Share
 
Comments
ای-روپی واؤچرکی بدولت ہر ایک کو نشان زد ،شفاف اور سقم سے مبرّا بہم رسانی میں مدد ملے گی: وزیراعظم
ای-روپی واؤچرڈی بی ٹی کو زیادہ موثر بنانےمیں اہم کردار اد ا کرے گا اور اس سے ڈجیٹل حکمرانی کو ایک نیا زاویہ ملے گا : وزیراعظم
ہم ٹکنالوجی کو غریبوں کی مدد کے ایک وسیلے کے طور پردیکھتے ہیں اور یہ ان کی ترقی کے لئے ایک وسیلہ ثابت ہوگا: وزیراعظم

نئی دہلی30؍اگست-2021 :وزیراعظم نریند ر مودی نے آج ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ ایک شخصی اور مقصد کے لئے وقف ڈجیٹل ادائیگی کے طریق کار ای –روپی کا آغاز کیا۔ای-روپی ڈجیٹل ادائیگی کے لئے  نقد رقم کے استعمال کے بغیراور کسی کے بھی رابطے میں آئےبغیر استعمال کیا جانے والا ایک ذریعہ ہے۔

اس موقع پر ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ ای –روپی واؤچر ملک میں ڈجیٹل لین دین میں ڈی بی ٹی کواور زیادہ موثر بنانے میں ایک بڑا کردار ادا کرنے جارہا ہے اور اس سے ڈجیٹل حکمرانی کو ایک نیا زاویہ ملے گا۔اس سے ہر کسی کو نشان زد ،شفاف اور سقم سے مبرا بہم رسانی میں مدد ملے گی۔انہوں نے کہا کہ ای –روپی اس بات کی ایک علامت ہے کہ بھارت کس طرح لوگوں کی زندگیوں اور ٹکنالوجی کو جوڑکر ترقی کررہا ہے۔انہوں نے اس بات پر بھی خوشی کا اظہار کیا کہ مستقبل کے لئے موزوں یہ اصلاحی پہل ایک ایسے وقت میں کی گئی ہے جب ملک آزادی کے 75سال مکمل ہونے کے موقع پر ‘‘ امرت مہوتسو ’’ منا رہا ہے۔

انہوں نے حکومت کے علاوہ بھی اگرکوئی تنظیم ،کسی شخص کے علاج معالجہ ،تعلیم  اور دیگرکسی بھی کا م کے لئے اس کی مدد کرنا چاہتی ہے  تو وہ اسے نقد رقم ادا کرنے کے بجائے ای –روپی واؤچردے سکے گی۔اس سے اس بات کو یقینی بنایا جاسکے گاکہ تنظیم کے دی گئی رقم کو اسی کام کے لئے استعمال کیا جاسکے گا،جس کا م کے لئے وہ رقم دی گئی ہے۔

 وزیراعظم نے کہا کہ ای –روپی ایک شخص کے ساتھ مقصد کے لئے وقف طریق  کا ر ہے ۔ای –روپی اس بات کو یقینی بنائے گا کہ رقم کو اسی مقصد کے لئے  کوئی بھی مدد یا کوئی بھی فائدہ فراہم کیا گیا ہے۔

وزیراعظم نے یقین دہانی کرائی کہ ایک ایسا بھی وقت تھا جب ٹکنالوجی کو امیر لوگوں کے استعمال کی چیزسمجھا جاتا تھااور بھارت جیسے غریب ملک میںٹکنالوجی کےلئے کوئی گنجائش نہیں تھی۔انہو ں نے اس وقت کو یاد کیا کہ جب اس حکومت  نے ٹکنالوجی کا ایک مشن کے طورپر استعمال کیا تھا توسیاسی لیڈروں اور بعض قسم کے ماہرین نے اس پرسوال اٹھائے تھے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ آج ملک نے ان لوگوں کی سوچ کو بھی درکنارکردیا ہے اور انہیں  غلط ثابت کردیا ہے۔ آج ملک کی سوچ مختلف ہے۔یہ ایک نئی سوچ ہے ۔آج ہم ٹکنالوجی کو غربیو ں کی مدد  اور ان کی ترقی کے ایک وسیلے کے طور پردیکھ رہے ہیں۔

وزیراعظم نے اس بات کو اجاگر کیا کہ کس طرح ٹکنالوجی لین دین میںشفافیت اور ایمانداری لارہی ہے  اور کس طرح نئے نئے مواقع پیدا کرکے اور انہیں غریب افرادکودستیاب کرارہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ آج کے اس منفرد وسیلے تک پہنچنے کے مقصدسے جے اے ایم سسٹم تخلیق کرکے ،جس سے کہ  موبائل اور آدھار کو منسلک کیا گیا ، گزشتہ کئی سالوں میں اس کی بنیادکی تیاری کی گئی تھی۔ جے اے ایم کے فائدے لوگوں تک پہنچنے میں کچھ وقت لگا اور ہم نے دیکھا کہ کس  طرح ہم لاک ڈاؤن مدت کے دوران ضرورتمندلوگوں کی مدد کرسکے ۔جبکہ دوسرے ممالک اپنے عوام کی مدد کرنے کے لئے جدوجہدکررہے تھے۔جناب نریندر مودی نے ا س بات کو اجاگرکیا کہ بھارت میں فوائد کی براہ راست منتقلی ڈی بی ٹی کے ذریعہ 17 لاکھ 50000 کروڑسے زیادہ روپے لوگوں کے بینک کھاتوں میں براہ راست  منتقل کئے گئے ہیں۔300سے زیادہ اسکیموں  میں  ڈی بی ٹی استعمال ہورہا ہے۔90 کروڑسے زیادہ بھارتی افراد کو رسوئی گیس ، ایل پی جی ، راشن ، طبی علاج ومعالجہ ، وظیفہ ، پنشن  یا اجرتوں کی ادائیگی جیسے شعبوں کے ذریعہ کسی نہ کسی طرح فائدہ  پہنچ رہا ہے ۔ پی ایم کسان سمان ندھی کے تحت ایک لاکھ 35000 کروڑروپے براہ راست کسانو ں کے کھاتوں میں منتقل کئے گئے ہیں۔اس طریقے سے گیہوں کی سرکاری خرید کے لئے 85000 کروڑروپے کی بھی ادائیگی کی گئی ۔ انہوں نے کہا : ‘‘ اس سب کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہوا ہے کہ  ایک لاکھ 78000 کروڑروپےغلط ہاتھوں میں جانے سے بچ گئے ہیں۔’’

وزیراعظم جناب نریندر مودی نے اس بات کو نمایاں کیا کہ بھارت میں ڈجیٹل لین دین کے عمل میں پیش رفت کی بدولت غریب افراد ، محروم افراد ،چھوٹے کاروباری افراد،کسان اورقبائلی آبادی کو بااختیار بنایا جاسکا ہے  اور اس بات کو جولائی کے مہینے میں کئے گئے 6 لاکھ کروڑروپے  تک کے 300 کروڑیو پی آئی لین دین سے محسوس کیا جاسکتا ہے جو کہ ایک ریکارڈ  ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ بھارت دنیا کو یہ ثابت کررہا ہے کہ ہم ٹکنالوجی کو استعمال کرنے او ر اسے حسب منشا ء بنانے میں کسی سے بھی پیچھے نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ جب جدت طرازی اور خدمات کی بہم رسانی میں ٹکنالوجی کے استعمال کی بات ہوتو  بھارت ، دنیا کے بڑے ملکوں کے ساتھ ساتھ عالمی قیادت فراہم کرنے صلاحیت کا حامل ملک  ہے

وزیراعظم نے کہا کہ پی ایم سواندھی یوجناکی بدولت ملک کے چھوٹے قصبوں اور بڑے شہروں  میں 23 لاکھ سے زیادہ  خوانچہ فروشوں کی مدد کی گئی ہے۔عالمی وبا کی اس مدت کے دوران  لگ بھگ 2300 کروڑروپے انہیں ادا کئے گئے۔

وزیراعظم جناب نریندرمودی نے کہا کہ دنیا، بھارت میں ڈجیٹل بنیادی ڈھانچہ  اور ڈجیٹل لین دین کے لئے گزشتہ چھ سات برسوں میں کئے گئے کام کے اثرات کا اعتراف کررہی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ خاص طور پر بھارت میں ،فِن ٹیک کی ایک زبردست بنیاد تیارکی گئی ہے، جو کہ ترقی یافتہ ملکوں تک میں موجود نہیں ہے۔

 

تقریر کا مکمل متن پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

Modi Govt's #7YearsOfSeva
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
From Gulabi Meenakari ship to sandalwood Buddha – Unique gifts from PM Modi to US-Australia-Japan

Media Coverage

From Gulabi Meenakari ship to sandalwood Buddha – Unique gifts from PM Modi to US-Australia-Japan
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
COVID taught us that we are stronger and better when we are together: PM Modi
September 25, 2021
Share
 
Comments
COVID taught us that we are stronger and better when we are together: PM
“Generations will remember the manner in which human resilience prevailed over everything else”
“Poverty cannot be fought by making the poor more dependent on governments. Poverty can be fought when the poor start seeing governments as trusted partners”
“When power is used to empower the poor, they get the strength to fight poverty”
“The simplest and most successful way to mitigate climate change is to lead lifestyles that are in harmony with nature”
“Mahatma Gandhi is among the greatest environmentalists of the world. He led a zero carbon footprints lifestyle. In whatever he did, he put the welfare of our planet above everything else”
“Gandhi ji highlighted the doctrine of trusteeship, where we all are trustees of the planet with the duty of caring for it”
“India is the only G-20 nation that is on track with its Paris commitments”

Namaste!

It is a delight to address this young and energetic gathering. In front of me is a global family, with all the beautiful diversity of our planet.

The Global Citizen Movement uses music and creativity to bring the world together. Music, like sports, has an inherent ability to unite. The great Henry David Thoreau once said, and I quote: "When I hear music, I fear no danger. I am in-vulnerable. I see no foe. I am related to the earliest of times, and to the latest."

Music has a calming impact on our life. It calms the mind and the entire body. India is home to many musical traditions. In every state, in every region, there are many different styles of music. I invite you all to come to India and discover our musical vibrancy anddiversity.

Friends,

For almost two years now, humanity is battling a once in a lifetime global pandemic. Our shared experience of fighting the pandemic has taught us we are stronger and better when we are together. We saw glimpses of this collective spirit when our COVID-19 warriors, doctors, nurses, medical staff gave their best in fighting the pandemic. We saw this spirit in our scientists and innovators, who created new vaccines in record time. Generations will remember the manner in which human resilience prevailed over everything else.

Friends,

In addition to COVID, other challenges remain. Among the most persistent of the challenges is poverty. Poverty cannot be fought by making the poor more dependent on governments. Poverty can be fought when the poor start seeing governments as trusted partners. Trusted partners who will give them the enabling infrastructure to forever break the vicious circle of poverty.

Friends,

When power is used to empower the poor, they get the strength to fight poverty. And therefore, our efforts include banking the unbanked, providing social security coverage to millions, giving free and quality healthcare to 500 million Indians. It would make you happy that about 30 million houses have been built for the homeless in our cities and villages. A house is not only about shelter. A roof over the head gives people dignity. Another mass movement taking place in India is to providedrinking water connection to every household.The Government is spending over a trillion dollars for next-generation infrastructure.For several months last year and now, free food grains have been provided to 800 millions of our citizens.These, and several other efforts will give strength to the fight against poverty.

Friends,

The threat of climate change is looming large before us.The world will have to accept that the any change in the global environment first begins with the self. The simplest and most successful way to mitigate climate change is to lead lifestyles that are in harmony with nature.

The great Mahatma Gandhi is widely known for his thoughts on peace and non-violence. But, do you know that he is also among the greatest environmentalists of the world. He led a zero carbon footprints lifestyle. In whatever he did, he put the welfare of our planet above everything else.He highlighted the doctrine of trusteeship, where we all are trustees of the planet with the duty of caring for it.

Today, India is the only G-20 nation that is on track with its Paris commitments. India is also proud to have brought the world together under the banner of the International Solar Alliance and the Coalition for Disaster Resilient Infrastructure.

Friends,

We believe in the development of India for the development of humankind.I want to conclude by quoting the Rig Veda, which is perhaps one of the world's oldest scriptures.Its verses are still the golden standard in nurturing global citizens.

The Rig Veda says:

संगच्छध्वंसंवदध्वंसंवोमनांसिजानताम्

देवाभागंयथापूर्वेसञ्जानानाउपासते||

समानोमन्त्रःसमितिःसमानीसमानंमनःसहचित्तमेषाम्।

समानंमन्त्रम्अभिमन्त्रयेवःसमानेनवोहविषाजुहोमि।।

समानीवआकूति: समानाहृदयानिव: |

समानमस्तुवोमनोयथाव: सुसहासति||

It means:

Let us move forward together, speaking in one voice;

Let our minds be in agreement and let us share what we have, like the Gods share with each other.

Let us have a shared purpose and shared minds. Let us pray for such unity.

Let us have shared intentions and aspirations that unify us all.

Friends,

what can be a better manifesto for a global citizen than this?May we keep working together

for a kind, just and inclusive planet.

Thank you.

Thank you very much.

Namaste.