PM Modi dedicates Garjanbahal coal mines and the Jharsuguda-Barapali-Sardega rail link to the nation
PM Modi inaugurates Jharsuguda airport in Odisha
Jharsuguda airport is well located to serve the needs of the people of Odisha: PM Modi
Our Government has devoted significant efforts to enhance connectivity all over the nation, says PM Modi

نئیدہلی۔24؍ستمبر۔

اڈیشہ کے گورنر عالی جناب پروفیسر گنیشی لال جی ، ریاست کے وزیراعلیٰ جناب نوین بابو ، مرکز  میں وزیروں کی کونسل کے میرے ساتھ جوئیل اورام  جی،  دھرمیندر پردھان جی، یہاں موجود سبھی تجربہ کار حضرات۔

آج میں تالچیر سے آرہا ہوں۔ لمبے عرصے سے بند پڑا کیمیاوی کھادوں کا کارخانہ ، اس کا احیاء کرنے کا آغا ز آج وہاں کیا گیا۔ قریب 13 ہزار کروڑ روپئے کی لاگت سے۔ ایک طرح سے اس علاقے کی اقتصادی سرگرمیوں کا مرکز بنے گا۔

اسی طرح سے آج مجھے یہاں پر جدید اڈیشہ ، جدید بھارت، اس میں جدید بنیادی ڈھانچہ ہوتا ہے، اور اسی کی طرح آج یہاں ویر سریندر سائیں ہوائی اڈے کی شروعات کرنے کا موقع ملا ہے۔ ویر سریندر سائیں ایئرپورٹ پر آنے والے مسافر ویر سریندر سائیں کا نام سنتے ہی اڈیشہ کی بہادری، اڈیشہ کی قربانی ، اڈیشہ کو خود کو پیش کرنے کی داستان، اس کی طرف بھی قدرتی طور پر راغب ہو ں گے۔

آج یہاں مجھے ایک ساتھ بہت سے پروجیکٹوں اور اسکیموں کا بھی مبارک آغاز کرنے کا موقع ملا ہے۔ یہ ہوائی اڈہ ایک طرح سے اڈیشہ کا دوسرا بڑا ہوائی اڈہ بن رہا ہے۔ اب اتنے سال کیوں نہیں بنا، اس کا جواب آپ لوگوں کو کھوجنا ہے، ہوسکتا ہے میرا انتظار ہورہا تھا۔

میں گجرات سے آتا ہوں، ہمارے یہاں ایک ضلع ہے ’کچھ‘ ۔ ایک طرح سے ریگستان ہے، اُدھر پاکستان ہے، اس ایک ضلع میں پانچ ہوائی اڈے ہیں، ایک ضلع میں۔ آج اتنے برسوں کے بعد اڈیشہ میں دوسرا ہوائی اڈہ بن رہا ہے ۔ جبکہ ابھی سریش جی بتا رہے تھے کہ ملک میں جس طرح سے  ہوائی اڑان کے شعبے میں ترقی ہورہی ہے ، آپ کو جان کر  حیرانی ہوگی، ہمارے ملک میں، ملک آزاد ہوا، تب سے اب تک جو کُل ہوائی جہاز اُڑ رہے ہیں ان کی تعداد  قریب ساڑھے چار سو ہے، آزادی سے اب تک۔  اور اس ایک برس میں نئے ساڑھے  نو سو ہوائی جہاز کا آرڈر بک ہوا ہے۔ کوئی تصور کرسکتا ہے کہ ہم کہاں سے کہاں پہنچ رہے ہیں، کس تیزی سے پہنچ رہے ہیں۔

اور میں سمجھتا ہوں کہ ویر سریندر ہوائی اڈہ ایک طرح سے ایک ایسے سہ رخی سنگم پر واقع ہے جو بھوبنیشور ، رانچی ، رائے پور، تینوں کے ساتھ ایک دم مرکزی نکتہ پر بن رہا ہے۔ آپ تصور کرسکتے ہیں کہ ترقی کے کتنے امکانات  کے پَر اس کے سبب لگنے والے ہیں۔ ایک نئی اڑان اس کے سبب بھرنے والے ہیں۔

جھارسوگوڈا ، سمبل پور  اور چھتیس گڑھ کے آس پاس کے علاقوں کو ، اس کی صنعتی دنیا کے لوگوں کو جو سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں، ان کے لئے  سہولت بہت ضروری ہوتی ہے۔ کبھی جاکر کے وہ آسانی سے آنا جانا ایک بار ہوتا ہے تو پھر وہ اپنا بزنس کی نظریے سے بھی رِسک لیتے ہیں، اس کو آگے بڑھاتے ہیں۔ ہم لوگوں کی سوچ رہی ہے کہ سب کا ساتھ سب کا وکاس کا مطلب علاقائی توازن بھی ہونا چاہئے۔ مغربی ہندوستان کی ترقی ہوتی رہے اور مشرقی ہندوستان کی ترقی نہ ہو تو یہ عدم توازن ملک کیلئے بحران پیدا کرتا ہے۔ اور اس لئے ہماری لگاتار کوشش ہے کہ مشرقی ہندوستان کی ترقی ہو۔ اڈیشہ کی ترقی اس کا ایک اہم حصہ  ہے۔ چاہے مشرقی اترپردیش ہو، اڈیشہ ہو، مغربی بنگال ہو، آسام ہو، شمال مشرق ہو، اس سارے علاقے کی ترقی ، یہ اپنے آپ میں بہت بڑی اہمیت ہے۔

جیسے آج میں یہاں ایک ہوائی اڈے کا افتتاح کررہا ہوں ۔ دو دن کے بعد پرسوں میں سکم میں ہوائی اڈے کا افتتاح کرنے جارہا ہوں۔ آپ تصور کرسکتے ہیں کہ کتنی تیزی سے کام ہورہا ہے ، کتنا ۔ آج مجھے ایک کوئلے کی کان کو بھی قوم کے نام وقف کرنے کا موقع ملا ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ آج زندگی کی سرگرمیوں کے مرکز میں توانائی ہے اور اڈیشہ خوش قسمت ہے۔ اس کے پاس کالے ہیرے کی کان ہے لیکن وہ اگر پڑا رہتا ہے تو بوجھ ہے نکلتا ہے تو رونق ہے۔ اور اس لئے اسے نکالنے کاکام، اس میں سے توانائی پیدا کرنے کاکام ، اس میں سے ترقی کے امکانات کو تلاشنے کاکام ، اس کی بھی آج یہاں شروعات ہورہی ہے اور حرارتی بجلی ، اس کی جو کوئلے کی دستیابی ہورہی ہے  ، اس کی بھی اس کے ساتھ۔

آج ایک ریلوے کی بھی، ہوائی رابطے کی بھی  اہمیت ہے، ریل رابطے کی بھی اہمیت ہے اور بدلے ہوئے دور میں رابطہ یہ سب سے بڑا لازمی حصہ ہوگیا ہے ترقی کا۔ چاہے شاہراہ ہو ، چاہے ریلوے ہو، چاہے ہوائی راستے ہوں   یا چاہے آبی راستے ہوں، انٹرنیٹ رابطوں میں شاہراہ بھی اتنی ہی ضروری ہوگئی ہے۔

آج پہلی مرتبہ قبائلی خطے کے ساتھ ریل کا جڑنا ، یہ اپنے آپ میں ایک بڑا قدم ہے۔ میں مانتا ہوں کہ آنے والے دنوں میں یہ رابطہ اڈیشہ کی چاروں سمتوں میں ترقی کیلئے ہوگا۔ میں پھر ایک بار یہاں کے سبھی شہریوں کو ویر سریندر سائیں ہوائی اڈے کو قوم کے نام وقف کرتے ہوئے انتہائی فخر محسوس کرتا ہوں۔

بہت بہت شکریہ۔

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
Getting excellent feedback, clear people across India voting for NDA, says PM Modi

Media Coverage

Getting excellent feedback, clear people across India voting for NDA, says PM Modi
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
Overwhelming support for the NDA at PM Modi's rally in Nanded, Maharashtra
April 20, 2024
For decades, Congress stalled the development of Vidarbha & Marathwada: PM Modi
The land of Nanded reflects the purity of India's Sikh Gurus: PM Modi
The I.N.D.I alliance only believe in vote-bank politics: PM Modi

Ahead of the Lok Sabha elections, PM Modi addressed a public meeting in Nanded, Maharashtra amid overwhelming support by the people of BJP-NDA. He bowed down to prominent personalities including Guru Gobind Singh Ji, Nanaji Deshmukh, and Babasaheb Ambedkar.

Speaking on the initial phase of voting for the Lok Sabha elections, PM Modi said, “We have the popular support of the First-time voters with us.” He added, “I.N.D.I alliance have come together to save and protect their corruption and the people have thoroughly rejected them in the 1st phase of polling.” He added that the Congress Shehzada now has no choice but to contest from Wayanad, but like he left Amethi he may also leave Wayanad. He said that the country is voting for BJP-NDA for a ‘Viksit Bharat’.

Lamenting the Congress for stalling the development of the people, PM Modi said, “Congress is the wall between the development of Dalits, Poor & deprived.” He added that Congress even today opposes any developmental work that our government intends to carry out. He said that one can never expect them to resolve any issues and people cannot expect robust developmental prospects from them.

Highlighting the dire state and fragile conditions of Marathwada and Vidarbha, PM Modi said, “For decades, Congress stalled the development of Vidarbha & Marathwada.” He “It is the policies of the Congress that both Marathwada and Vidarbha are water-deficient, its farmers are poor and there are no prospects for industrial growth.” He said that our government has enabled 'Nal se Jal' to 80% of households in Nanded. He said that our constant endeavor has been to facilitate the empowerment of our farmers through record rise in MSPs, income support through PM-KISAN, and the promotion of ‘Sree Anna’.

Highlighting the infra impetus in Nanded in the last decade, PM Modi said, “To treat every wound given by Congress is Modi's guarantee.” He added “The ‘Shaktipeeth highway’ and ‘Latur Rail Coach Factory’ is our commitment to a robust infra.” He said that we aim to foster the development of the Marathwada region in the next 5 years.

Elaborating on the relationship between the Sikh Gurus and Nanded, PM Modi said, “The land of Nanded reflects the purity of India's Sikh Gurus.” He added that we are guided by the principles of Guru Gobind Singh Ji. “Over the years we have celebrated the 550th birth anniversary of Guru Nanak Dev Ji, the 400th birth anniversary of Guru Teg Bahadur Ji, and the 350th birth anniversary of Guru Gobind Singh Ji,” said PM Modi. He said that the Congress has always opposed the Sikh community and is taking revenge for 1984. He said that it is due to this that they oppose the CAA that aims to bring the Sikh brothers and sisters to India, granting them citizenship. He said that it was our government that brought back the Guru Granth Sahib from Afghanistan and facilitated the Kartarpur corridor. He said that various other decisions like the abrogation of Article 370 and the abolition of Triple Talaq have greatly benefitted our Muslim sisters and brothers.

Taking a dig at the I.N.D.I alliance, PM Modi said “The I.N.D.I alliance only believe in vote-bank politics.” He added that for this they have left no stone unturned to criticize and disrespect ‘Sanatana’. He said that it is the same I.N.D.I alliance that boycotted the Pran-Pratishtha of Shri Ram.

In conclusion, PM Modi said that we all must strive to ensure that India becomes a ‘Viksit Bharat’, and for that, it is the need of the hour to vote for the BJP-NDA. He thanked the people of Nanded for their overwhelming support and expressed confidence in a Modi 3.0.