Share
 
Comments
The expressways will greatly benefit people of Delhi NCR by reducing pollution and will bring down traffic jams: PM Modi
To uplift the lives of 125 crore Indians, it is necessary that we develop modern infrastructure: PM Modi
We are promoting domestic manufacturing through Make in India initiative, says PM Modi
We are working to empower the women. Through Ujjwala and Mudra Yojana, a positive change has been brought in the lives of women: PM Modi
We are developing five places associated with Dr. Babasaheb Ambedkar as Panchteerth; we are strengthening the Dalits and the marginalised: PM Modi
Opposition mocks the steps we undertake to empower the weaker sections and women. What they do well is spreading lies among people: PM

The Prime Minister, Shri Narendra Modi, on Sunday, dedicated to the nation, two newly built expressways in the Delhi NCR Region. The first of these is the 14 lane, access controlled, Phase-I of the Delhi-Meerut Expressway, stretching from Nizamuddin Bridge to Delhi UP Border. The second project to be dedicated to the nation is the 135 km long Eastern Peripheral Expressway (EPE), stretching from Kundli on NH 1 to Palwal on NH 2.

The Delhi Meerut Expressway, once completed, will significantly reduce travel times from the National Capital to Meerut, and to several other parts of Western Uttar Pradesh and Uttarakhand.

After the inauguration of the Delhi Meerut Expressway, the Prime Minister was greeted by people along the newly constructed road, as he travelled in an open jeep for a few kilometres, inspecting the highway.

The Eastern Peripheral Expressway (EPE), will contribute towards the twin objectives of decongesting and de-polluting the national capital by diverting traffic not destined for Delhi.

Addressing  a public meeting in Baghpat on the occasion, the Prime Minister expressed confidence that the entire stretch of the Delhi Meerut Expressway would be completed soon. He said the Eastern Peripheral Expressway would help decongest traffic in Delhi. He said modern infrastructure has an important role to play in raising the standard of living of the people. He outlined the steps being taken in building infrastructure, including roads, railways, waterways etc. He gave examples of the increase in pace of infrastructure development.


In the field of women empowerment, the Prime Minister explained how toilets built under Swachh Bharat Mission, and LPG connections under Ujjwala Yojana are making the lives of women easier. He said that out of 13 crore loans given under Mudra Yojana, more than 75 percent have been given to women entrepreneurs.

 


The Prime Minister also mentioned the steps taken for Scheduled Castes and Other Backward Castes.

The Prime Minister said that in this year's Union Budget, a provision of 14 lakh crore rupees has been made to strengthen rural and agricultural infrastructure.

 इतना स्नेह तब होता है, जब सेवक से उसका विधाता खुश हो। आज भारतीय जनता पार्टी के नेतृत्व में एनडीए सरकार के 4 साल पूरे होने पर आपका ये प्रधानसेवक फिर आपके सामने नतमस्तक है: PM @narendramodi

Click here to read full text speech

20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Mann KI Baat Quiz
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt

Media Coverage

52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
وزیراعظم 3 دسمبر کو اِن فنیٹی فورم کا افتتاح کریں گے
November 30, 2021
Share
 
Comments
فورم کی خاص توجہ کا مرکز فورم کا موضوع‘ماوراء ہوگا جس کے ذیلی موضوعات میں فنٹیک- سرحدوں سے ماوراء، فنٹیک -مالیات سے ماوراء اور فنٹیک- آئندہ سے ماوراء شامل ہوں گے

وزیراعظم جناب نریندر مودی 3 دسمبر 2021 کو صبح 10 بجے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے اِن  فنیٹی فورم کاافتتاح کریں گے۔ جو فنٹیک کے موضوع پر مفکرین کا ایک فورم ہے۔

اس پروگرام کی میزبانی انٹر نیشنل فائنائشنل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی  ایف ایس  سی اے) کی طرف سے بھارتی حکومت کی سرپرستی میں 3 اور 4 دسمبر 2021 کو کی جارہی ہے۔اس میں گفٹ سٹی اوربلوم برگ کا تعاون شامل رہے گا۔جنوبی افریقہ اور برطانیہ اس فورم کے پہلے ایڈیشن میں شریک ممالک ہیں۔

اِن فینٹی فورم پالیسی، کاروبار اور ٹیکنالوجی سے جڑے ہوئے دنیا کے بہترین اور اعلی دانشوروں کو ایک جگہ پر جمع کر ے گا۔اس کامقصد تبادلہ خیال کرکے اس بارے میں قابل عمل معلومات متعارف کرانا ہوگا کہ کس طرح ٹیکنالوجی اور اختراعات، فنٹیک صنعتی برادری کے لئے جامع ترقی اور بڑے پیمانے پر انسانیت کی خدمت  کے سلسلے میں بہت سود مند ثابت ہوسکتی ہیں۔

 فورم کے ایجنڈے کی خاص توجہ اپنے موضوع‘ ماوراء’ پر رہے گی، اور اس کے کچھ ذیلی موضوعات بھی ہوں گے۔ ان موضوعات میں ‘فنٹیک سرحدوں کے ماوراء’کے تحت حکومت اور کاروباری ادارے مالیاتی شمولیت کو فروغ  دینےکے لئے عالمی نظام کی ترقی میں جغرافیائی سرحدوں سے ماوراء ہو کر غوروفکر کریں گے۔‘ فنٹیک مالیات کے ماوراء’ کے تحت خلائی ٹیکنالوجی، سبز ٹیکنالوجی  اور زرعی ٹیکنالوجی جیسے شعبوںکو ایک دوسرے میں ضم کرکے ایک پائیدار ترقی کے پروگرام کو آگے بڑھانے کی کوشش کی جائے گی۔‘ فنٹیک آئندہ سے ماوراء’ کے تحت اس بار پر توجہ کی جائے گی کہ مستقبل میں کوانٹم کمپیوٹنگ کس طرح فنٹیک صنعت کی نوعیت کو متاثر کرسکتی ہے اور نئے مواقع کو فروغ دے سکتی ہے۔

اس فورم میں 70 سے زیادہ ممالک کے نمائندے شرکت کریں گے۔ اس فورم میں تقریریں کرنے والوں میں خاص طور پر ملیشیا کے وزیر  خزانہ جناب ٹنکو ظفرالعزیز، انڈونیشیا کی وزیر خزانہ محترمہ مولیانی اندرا وتی، انڈونیشیا کی تخلیقی اقتصادیات کے وزیر جناب سنڈیاگا ایس یونو، ریلائنس انڈسٹریز کے چیئرمین اور مینجنگ ڈائریکٹر جناب مکیش امبانی، سافٹ بینک گروپ کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب مسایوشی سونگ، آئی بی ایم کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب اروند کرشنا، کوٹک مہندرا بینک لمٹیڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر اور سی ای  او جناب اودے کوٹک کے علاوہ دیگر لوگوں کے نام بھی شامل ہیں۔اس سال منعقد ہونے والے فورم میں کلیدی طور پر شرکت کرنے والوں میں نیتی آیوگ ، انویسٹ انڈیا ، فکی اور  نیسکام شامل ہے۔

انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی ایف ایس سی اے) جس کا ہیڈ کوارٹر گفٹ سٹی، گاندھی نگر گجرات میں ہے،انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی ایکٹ 2019 کے تحت قائم کی گئی ہے۔یہ ہندوستان میں انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز(آئی ایف ایس سی) کے مالی مصنوعات ، مالی خدمات اور مالیاتی اداروں کی ترقی اور ضابطہ بندی کے لئے  ایک مکمل اتھاریٹی کی حیثیت سے کام کرتی ہے۔سردست، گفٹ  آئی ایف ایس سی ہندوستان میں واحد بین الاقوامی مالیاتی خدمات کا مرکز ہے۔