ڈیجیٹل طور پر بااختیار نوجوان اس دہائی کو 'انڈیا کا ٹیک ایڈ' بنائیں گے: وزیر اعظم
ڈیجیٹل انڈیاخودکفیل بھارت بننے کا سب سے اہم آلہ ہے: وزیر اعظم
ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب تیز منافع ، پورا منافع ، ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب کم سے کم حکومت ، زیادہ سے زیادہ حکمرانی ہے: وزیر اعظم
کوروناکے اس دور میں ہندوستان کے ذریعہ دی گئی ڈیجیٹل سالیوشن نے پوری دنیا کی توجہ مبذول کروائی ہے: وزیر اعظم
10 کروڑ سے زائد کسان کنبوں کے کھاتے میں 1.35 لاکھ کروڑ روپے جمع کرائے گئے: وزیر اعظم
ڈیجیٹل انڈیا نے ون نیشن - ون ایم ایس پی کی حقانیت کو محسوس کیا ہے: وزیراعظم

نئی دہلی، 01 جولائی: وزیر اعظم ، جنا ب نریندر مودی نے آج 'ڈیجیٹل انڈیا' سے فائدہ اٹھانے والوں سے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے ،'ڈیجیٹل انڈیا' کے آغاز کے چھ سال مکمل ہونے کے موقع پر بات چیت کی۔ اس موقع پر مرکزی وزیر الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹکنالوجی جناب  روی شنکر پرساد اوروزیرمملکت برائے تعلیم جناب سنجے شام راؤ دھوترے بھی موجود تھے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ہندوستان نے جدت طرازی اور اپنی لیاقت واستعداد کو تیزی سے بہتر بنانے کی صلاحیت اور اس کے تئیں کارفرما جذبے کو پوری دنیا کے سامنے پیش  کیا ہے۔ ڈیجیٹل انڈیا ہندوستان کا  پائیدارحل ہے۔ ڈیجیٹل انڈیا آتم نربھربھارت (خودکفیل بھارت) کا سب سے اہم  آلہ ہے۔ ڈیجیٹل انڈیا ایک مضبوط ہندوستان کا مظہر ہے جو 21 ویں صدی میں بہت تیزی کے ساتھ ابھر رہا ہے۔ وزیر اعظم نے اپنے کم سے کم حکومت – اور  زیادہ سے زیادہ حکمرانی کے منتر کا اعادہ کیا اور بتایا کہ کس طرح ڈیجیٹل انڈیا حکومت اور عام لوگوں ، نظام اور سہولیات ، مسائل اور ان کے  حل کے مابین فرق کو کم کرکے عام شہری کو بااختیار بنارہا ہے۔ انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہا کہ ڈیجی لاکر نے کس طرح اور  خاص طور پر وبائی امراض کے دوران لاکھوں لوگوں کی مدد کی۔ اسکول سرٹیفکیٹ ، میڈیکل دستاویزات اور دیگر اہم سرٹیفکیٹ پورے ملک میں ڈیجیٹل طور پر محفوظ کیے گئے۔ انہوں نے کہا کہ ڈرائیونگ لائسنس ، برتھ سرٹیفکیٹ ، بجلی کی بل کی ادائیگی ، پانی کے بل کی ادائیگی ، انکم ٹیکس ریٹرن فائل کرنا وغیرہ جیسی خدمات تیز اور آسان ہوگئی ہیں اور دیہاتوں میں ، کامن سروس سینٹرز(سی ایس سی) لوگوں کی مدد کررہے ہیں۔ ڈیجیٹل انڈیا کے ذریعے ہی ، ون نیشن - ون راشن کارڈ جیسے اقدامات کا لوگوں کو احساس ہوا۔ انہوں نے تمام ریاستوں میں اس اقدام کو نافذ کرنے کا حکم دینے پرسپریم کورٹ کی تعریف بھی کی۔

وزیر اعظم نے اس پر اطمینان کا اظہار کیا کہ ڈیجیٹل انڈیا نے کس طرح مستفیدین کی زندگیوں کو تبدیل کردیا ہے۔ انہوں نے سوا نیدھی اسکیم  پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ کس طرح سوامتوا اسکیم کے فوائد  عام لوگوں تک پہنچے اور ملکیت کے تحفظ میں کمی کے مسئلے کو حل کرنے میں اس کے ذریعہ بڑی مدد ملی۔ انہوں نے دور دراز علاقوں تک ادویات پہنچانے کے سلسلے میں ای- سنجیونی اسکیم کا بھی ذکر کیا اور بتایا کہ نیشنل ڈیجیٹل ہیلتھ مشن کے تحت موثر پلیٹ فارم کے لئے  ابھی بھی کام جاری ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ہندوستان نے کورونا کے اس دور میں جو ڈیجیٹل حل تیار کیے ہیں وہ آج پوری دنیا میں بحث و مباحثے کا موضوع بنے ہوئے  ہیں۔ دنیا کی سب سے بڑی ڈیجیٹل رابطہ ٹریسنگ ایپ میں سے ایک ، آروگیا سیتو نے کورونا انفیکشن کی روک تھام میں بہت مدد کی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بہت سارے ممالک نے ویکسی نیشن کے لئے ہندوستان کی کو-ون ایپ میں بھی دلچسپی ظاہر کی ہے۔ ٹیکہ کاری کے عمل کے لیے اس طرح کے مانیٹرنگ ٹول کا ہونا ہماری تکنیکی مہارت کا واضح  ثبوت ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب سب کے لئے مواقع ، سب کے لئے سہولت اور سب کی شراکت ہے۔ ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب ہے ہر ایک کی سرکاری نظام تک  آسان رسائی۔ ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب ہے شفاف ، غیر متعصبانہ نظام اور بدعنوانی پر کراری چوٹ۔ ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب ہے وقت کے ضیاع کو روکنا ، مزدوری اور رقم کی بچت۔ ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب تیز منافع ، پورا منافع ہے۔ ڈیجیٹل انڈیا کا مطلب کم سے کم حکومت ، زیادہ سے زیادہ حکمرانی ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ڈیجیٹل انڈیا مہم نے کورونا کے بحران کے دوران ملک کی بہت زیادہ  مدد کی ہے۔ ایسے وقت میں جب ترقی یافتہ ممالک لاک ڈاؤن کی وجہ سے اپنے شہریوں کو امدادی رقم بھیجنے میں ناکام رہے تھے ، ہندوستان ہزاروں کروڑ روپے براہ راست لوگوں کے بینک کھاتوں میں بھیج رہا تھا۔ ڈیجیٹل لین دین سے کسانوں کی زندگیوں میں غیر معمولی تبدیلی آئی ہے۔ وزیر اعظم کسان سمان نیدھی  اسکیم کے تحت ، 10 کروڑ سے زائد کسانوں کے کنبوں کے بینک اکاؤنٹ میں 1.35 لاکھ کروڑ روپے براہ راست جمع کرائے گئے ہیں۔ ڈیجیٹل انڈیا نے ون نیشن ، ون ایم ایس پی کی روح کو بھی بھانپ لیا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ جس پیمانے اور رفتار پر ڈیجیٹل انڈیا کے بنیادی ڈھانچے کو بنایا جارہا ہے اس پر بہت زور دیا جارہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ 2.5 لاکھ کامن سروس سینٹرز کے ذریعے انٹرنیٹ دور دراز علاقوں تک پہنچ چکا ہے۔ بھارت نیٹ اسکیم کے تحت ، دیہات میں براڈ بینڈ انٹرنیٹ لانے کے لئے مشن موڈ پر کام جاری ہے۔ پی ایم- وانی کے ذریعہ ، ایکسس پوائنٹس بنائے جارہے ہیں تاکہ دیہی  علاقوں میں رہنے  والے نوجوان بہتر خدمات اور تعلیم کے لیے تیز رفتار انٹرنیٹ سے رابطہ کرسکیں۔ سستی ٹیبلٹ اور ڈیجیٹل آلات ملک بھر کے طلبا کو پیش کیے جارہے ہیں۔ اس مقصد کو حاصل کرنے کے لئے الیکٹرانک کمپنیوں کو پروڈکشن لنکڈ سبسڈی دی جارہی ہے۔ ڈیجیٹل انڈیا کی وجہ سے پچھلے 6-7 سالوں میں ، مختلف اسکیموں کے تحت مستفید افراد کے بینک کھاتوں میں تقریباً17 لاکھ کروڑ روپیے منتقل کیے گئے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ اس دہائی میں ڈیجیٹل ٹکنالوجی میں ہندوستان کی صلاحیتوں کو مزید فروغ دینا ہے ، عالمی ڈیجیٹل معیشت میں ہندوستان کا حصہ۔ 5 جی ٹکنالوجی دنیا میں نمایاں تبدیلیاں لائے گی ، اور ہندوستان اس کے لئے تیاری کر رہا ہے۔ انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ نوجوان ڈیجیٹل امپاورمنٹ کی وجہ سے آپ کو نئی بلندیوں پر لے جانے کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔ اس سے اس دہائی کو 'ہندوستان کا ٹیک ایڈ' بنانے میں مدد ملے گی۔

وزیر اعظم سے بات چیت کے دوران ، اترپردیش کے بلرام پور سے تعلق رکھنے والی ایک طالبہ محترمہ سوہانی ساہو نے دکشا ایپ کے تعلق سے اپنے تجربات شیئر کیے۔ انہوں نے یہ بتایا کہ لاک ڈاؤن کے دوران ان کی تعلیم کے لئے  یہ ایپ ان کے لیے کس قدر کارآمد ثابت ہوا۔ ہنگولی ، مہاراشٹر سے تعلق رکھنے والے مسٹر پرہلاد بورگاد نے ای-این اے ایم ایپ کے  تعلق سے بتایا کہ کس طرح نقل و حمل کے دوران  اس ایپ نے انہیں بہتر قیمت فراہم کرائی اور بچت میں مدد کی۔ بہار کے مشرقی چمپارن میں نیپال کی سرحد کے قریب واقع ایک گاؤں سے تعلق رکھنے والے مسٹر شبھم کمار نے وزیر اعظم کے ساتھ اپنا تجربہ شیئر کیا کہ وہ لکھنؤ جائے بغیر ای -سنجیونی ایپ کے ذریعہ اپنی نانی کا علاج کرنے والی ڈاکٹر سے مشورہ کرنے میں کیسے کامیاب ہوئے اور انہیں کسی طرح کی  زحمت نہیں اٹھانی پڑی۔ لکھنؤ سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر بھوپندر سنگھ جنہوں نے ای- سنجیوانی ایپ کے ذریعے گھر والوں کو مشورے فراہم کیے تھے ، اپنے تجربات شیئر کیے کہ ایپ کے ذریعے صلاح و مشورہ کرنا آسان ہے۔ وزیر اعظم نے ڈاکٹرز ڈے کے موقع پر ان سے اپنی نیک خواہشات کا اظہار کیا اور ان سے وعدہ کیا کہ ای- سنجیوانی ایپ کو بہتر سہولیات کے ساتھ مزید بہتر بنایا جائے گا۔

اترپردیش کے وارانسی سے آنے والی محترمہ انوپما ڈوبی نے روایتی ریشم کی ساڑی فروخت کرنے کے بارے میں اپنے تجربات مہیلا ای -ہاٹ کے ذریعے شیئر کیں اور انہوں نے یہ بھی بتایا کہ وہ ریشم کی ساڑیوں کے لئے نئے نئے ڈیزائن بنانے کے لئے ڈیجیٹل پیڈ اور اسٹائلس جیسی جدید ترین ٹکنالوجی کا استعمال کس طرح کرتی ہیں۔ مسٹر ہری رام ، ایک مہاجر جو اب دہرادون ، اتراکھنڈ میں رہ رہے ہیں ، ون نیشن -ون راشن کے ذریعہ راشن آسانی سے حاصل کرنے کے اپنے تجربے کو شیئر کرنے میں بہت پرجوش تھے۔ ہماچل پردیش کے دھرم پور سے تعلق رکھنے والے مسٹر مہر دت شرما نے اپنے تجربات شیئر کیے کہ کامن سروس سینٹرز میں ای اسٹورز نے قریبی شہروں کا سفر کیے بغیر اپنے دور دراز گاؤں سے مصنوعات خریدنے میں کس طرح ان کی مدد کی۔ مدھیہ پردیش کے اجین کی ایک خوانچہ  فروش محترمہ نجمین شاہ نے بتایا کہ کیسے اس وبائی امراض کے بعد وزیر اعظم سوانیدھی یوجنا نے انہیں معاشی حالت کو بہتر بنانے میں کس طرح ان کی مدد کی۔ میگھالیہ سے تعلق رکھنے والے کے پی او ملازم ، محترمہ واندھامافی سیئم یلیہ نے کہا کہ وہ انڈیا بی پی او اسکیم کی بہت شکر گزار ہیں کیونکہ وہ کووڈ-19 وبائی امراض کے دوران ایک انتہائی محفوظ ماحول میں کام کرسکیں۔

تقریر کا مکمل متن پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
Lok Sabha polls: J&K's Baramulla sees highest voter turnout in over 4 decades

Media Coverage

Lok Sabha polls: J&K's Baramulla sees highest voter turnout in over 4 decades
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM Modi addresses a public meeting in Prayagraj, Uttar Pradesh
May 21, 2024
India is now identified by its expressways and high-tech infrastructure: PM Modi in Prayagraj, UP
The Shehzada of Congress goes abroad to insult India: PM Modi in Prayagraj, UP
During the SP-Congress times, Prayagraj faced a lot of discrimination: PM Modi in Prayagraj, UP

Prime Minister Narendra Modi addressed a huge public gathering in Prayagraj, emphasizing the cultural and spiritual significance of the region, highlighting the progress made under his government, and drawing sharp contrasts with previous administrations.

"Prayag is a land of penance. It is the land of the grandeur of Kumbh. The blessings of Tirthraj Prayag, mean the blessings of the entire world," said PM Modi, as he opened his speech, acknowledging the rich heritage and cultural vibrancy of Prayagraj.

"This election of 2024 will decide the direction in which the Triveni of India's future will flow," PM Modi said, emphasizing the critical nature of the upcoming elections in shaping the country's future trajectory.

Highlighting India's progress, the Prime Minister stated, "India is now identified by its expressways and high-tech infrastructure. Major countries tell me, they also want India's digital technology. India is now raising its voice strongly in the world. When India hosts the G-20, the world is amazed."

PM Modi drew parallels between the spirit of Prayagraj and the modern Indian ethos: "The people here do not live under pressure from anyone. Nor do they live in fear of anyone. The vitality I have seen in the people of Prayagraj is rarely found. And this is the temperament of today's India as well."

PM Modi criticized the opposition parties, particularly the SP, Congress, and the INDI alliance, for their inability to digest India's progress. "The Shehzada of Congress goes abroad to insult India. On what agenda are these INDI alliance people fighting the election? Their agenda is to reinstate Article 370 in Kashmir. Their agenda is to cancel the CAA. Their agenda is to repeal the stringent laws against corruption. Will you vote for them to do all this?" he questioned the audience.

Recalling the days of SP and Congress rule, PM Modi said, "During the SP-Congress times, Prayagraj faced a lot of discrimination. Do you remember how you were made to suffer for electricity? There was the noise and smoke of generators outside every shop. Today, under Yogi Ji's government, every district is getting equal and ample electricity. Before 2017, farmers had to stay awake all night to irrigate their fields. Today, even farmers are getting electricity easily."

"Modi's mantra is, ‘Vikas Bhi, Virasat Bhi’. A grand Ram Mandir has been built in Ayodhya. Now, the development of Nishadraj's Shringverpur will also be done. Shringverpur will become a major pilgrimage site on the Ram Van Gaman Path. Would the SP-Congress people ever do this work?" he asked, highlighting his government's commitment to preserving cultural heritage while pursuing development.

Addressing the first-time voters, PM Modi said, "There are many first-time voters in UP, who might not know much about the 14 years of Vanvas that UP endured. What used to happen during the days of the family-oriented party? How it was difficult for our sisters and daughters to step out of the house. Industries and businesses were ruined."

But Congress and SP are preparing to give reservations meant for Dalits and backward classes to their vote bank against the Constitution. "In Karnataka, the Congress government has given the OBC quota to Muslims. Now, they want to do the same across the country. But today, Modi is here on the land of Prayagraj to guarantee. I will not let them take away the reservations meant for Dalits and backward classes. And this is Modi's guarantee."

Concluding his speech, PM Modi urged the people of Prayagraj to support the BJP candidates in the upcoming elections. "The votes you give them will strengthen Modi. Tell me, will you send them to win on June 4th? Say loudly, will the lotus bloom in both seats?” he said.