Share
 
Comments

نئی دہلی، 11 ستمبر 2020: وزیر اعظم جناب نریندر مودی ویڈیو کانفرنسنگ کے توسط سے 13 ستمبر کو بہار میں پیٹرولیم شعبے سے متعلق تین کلیدی پروجیکٹوں کو قوم کے نام وقف کریں گے۔ ان پروجیکٹوں میں پرادیپ۔ ہلدیا ۔ درگاپور پائپ لائن توسیعی پروجیکٹ کے درگاپور ۔ بانکا سیکشن اور دو ایل پی جی باٹلنگ پلانٹس شامل ہیں۔ ان پروجیکٹوں کو پیٹرولیم اور قدرتی گیس کی وزارت کی قیادت میں انڈین آئل اور ایچ پی سی ایل، پی ایس یو کے ذریعہ مکمل کیا گیا ہے۔

اس موقع پر بہار کے وزیر اعلیٰ بھی موجود ہوں گے۔

پائپ لائن پروجیکٹ کا درگاپور ۔ بانکا سیکشن

انڈین آئل کے ذریعہ تعمیر کردہ 193 کلو میٹر طویل درگاپور۔بانکا پائپ لائن سیکشن، پرادیپ ۔ ہلدیا ۔ درگاپور پائپ لائن توسیع پروجیکٹ کا ایک حصہ ہے، جس کا سنگ بنیاد 17 فروری 2019 کو وزیر اعظم کے ذریعہ رکھا گیا تھا۔ درگاپور ۔ بانکا سیکشن بہار کے بانکا میں واقع نئے ایل پی جی باٹلنگ پلانٹ تک، موجودہ 679 کلو میٹر طویل پرادیپ ۔ ہلدیا ۔ درگا پور ایل پی جی پائپ لائن کی توسیعی لائن ہے۔ 14 ڈایامیٹر کی یہ پائپ لائن تین ریاستوں مغربی بنگال (60 کلو میٹر)، جھارکھنڈ (98 کلو میٹر)، اور بہار (35 کلو میٹر) سے ہوکر گزرتی ہے۔ فی الحال، پائپ لائن نظام میں ایل پی جی انجیکشن پرادیپ ریفائنری، ہلدیا ریفائنری اور آئی پی پی ایل ہلدیا سے کیا جا سکتا ہے۔ پورے پروجیکٹ کی تکمیل کے بعد ایل پی جی انجیکشن کی سہولت پرادیپ درآمداتیی ٹرمنل اور برونی ریفائنری سے بھی دستیاب ہوں گی۔

درگاپور سیکشن کے تحت پائپ لائن کو بچھانے کے عمل میں مختلف قدرتی اور انسانی رکاوٹوں کو عبور کرنے کی ضرورت پیش آئی۔ 13 ندیوں (جن میں سے ایک 1077 میٹر طویل اجے ندی بھی ہے)، 5 قومی شاہراہوں، اور 3 ریلوے کراسنگس سمیت مجموعی طور پر 154 کراسنگ کو عبور کیا گیا۔ یہ پائپ لائن پانی کے بہاؤ میں خلل پیدا کیے بغیر جدید ہوریزونٹل ڈائرکشنل ڈرلنگ تکنیک کے توسط سے زیر آب بچھائی گئی۔

 

بانکا، بہار میں ایل پی جی باٹلنگ پلانٹ

انڈین آئل کا ایل پی جی باٹلنگ پلانٹ ریاست میں ایل پی جی کی بڑھتی ہوئی مانگ کو پورا کرکے بہار کی ’خودکفالت‘ میں اضافہ کرے گا۔ یہ باٹلنگ پلانٹ تقریباً 131.75 کروڑ کی لاگت سے بہار میں بھاگلپور، بانکا، جاموئی، ارریہ، کشن گنج اور کٹیہار جیسے اضلاع میں سہولیات فراہم کرانے کے علاوہ جھارکھنڈ میں گوڈا، دیوگڑھ، دومکا، صاحب گنج اور پاکور جیسے اضلاع میں سہولیات فراہم کرانے کی غرض سے تعمیر کیا گیا۔1800 ایم ٹی کے بقدر ایل پی جی اسٹوریج صلاحیت اور یومیہ 40000 سلنڈر بھرنے کی صلاحیت کے ساتھ یہ پلانٹ ریاست بہار میں راست اور غیر راست طور پر روزگار کے مواقع پیدا کرےگا۔

چمپارن (ہرسدھی)، بہار میں ایل پی جی پلانٹ

مشرقی چمپارن ضلع میں واقع ہرسدھی میں ایچ پی سی ایل کے 120 ٹی ایم ٹی پی اے ایل پی جی باٹلنگ پلانٹ کی تعمیر 136.4 کروڑ روپئے کے بقدر کے سرمایے سے عمل میں آئی۔ یہ پلانٹ 29 ایکڑ زمین پر تعمیر کیا گیا اور اس کا سنگ بنیاد 10 اپریل 2018 کو وزیر اعظم کے ذریعہ رکھا گیا۔ یہ باٹلنگ پلانٹ بہار میں مشرقی چمپارن، مغربی چمپارن، مظفرپور، سیوان، گوپال گنج اور سیتامڑھی جیسے اضلاع میں ایل پی جی کی ضرورتوں کو پورا کرے گا۔

یہ تقریب ڈی ڈی نیوز پر راست طور پر نشر کی جائے گی۔

 

20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Mann KI Baat Quiz
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt

Media Coverage

52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
وزیراعظم 3 دسمبر کو اِن فنیٹی فورم کا افتتاح کریں گے
November 30, 2021
Share
 
Comments
فورم کی خاص توجہ کا مرکز فورم کا موضوع‘ماوراء ہوگا جس کے ذیلی موضوعات میں فنٹیک- سرحدوں سے ماوراء، فنٹیک -مالیات سے ماوراء اور فنٹیک- آئندہ سے ماوراء شامل ہوں گے

وزیراعظم جناب نریندر مودی 3 دسمبر 2021 کو صبح 10 بجے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے اِن  فنیٹی فورم کاافتتاح کریں گے۔ جو فنٹیک کے موضوع پر مفکرین کا ایک فورم ہے۔

اس پروگرام کی میزبانی انٹر نیشنل فائنائشنل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی  ایف ایس  سی اے) کی طرف سے بھارتی حکومت کی سرپرستی میں 3 اور 4 دسمبر 2021 کو کی جارہی ہے۔اس میں گفٹ سٹی اوربلوم برگ کا تعاون شامل رہے گا۔جنوبی افریقہ اور برطانیہ اس فورم کے پہلے ایڈیشن میں شریک ممالک ہیں۔

اِن فینٹی فورم پالیسی، کاروبار اور ٹیکنالوجی سے جڑے ہوئے دنیا کے بہترین اور اعلی دانشوروں کو ایک جگہ پر جمع کر ے گا۔اس کامقصد تبادلہ خیال کرکے اس بارے میں قابل عمل معلومات متعارف کرانا ہوگا کہ کس طرح ٹیکنالوجی اور اختراعات، فنٹیک صنعتی برادری کے لئے جامع ترقی اور بڑے پیمانے پر انسانیت کی خدمت  کے سلسلے میں بہت سود مند ثابت ہوسکتی ہیں۔

 فورم کے ایجنڈے کی خاص توجہ اپنے موضوع‘ ماوراء’ پر رہے گی، اور اس کے کچھ ذیلی موضوعات بھی ہوں گے۔ ان موضوعات میں ‘فنٹیک سرحدوں کے ماوراء’کے تحت حکومت اور کاروباری ادارے مالیاتی شمولیت کو فروغ  دینےکے لئے عالمی نظام کی ترقی میں جغرافیائی سرحدوں سے ماوراء ہو کر غوروفکر کریں گے۔‘ فنٹیک مالیات کے ماوراء’ کے تحت خلائی ٹیکنالوجی، سبز ٹیکنالوجی  اور زرعی ٹیکنالوجی جیسے شعبوںکو ایک دوسرے میں ضم کرکے ایک پائیدار ترقی کے پروگرام کو آگے بڑھانے کی کوشش کی جائے گی۔‘ فنٹیک آئندہ سے ماوراء’ کے تحت اس بار پر توجہ کی جائے گی کہ مستقبل میں کوانٹم کمپیوٹنگ کس طرح فنٹیک صنعت کی نوعیت کو متاثر کرسکتی ہے اور نئے مواقع کو فروغ دے سکتی ہے۔

اس فورم میں 70 سے زیادہ ممالک کے نمائندے شرکت کریں گے۔ اس فورم میں تقریریں کرنے والوں میں خاص طور پر ملیشیا کے وزیر  خزانہ جناب ٹنکو ظفرالعزیز، انڈونیشیا کی وزیر خزانہ محترمہ مولیانی اندرا وتی، انڈونیشیا کی تخلیقی اقتصادیات کے وزیر جناب سنڈیاگا ایس یونو، ریلائنس انڈسٹریز کے چیئرمین اور مینجنگ ڈائریکٹر جناب مکیش امبانی، سافٹ بینک گروپ کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب مسایوشی سونگ، آئی بی ایم کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب اروند کرشنا، کوٹک مہندرا بینک لمٹیڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر اور سی ای  او جناب اودے کوٹک کے علاوہ دیگر لوگوں کے نام بھی شامل ہیں۔اس سال منعقد ہونے والے فورم میں کلیدی طور پر شرکت کرنے والوں میں نیتی آیوگ ، انویسٹ انڈیا ، فکی اور  نیسکام شامل ہے۔

انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی ایف ایس سی اے) جس کا ہیڈ کوارٹر گفٹ سٹی، گاندھی نگر گجرات میں ہے،انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی ایکٹ 2019 کے تحت قائم کی گئی ہے۔یہ ہندوستان میں انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز(آئی ایف ایس سی) کے مالی مصنوعات ، مالی خدمات اور مالیاتی اداروں کی ترقی اور ضابطہ بندی کے لئے  ایک مکمل اتھاریٹی کی حیثیت سے کام کرتی ہے۔سردست، گفٹ  آئی ایف ایس سی ہندوستان میں واحد بین الاقوامی مالیاتی خدمات کا مرکز ہے۔