh to Rs 20 lakh, aiming to empower 3 crore women as 'Lakhpati Didis'. Furthermore, the manifesto pledges to provide training to 10 crore sisters from Self Help Groups in sectors like IT, education, and tourism, ensuring significant benefits for the women of Tamil Nadu.”

PM Modi praising the unique culture and heritage of Tamil Nadu noted that, “The one who loves Tamil language, who loves Tamil culture, today BJP has become his first choice.”

Presenting a sharp contrast between the NDA government and the opposition parties, PM Modi said, “BJP is dedicated to advancing the vision of leaders like MGR in Tamil Nadu, contrasting with DMK's historical disregard for MGR's legacy. The people remember how DMK disrespected Jayalalitha Ji in the House. Additionally, the NDA government addressed the long-standing demand of the Devendrakula Vellalar community, highlighting parallels between their aspirations and Narendra's leadership.”

“The nation now sees the truth about the anti-national alliance between DMK and Congress. Their actions, like giving away Katchatheevu Island, still haunt our fishermen. This injustice, concealed for four decades, has left the people of Tamil Nadu speechless since BJP brought it to light,” the PM shared his discontent.

PM Modi also stated with hope that, “Today, those who want to build the future of their children are voting for BJP. Today, those who want to move ahead with the resolve of a developed India are voting for BJP.”

PM Modi in his final address to Tamil Nadu for the Lok Sabha Elections, 2024, confidently predicts that “the state is poised to make history. Tamil Nadu will decisively support the NDA alliance this time, inspired by BJP's governance and development model.” Attacking the opposition the PM said, “The illusion propagated by DMK and Congress, claiming BJP's insignificance in Tamil Nadu, will be shattered. They lack substantive issues and rely on old negative agendas. Tamil Nadu's people understand that these parties cannot deliver on their promises or preserve the state's culture.”

The PM also urged the first-time voters of Tamil Nadu to break the cycle and vote for the NDA and promised that together, “we will propel Tamil Nadu towards comprehensive development.”

In his closing thoughts, the PM aspired for the people of Tamil Nadu, “On April 19th, vote for NDA to drive both national and Tamil Nadu's development. Despite DMK's attempts to hinder BJP-NDA campaigning, remember, the people of Tamil Nadu stand by you, and so do I. Let's aim for maximum votes at every booth on the 19th May.”

PM Modi expressed gratitude to every individual in the audience and requested them to kindly convey his warm regards to everyone door to door.