Share
 
Comments
ہندوستانی برادری سچی ہندوستانی سفیر ہے: وزیر اعظم مودی
ہندوستان انڈین سولیوشنس۔ گلوبل اپلیکشنس کے جذبے سے مسلسل کام کر رہا ہے: وزیر اعظم مودی
‘میک ان انڈیا نے ہندوستان کو الیکٹرانکس اور خودکار گاڑیوں (آٹو موبائل) بنانے کا مرکز بنا دیا ہے: وزیر اعظم نریندر مودی

نئیدہلی۔29؍اکتوبر۔

نمسکار!

جاپان جیسا ملک ،آکی سیزن کا یہ ماحول اور اس پر آپ سبھی کا ساتھ، واقعی ایک عجیب وغریب سنگم ہے۔ بھارت میں بھی منڈے ہو ورکنگ ڈے ہو اور صبح 9 بجے مجھے بلانا ہو لیکن اتنے سویرے اتنی تعداد میں لگتا ہے کچھ لوگ رات کو ہی آگئے ہوں گے۔ میں آپ کے اس پیار کے لئے آپ کے اس آشیرواد کیلئے دل سے آپ کا بہت بہت شکر گزار ہوں۔

آج کی یہ ملاقات اس لئے بھی اہم ہے کیونکہ جاپان میں بسے آپ سبھی حضرات سے مجھے سال 2016 میں ملنے کا موقع ملا۔ اس کے بعد آج مل رہا ہوں۔ اس موقع پر سب سے پہلے میں بھارت کی طرف سے آپ سب کی طرف سے اپنے پیارے دوست وزیراعظم شنزو ابے کو پھر سے ایل ڈی پی کا صدر چنے جانے پر بہت بہت مبارکباد دیتا ہوں۔

بھارت کے عوام کے تئیں ، میرے تئیں وزیراعظم ابے کا پیار، ان کی محبت ہمیشہ سے رہی ہے۔ اس مرتبہ اس کو نئی شکل دیتے ہوئے جس طرح کا خصوصی رویہ انہوں نے پیش کیا ہے اس کے لئے بھی میں وزیراعظم کا اور جاپان کے عوام کا شکریہ اداکرتا ہوں۔ اس کے ساتھ ہی آپ سبھی کو دیپاولی کی بھی بہت بہت نیک خواہشات پیش کرتا ہوں۔ جس طرح دیوالی میں دیپک جہاں رہتا ہے اُجالاکرتا ہے اسی طرح آپ بھی جاپان اور دنیا کے ہر کونے میں اپنا اور ملک کا نام روشن کریں ۔ میری یہی خواہش ہے۔

ساتھیو،

بھارت کے وزیراعظم کے طورپر یہ میرا جاپان کا تیسرا دورہ ہے اور جب بھی جاپان آنے کا موقع ملا تو یہاں مجھے ایک روحانیت کا احساس ہوتا ہے۔ وہ اس لئے کیونکہ بھارت اور جاپان کے درمیان رشتوں کی جڑیں مذہب سے لیکر فطرت تک ہیں ، ہندو ہویا بودھ مذہب ہماری وراثت مشترک ہے۔ ہمارے معبودوں سے  لیکر لفظ تک میں اس وراثت کی جھلک  ہم ہر لمحہ محسوس کرتے ہیں۔

ماں سروستی  ، ماں لکشمی، بھگوان شیو اور گنیش سب کے ہم سرجاپانی  معاشرے میں موجود ہیں۔ خدمت لفظ کے معنی جاپانی اور ہندی میں ایک ہی ہیں۔ ہوم یہاں پر گوما بن گیا اور تورن جاپانی میں توری بن گیا۔ مقدس ماؤنٹ آن ٹیک (اونتاکے)  پر جانے والے جاپانی تیرتھ یاتری جو روایتی  سفید پوشاک پہنے ہیں، اس پر سنسکرت – سدھم  خط کے کچھ قدیم الفاظ بھی لکھواتے ہیں۔ وہ جب سفید جاپانی تینگوئی  پہنتے ہیں تو اس پر اوم  لکھا جاتا ہے۔

ساتھیو بھارت اور جاپان کے رشتوں کے تانے بانے میں ایسے ماضی کے بہت سے مضبوط دھاگے ہیں۔ بھارت اور جاپان کی تاریخ کو جہاں بدھ اور بوس جوڑتے ہیں وہیں حال کو آپ جیسے  نئے بھارت کے قومی سفیر مضبوط کررہے ہیں۔ حکومت کا سفیر ایک ہے لیکن قومی سفیر یہاں ہزاروں ہیں۔ آپ وہ پُل ہیں جو بھارت اور جاپان کو دونوں ملکوں کے لوگوں کو تہذیب اور اُمنگوں کو جوڑتے ہیں۔ مجھے خوشی ہے کہ آپ اپنی اس ذمہ داری کو کامیابی کے ساتھ نبھا رہے ہیں۔

ساتھیو ، میری جب بھی وزیراعظم جناب ابے سے بات ہوتی ہے تو وہ ہندوستانی برادری کی اتنی تعریف کرتے ہیں کہ دل خوش ہوجاتا ہے۔آپ لوگوں نے اپنے ہنر سے اپنی تہذیبی اقدار سے یہاں بہت عزت حاصل کی ہے۔ یوگ کو آپ جاپان کی روز مرہ کی زندگی کا حصہ بنانے میں کامیاب رہے ہیں۔ یہاں کے مینو میں آپ نے کڑھی چاول شامل کرادیے اور اب تو آپ دیوالی  بھی اپنے جاپانی دوستوں کے ساتھ مناتے ہیں۔ آپ نے مارشل آرٹس میں مہارت اس ملک کو کبڈی کا فن بھی دینا شروع کردیا ہے اور اب آپ کرکٹ کے  کلچر کو بھی پھیلانے میں بھی مصروف ہیں۔ آپ نے جس طرح کنٹری بیوٹ ، دل جیتنے کیلئے بقائے باہم کے منتر سے جاپانی دلوں میں جگہ بنائی ہے وہ یقیناً قابل داد ہے۔ مجھے خوشی ہے کہ 30 ہزار سے زیادہ کا  ہندوستانی سماج یہاں ہماری تہذیب کے نمائندے کی شکل میں کام کررہا ہے۔

ساتھیو ، آپ میں سے بہت سے لوگ  یقینی طور  پر ہندوستان آتے جاتے رہتے ہیں جو کافی وقت سے نہیں بھی گئے ہیں وہ اخبارات کے وسیلے سے انٹرنیٹ کے ذریعے بھارت میں جاری تبدیلی کے بارے میں ضرور جانکاری حاصل کرتے ہوں گے۔ آج بھارت تبدیلی کے بڑے دور سے گزر رہا ہے۔ دنیا آج انسانیت کی خدمت کیلئے بھارت کی کوششوں کی تعریف کررہی ہے۔ بھارت میں جو پالیسیوں کی  تعمیر ہورہی ہے عوامی خدمت کے میدان میں جو کام ہورہا ہے اس کے لئے ملک کو اعزاز دیا جارہا ہے۔ حال ہی میں دنیا کی دو بڑی تنظیموں نے  بھارت کی کوششوں کو سراہا ہے، اعزاز سے نوازا ہے۔ گرین فیوچر میں تعاون کیلئے اقوام متحدہ نے چمپئن آف دی ارتھ کی شکل میں تو ’سول پیس پاؤنڈیشن  ‘نے ’سول پیس ‘انعام کی شکل میں بھارت کو اعزاز سے نوازا ہے۔

ساتھیو،  یہ اعزاز سواسو کروڑ عوام کے نمائندے کی شکل میں بھلے ہی نریندر مودی کو دیا گیا ہو لیکن میرا تعاون مالا کے اس دھاگے جتنا ہے جو موتیوں کو پروتا ہے اور منظم ہوکر آگے بڑھنے کیلئے حوصلہ بڑھاتا ہے۔ ہمارا ملک آپ جیسے ایک سو ایک ہیروں سے موتیوں سے بھرا پڑا ہے۔ صرف ایک مربوط کوشش  کی ضرورت تھی جو ہم گزرے ہوئے چار سال سے کررہے ہیں۔ اجتماعیت کی عوامی شراکت کی اسی طاقت کو  آج دنیا پہچان دے رہی ہے۔ آج ماحول کے تحفظ کیلئے اقتصادی  عدم  توازن کو   ختم کرنے کیلئے عالمی امن کیلئے بھارت کا رول اہم ہے۔

میں ’سول پیس پرائز‘ کی جیوری کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے مودی نومکس  کی تعریف کی ہے۔ ا ن کے جذبات کا پورا احترام کرتے ہوئے میں یہ کہنا چاہوں گا کہ مودی نومکس کے بجائے یہ انڈونومکس کا احترام ہے۔ حکومت کا سربراہ ہونے کی وجہ سے میں وہی کررہا ہوں جو بھارت کی تہذیب ، بھارت کی روایت رہی ہے۔

وسودھیو کٹم بکم اور سروے  بھونتو سکھیناہہ

سروے سنتو نرامیا، کی اپنی اقدار  کے تئیں ہم وقف ہیں۔ ہماری حکومت نے تو صرف اتنی تبدیلی کی ہے کہ دنیا کو بھارت کے  چشمے میں دیکھا جائے اور چشموں سے بھارت کو مت دیکھئے۔ ہماری سرکار بھارتی حل عالمی ایپلی کیشن کے جذبے کے ساتھ لگاتار کام کررہی ہے۔ ہم پہلے بھارت کے مسائل کا حل نکال رہے ہیں اور پھر اس ماڈل کو دنیا کے دوسرے ملکوں کیلئے پیش کررہے ہیں۔

ساتھیو، آپ کو یہ جان کر فخر ہوگا کہ جن دھن ، آدھار اور موبائل یعنی جے اے ایم کے تثلث سے جو شفافیت آئی ہے اس سے اب دنیا کے دوسرے ترقی پذیر ملک بھی جذبہ حاصل کررہے ہیں۔  بھارت میں بنائے گئے اس نظام کا مطالعہ کیا جارہا ہے اس کے علاوہ ڈیجیٹل لین دین کی ہماری جدید سہولت جیسے بھیم ایپ اور روپے کارڈ ، ان کے سلسلے میں  بھی دنیا کے بہت سے ملکوں میں تجسس ہے۔ مجھے بتایا گیا ہے کہ جاپان بھی اب کم نقد والی معیشت کی طرف بڑھ رہا ہے۔ آپ کو یہ جان کر خوشی ہوگی کہ بھارت آج اس جانب بہت آگے نکل چکا ہے۔ گزشتہ چار برس کے دوران ہی یوپی آئی ، بھیم اور  دوسرے ڈیجیٹل پیلٹ فارم کے وسیلوں سے ڈیجیٹل لین دین میں قریب قریب سات گنا کا اضافہ ہوا ہے۔ وہیں مالی شمولیت کو بھارت اگلی سطح پر لے جارہا ہے اور گاؤں گاؤں تک ڈاکخانوں کے وسیلوں سے مالی خدمات کی ہوم ڈیلیوری کی جارہی ہے۔ آپ نے بچپن میں ڈاکیہ دیکھا ہے آج وہ ڈاکیہ بینکر بن گیا ہے۔

ساتھیو، آج بھارت ڈیجیٹل بنیادی ڈھانچے کے معاملے میں بے مثال ترقی کررہا ہے۔ گاؤں گاؤں تک براڈ بینڈ رابطہ پہنچ رہا ہے اور 100 کروڑ سے بھی زیادہ موبائل فون آج بھارت میں سرگرم ہیں۔ کبھی کبھی تو کہا جاتا ہے کہ بھارت کی آبادی سے زیادہ موبائل فونز ہیں۔ بھارت میں ایک جی بی ڈیٹا  کولڈ ڈرنک کی چھوٹی سے چھوٹی بوتل سے بھی سستا ہے۔ یہی سستا ڈیٹا آج سروس ڈیلیوری کا مؤثر وسیلہ بن رہا ہے۔ وہیں میک اِن انڈیا آج گلوبل برانڈ بن کر اُبھرا ہے۔ آج ہم نہ صرف بھارت کیلئے بلکہ دنیا کے لئے بہترین پروڈکٹ بنارہے ہیں خاص طور پر الیکٹرانکس اور آٹوموبیل   مینوفیکچرنگ میں بھارت عالمی مرکز بنتا جارہا ہے۔ موبائل فون مینوفیکچرنگ میں تو ہم نمبر ون بننے کی طرف تیزی سے آگے بڑھ رہے ہیں۔

ساتھیو، میک اِن انڈیا کی کامیابی کے پیچھے وہ ماحول ہے جو گزشتہ چار سال میں تجارت کیلئے بنا ہے ۔ تجارت  میں آسانی پیدا کرنے سے متعلق درجہ بندی میں ہم نے چالیس نمبروں سے زیادہ چھلانگ لگائی ہے۔ عالمی مقابلے میں ہم نے اس برس بھی پانچ پائیدانوں کو عبور کیا ہے۔ وہیں اختراع کے معاملے میں تو آج ہم دنیا کے ترقی یافتہ ملکوں کی فہرست میں شامل ہوچکے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ بھارت اسٹارٹ اپ کے معاملے میں دوسرا بڑا ماحولیاتی نظام بن گیا ہے۔

ساتھیو، بھارت میں جو اختراع ہورہی ہے جو بھی حل نکالے جارہے ہیں وہ سستے تو ہیں ہی معیار کے سلسلے میں بھی عمدہ ہیں۔ بھارت کا خلائی پروگرام اس کی بہترین مثال ہے۔ بھارت دنیا کے بہت سے ملکوں،پرائیویٹ کمپنیوں کے مصنوعی سیارچے بہت ہی کم خرچ پر آج خلا میں بھیج رہا ہے۔ پچھلے سال ہی ہمارے سائنسدانوں نے ایک ساتھ 100 سے زیادہ مصنوعی سیارچے لانچ کرنے کا بے مثال ریکارڈ بنایا تھا۔ ہم نے بہت ہی کم خرچ میں چندریان اور منگل یان خلا میں بھیجا ۔ اب2022 تک بھارت گگن یان بھیجنے کی تیاری میں مصروف ہے۔ یہ گگن یان پوری طرح بھارتی ہوگا اور اس میں خلا میں جانے والا بھی بھارتی ہوگا۔

ساتھیو، زمین سے لیکر خلا تک ایسے بہت سی تبدیلیاں آج بھارت میں ہورہی ہیں۔ انہی تبدیلیوں کے دوران آج بھارت دنیا کی سب سے تیزی سے آگے بڑھتی ہوئی ایک بڑی معیشت بن گیا ہے۔ انہیں تبدیلیوں کو دیکھتے ہوئے دنیا کی تمام ایجنسیاں کہہ رہی ہیں کہ آنے والی دہائی میں دنیا کی ترقی کو بھارت ڈرائیور کریگا۔ بھارت کی اس ترقی کی کہانی میں جاپان کا آپ سبھی کا بھی بہت بڑا تعاون رہنے والا ہے۔ بلیٹ ٹرین سے لیکر اسمارٹ سٹیز تک آج جو نیو انڈیا کا نیا انفراسٹرکچر تیار ہورہا ہے اس میں جاپان کی شراکت داری ہے۔ بھارت کی انسانی طاقت ، بھارت کی نوجوانوں کی طاقت کو بھی جاپان کی ہنرمندی کا فائدہ حاصل ہورہا ہے۔

ساتھیو ، میں آپ سبھی کو نیو انڈیا کی تعمیر میں آپ کی سرگرم شراکت داری کیلئے مدعو کرتا ہوں۔  بھارت میں سرمایہ کاری اور اختراع کیلئے آج مناسب موقع تو ہے ہی ساتھ میں اپنی جڑوں کے ساتھ سرگرمی سے وابستگی کا بھی یہ اہم وقت ہے۔ جاپان میں بسے بھارتیوں نے جاپانی دوستوں کے ساتھ ملکر ہمیشہ سے ہی ملک کیلئے بہت بڑا تعاون دیا ہے۔ سوامی وویکانند جی کو نیتا جی سبھاش چندر بوس کو بھارت کی آزادی کی تحریک کو جو تعاون جاپان سے ملا ہے وہ کروڑوں ہندوستانیوں کے دل میں ہمیشہ رہے گا۔ ہمارے تعلقات مستقبل میں اور گہرے ہوں ، ہماری شراکت داری اور مضبوط ہو اس کیلئے ہم سبھی لگاتار کوشش کرنی ہے۔

میں آج آپ کو اس منچ سے اگلے سال جنوری میں ہونےو الے پرواسی بھارتیہ دیوس اور اردھم کمبھ کے لئے بھی مدعو کرتا ہوں۔ پرواسی بھارتیہ دیوس تو  اس مرتبہ وارانسی میں ہوگا جہاں کی گنگا آرتی دیکھ کر وزیراعظم ابے بھی  دم بخود ہوگئے تھے اور وارانسی آنے کی دعوت میں اس لئے دے رہا ہوں کیوں کہ میں وہاں ممبر پارلیمنٹ ہوں۔ تو ایک طرح سے آپ سب میرے مہمان ہیں، دو دن بعد دنیا کے نقشے پربھارت اپنی نئی پہچان قائم کرنے والا ہے۔ 31اکتوبر سردار ولبھ بھائی پٹیل کا یوم پیدائش ہے ، سردار صاحب کا یوم پیدائش  تو ہم ہر بار مناتے ہیں لیکن اس مرتبہ پوری دنیا کی توجہ مرکوز ہونےو الی ہے کیونکہ سردار صاحب کی جائے پیدائش گجرات کی سرزمین پر سردار صاحب کا دنیا کا سب سے اونچا مجسمہ نصب کیا جارہا ہے۔ یہ اتنا اونچا ہے کہ اس کو سمجھنے کیلئے میں کہوں گا کہ اسٹیچو آف لیبرٹی سے یہ مجسمہ اتحاد دو گنا اونچا ہے۔ سردار صاحب کا رول جتنا اونچا تھا یہ مجسمہ بھی اتنا ہی اونچا بنے گا۔ ہر ہندوستانی فخر سے کہہ سکتا ہے کہ دنیا کا سب سے اونچا مجسمہ ہندوستان کی دھرتی پرہے۔ سردار پٹیل کا ہے۔ 31 اکتوبر کو اس کی نقاب کشائی ہوگی ، مجھے یقین ہے آپ لوگ جب بھی بھارت آئیں گے آپ کے جاپان کے دوست بھارت آئیں گے تو آپ یقینا انہیں سردار پٹیل کے دنیا کے سب سے اونچا مجسمہ دیکھنے جانے کیلئے ضرور اُکسائیں گے۔ یہی میرا اصرار ہے۔

آخر میں پھر آپ سبھی کو دیپاولی کی نیک خواہشات پیش کرتا ہوں ، آپ اتنی بڑی تعدا د میں صبح صبح آئے اس کے لئے بھی تہہ دل سے بہت بہت شکریہ اد ا کرتا ہوں۔

شکریہ۔

'من کی بات ' کے لئے اپنے مشوروں سے نوازیں.
20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
EPFO adds 15L net subscribers in August, rise of 12.6% over July’s

Media Coverage

EPFO adds 15L net subscribers in August, rise of 12.6% over July’s
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
Leaders from across the world congratulate India on crossing the 100 crore vaccination milestone
October 21, 2021
Share
 
Comments

Leaders from across the world congratulated India on crossing the milestone of 100 crore vaccinations today, terming it a huge and extraordinary accomplishment.