وزیراعظم نے وشوکرما جینتی کے موقع پر روایتی کاریگروں اور دستکاروں کے لیے ’پی ایم وشوکرما‘ کا افتتاح کیا
انھوں نے پی ایم وشوکرما لوگو، ٹیگ لائن ’سمان سمرتھیا سمریدھی‘اور پورٹل کا اجرا بھی کیا
وزیر اعظم نے اس موقع پر کسٹمائزڈ اسٹامپ شیٹ اور ٹول کٹ کتابچہ جاری کیا
انھوں نے18 مستحقین کو وشوکرما سرٹیفکیٹ تقسیم کیے
’’میں ملک کے ہر کارکن کو ، ہر وشوکرما کو ’یشو بھومی‘ وقف کرتا ہوں‘‘
’’یہ وقت کی ضرورت ہے کہ وشوکرما کو تسلیم کیا جائے اور ان کی حمایت کی جائے‘‘
’’آؤٹ سورس کام ہمارے وشوکرما دوستوں کے پاس آنا چاہیے اور انھیں عالمی سپلائی چین کا ایک اہم حصہ بننا چاہیے‘‘
’’اس بدلتے وقت میں ، تربیت ، ٹکنالوجی اور اوزار وشوکرما دوستوں کے لیے اہم ہیں‘‘
’’مودی جی ان لوگوں کے ساتھ کھڑے ہیں جن کا خیال رکھنے والا کوئی نہیں ہے‘‘
’’ووکل فار لوکل پورے ملک کی ذمہ داری ہے‘‘
’’آج کا وکست بھارت ہر شعبے میں اپنی ایک نئی شناخت پیدا کر رہا ہے‘‘
’’یشوبھومی کا پیغام زور دار اور واضح ہے۔ یہاں ہونے والا کوئی بھی پروگرام کامیابی اور شہرت حاصل کرے گا‘‘
’’بھارت منڈپم اور یشوبھومی سینٹر دہلی کو کانفرنس سیاحت کا سب سے بڑا مرکز بنانے جا رہے ہیں‘‘
’’بھارت منڈپم اور یشوبھومی دونوں بھارتی ثقافت اور جدید سہولیات کا سنگم ہیں ، اور یہ عظیم الشان ادارے دنیا کے سامنے بھارت کی کہانی کا اظہار کرتے ہیں‘‘
’’ہمارے وشوکرما کے ساتھی میک ان انڈیا کا فخر ہیں اور یہ بین الاقوامی کنونشن سینٹر دنیا کے سامنے اس فخر کے اظہار کا ایک ذریعہ بنے گا‘‘

وزیراعظم جناب نریندر مودی نے آج نئی دہلی کے دوارکا میں انڈیا انٹرنیشنل کنونشن اینڈ ایکسپو سینٹر – ’یشو بھومی‘ کے پہلے مرحلے کو قوم کے نام وقف کیا۔ ‘یشوبھومی‘ میں ایک شاندار کنونشن سینٹر، متعدد نمائشی ہال اور دیگر سہولیات موجود ہیں۔ انھوں نے وشوکرما جینتی کے موقع پر روایتی کاریگروں اور دستکاروں کے لیے ’پی ایم وشوکرما اسکیم‘ کا بھی افتتاح کیا۔ وزیر اعظم نے پی ایم وشوکرما لوگو ، ٹیگ لائن اور پورٹل کا بھی افتتاح کیا۔ انھوں نے اس موقع پر کسٹمائزڈ  اسٹامپ شیٹ، ٹول کٹ ای بکلیٹ اور ویڈیو بھی جاری کی۔ وزیر اعظم نے18 مستحقین میں وشوکرما سرٹیفکیٹ تقسیم کیے۔

 

اس مقام پر پہنچنے پر وزیر اعظم نے نمائش گرو ششیہ پرمپارا اور نیو ٹکنالوجی کا واک تھرو کیا۔ انھوں نے یشوبھومی کے تھری ڈی ماڈل کا بھی معائنہ کیا۔ اس سے پہلے وزیر اعظم نے دوارکا سیکٹر 3 سے نئے میٹرو اسٹیشن یشوبھومی دوارکا سیکٹر 21 تک دہلی ایئر پورٹ میٹرو ایکسپریس لائن کی توسیع کا افتتاح کیا۔

اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے وشوکرما جینتی کے موقع پر نیک خواہشات کا اظہار کیا اور کہا کہ یہ روایتی کاریگروں اور دستکاروں کے لیے وقف ہے۔ انھوں نے ملک بھر سے لاکھوں وشوکرما سے جڑنے کا موقع ملنے پر خوشی کا اظہار کیا۔ انھوں نے اس موقع پر نمائش میں شرکت کرنے اور دستکاروں اور دستکاروں سے بات چیت کرنے کے عظیم تجربے پر بھی روشنی ڈالی۔ انھوں نے شہریوں پر بھی زور دیا کہ وہ اس موقع پر جائیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ لاکھوں کاریگروں اور ان کے کنبوں کے لیے پی ایم وشوکرما اسکیم امید کی کرن کے طور پر آ رہی ہے۔

بین الاقوامی کنونشن اور ایکسپو سینٹر یشوبھومی کے بارے میں وزیر اعظم نے اس شاندار تنصیب کی تعمیر میں مزدوروں اور وشوکرما کے تعاون کا اعتراف کیا۔ انھوں نے کہا کہ آج میں یشوبھومی کو ملک کے ہر کارکن، ہر وشوکرما کو وقف کرتا ہوں۔ انھوں نے آج کے پروگرام سے جڑے وشوکرموں کو بتایا کہ ’یشوبھومی‘ اپنی تخلیقات کو دنیا اور عالمی منڈیوں سے جوڑنے والا ایک متحرک مرکز بننے جا رہا ہے۔

 

وزیر اعظم نے ملک کی روزمرہ کی زندگی میں وشوکرموں کے تعاون اور اہمیت پر زور دیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ٹکنالوجی میں ہونے والی ترقی سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ وشوکرم سماج میں ہمیشہ اہم رہیں گے۔ انھوں نے کہا کہ یہ وقت کی ضرورت ہے کہ وشوکرما کو تسلیم کیا جائے اور ان کی حمایت کی جائے۔

جناب مودی نے کہا کہ حکومت وشوکرما کے احترام کو بڑھانے ، صلاحیتوں کو بڑھانے اور خوشحالی کو بڑھانے کے لیے ایک شراکت دار کے طور پر آگے آئی ہے۔ دستکاروں اور دستکاروں کے 18 اہم شعبوں پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیر اعظم نے بتایا کہ بڑھئی، لوہار، سنار، مجسمہ ساز، کمہار، موچی، درزی، راج مستری، ہیئر ڈریسر، دھوبی وغیرہ کو وزیر اعظم وشوکرما اسکیم میں شامل کیا گیا ہے اور اس پر 13000 کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔

اپنے غیر ملکی دوروں کے دوران کاریگروں سے بات چیت کرتے ہوئے اپنے ذاتی تجربے کو یاد کرتے ہوئے وزیر اعظم نے ہاتھ سے بنی مصنوعات کی بڑھتی ہوئی مانگ پر روشنی ڈالی۔ انھوں نے کہا کہ دنیا بھر میں بڑی کمپنیاں اپنا کام چھوٹے کاروباری اداروں کو دیتی ہیں۔ ’’یہ آؤٹ سورس کام ہمارے وشوکرما دوستوں کے پاس آنا چاہیے اور وہ گلوبل سپلائی چین کا حصہ بن جائیں، ہم اس کے لیے کام کر رہے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ یہ اسکیم وشوکرما دوستوں کو جدید دور میں لے جانے کی ایک کوشش ہے۔‘‘

 

وزیر اعظم نے ہنرمند کاریگروں اور پیشوں کو تربیت فراہم کرنے کے اقدامات کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ اس بدلتے وقت میں وشوکرما دوستوں کے لیے تربیت ، ٹکنالوجی اور اوزار اہم ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ تربیت کے اوقات کے دوران وشواکرما دوستوں کو 500 روپے یومیہ الاؤنس فراہم کیا جائے گا۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ جدید ٹول کٹ کے لیے 15 ہزار روپے مالیت کا ٹول کٹ واؤچر بھی دیا جائے گا اور حکومت مصنوعات کی برانڈنگ، پیکیجنگ اور مارکیٹنگ میں مدد کرے گی۔ انھوں نے کہا کہ ٹول کٹس صرف جی ایس ٹی رجسٹرڈ دکانوں سے ہی خریدی جائیں اور یہ اوزار میڈ ان انڈیا ہونے چاہئیں۔

وشوکرما کے لیے ضمانت کے بغیر فنانس کی فراہمی کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ جب گارنٹی مانگی جاتی ہے تو وہ گارنٹی مودی کے ذریعہ دی جاتی ہے۔ انھوں نے بتایا کہ وشوکرما دوستوں کو بہت کم سود کے ساتھ کسی ضمانت کے بغیر 3 لاکھ روپے تک کا قرض ملے گا۔

مرکز میں حکومت محروموں کی ترقی کو ترجیح دیتی ہے۔ یہ بات وزیر اعظم نے ’ایک ضلع، ایک پروڈکٹ‘ اسکیم پر روشنی ڈالتے ہوئے کہی جو ہر ضلع سے منفرد پیداوار کی حوصلہ افزائی کرتی ہے۔ انھوں نے پی ایم سواندھی اسکیم کے ذریعے اسٹریٹ وینڈروں کے لیے بینک کے دروازے کھولنے اور معذوروں کے لیے خصوصی سہولیات پیدا کرنے کا بھی ذکر کیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ مودی ان لوگوں کے لیے کھڑے ہیں جن کے پاس ان کی پرواکرنے والا کوئی نہیں ہے۔ انھوں نے کہا کہ وہ یہاں خدمت کرنے، باوقار زندگی دینے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لیے آئے ہیں کہ خدمات کی فراہمی بلا تعطل ہو۔ انھوں نے کہا کہ یہ مودی کی ضمانت ہے۔

 

وزیراعظم نے کہا کہ دنیا نے جی 20 کرافٹ بازار میں ٹیکنالوجی اور روایت کے امتزاج کا نتیجہ دیکھا ہے۔ یہاں تک کہ آنے والے معززین کے لیے تحائف میں وشواکرما دوستوں کی مصنوعات شامل تھیں۔ انھوں نے کہا، ’’ووکل فار لوکل کے لیے یہ لگن پورے ملک کی ذمہ داری ہے۔ ‘‘انھوں نے مزید کہا کہ سب سے پہلے ہمیں لوکل کے لیے ووکل بننا ہوگا اور پھر ہمیں لوکل کو گلوبل تک لے جانا ہوگا۔

گنیش چترتھی، دھن تیرس، دیوالی اور دیگر جیسے ملک میں آنے والے تہواروں کا ذکر کرتے ہوئے وزیر اعظم نے ملک کے ہر شہری پر زور دیا کہ وہ مقامی مصنوعات خریدیں، خاص طور پر وہ جن میں ملک کے وشوکرموں نے اپنا حصہ ڈالا ہے۔

وزیر اعظم نے دنیا بھر میں بحث کا موضوع بننے والے بھارت منڈپم کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ آج کا وکست بھارت ہر شعبے میں اپنی ایک نئی شناخت تیار کر رہا ہے اور کہا کہ یشو بھومی نے اس روایت کو مزید عظمت کے ساتھ آگے بڑھایا ہے۔ جناب مودی نے زور دے کر کہا کہ یشوبھومی کا پیغام زور دار اور واضح ہے۔ یہاں ہونے والا کوئی بھی واقعہ کامیابی اور شہرت حاصل کرے گا۔ انھوں نے مزید کہا کہ یشوبھومی مستقبل کے بھارت کو ظاہر کرنے کا ایک ذریعہ بن جائے گا۔

انھوں نے کہا کہ بھارت کی عظیم اقتصادی طاقت اور تجارتی طاقت کو ظاہر کرنے کے لیے ، یہ ملک کی راجدھانی میں ایک قابل قدر مرکز ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ یہ کثیر الجہتی رابطے اور وزیر اعظم گتی شکتی دونوں کی عکاسی کرتا ہے۔ انھوں نے میٹرو کے ذریعہ مرکز کو فراہم کردہ رابطے اور آج میٹرو ٹرمینل کے افتتاح کے بارے میں بات کرکے اس کی وضاحت کی۔ انھوں نے اس بات پر بھی روشنی ڈالی کہ یشوبھومی کا ماحولیاتی نظام صارفین کے سفر ، رابطے ، رہائش اور سیاحت کی ضروریات کا خیال رکھے گا۔

 

وزیر اعظم نے اس بات پر زور دیا کہ بدلتے وقت کے ساتھ ترقی اور روزگار کے نئے شعبے ابھر رہے ہیں۔ انھوں نے اس بات پر زور دیا کہ پچاس سے ساٹھ سال پہلے بھارت میں اتنے بڑے پیمانے اور تناسب کے آئی ٹی سیکٹر کا کوئی تصور بھی نہیں کرسکتا تھا۔ انھوں نے مزید کہا کہ یہاں تک کہ سوشل میڈیا بھی تیس سے پینتیس سال پہلے افسانوی حیثیت رکھتا تھا۔ کانفرنس سیاحت کے مستقبل پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ یہ شعبہ بھارت کے لیے بے پناہ امکانات رکھتا ہے اور بتایا کہ اس کی مالیت 25,000 کروڑ روپے سے زیادہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ دنیا بھر میں ہر سال 32 ہزار سے زائد بڑی نمائشیں اور نمائشیں منعقد کی جاتی ہیں جہاں کانفرنس ٹورازم کے لیے آنے والے افراد ایک عام سیاح سے زیادہ پیسہ خرچ کرتے ہیں۔ جناب مودی نے یہ بھی بتایا کہ اتنی بڑی صنعت میں بھارت کا حصہ صرف ایک فیصد ہے اور بھارت میں بہت سی بڑی کمپنیاں ہر سال اپنی تقریبات کے انعقاد کے لیے بیرون ی ممالک جاتی ہیں۔ انھوں نے مزید زور دے کر کہا کہ بھارت اب کانفرنس سیاحت کے لیے بھی خود کو تیار کر رہا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ کانفرنس سیاحت بھی تبھی ترقی کرے گی جہاں تقریبات، میٹنگوں اور نمائشوں کے لیے ضروری وسائل ہوں گے، اس لیے بھارت منڈپم اور یشوبھومی مرکز اب دہلی کو کانفرنس سیاحت کا سب سے بڑا مرکز بنانے جا رہے ہیں۔ لاکھوں نوجوانوں کو روزگار ملنے کا امکان ہے۔ جناب مودی نے کہا کہ مستقبل میں یشو بھومی ایک ایسی جگہ بن جائے گی جہاں دنیا بھر کے ممالک کے لوگ بین الاقوامی کانفرنسوں ، اجلاسوں اور نمائشوں کے لیے آئیں گے۔

وزیر اعظم نے اسٹیک ہولڈرز کو یشوبھومی آنے کی دعوت دی۔ انھوں نے کہا، ’’آج میں دنیا بھر کے ممالک سے نمائش اور ایونٹ انڈسٹری سے جڑے لوگوں کو دہلی آنے کی دعوت دیتا ہوں۔ میں ملک کے ہر خطے کی فلم انڈسٹری اور ٹی وی انڈسٹری کو مدعو کروں گا، مشرق-مغرب-شمال-جنوب۔ آپ یہاں اپنی ایوارڈ تقریبات، فلم فیسٹیول منعقد کرتے ہیں، یہاں پہلے فلمی شو منعقد کرتے ہیں۔ میں بین الاقوامی ایونٹ کمپنیوں، نمائش ی شعبے سے جڑے لوگوں کو بھارت منڈپم اور یشوبھومی میں شامل ہونے کی دعوت دیتا ہوں۔‘‘

 

وزیر اعظم نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ بھارت منڈپم اور یشوبھومی بھارت کی مہمان نوازی، برتری اور شان و شوکت کی علامت بنیں گے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ بھارت منڈپم اور یشوبھومی دونوں بھارتی ثقافت اور جدید سہولیات کا سنگم ہیں اور یہ عظیم الشان ادارے دنیا کے سامنے بھارت کی کہانی کا اظہار کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ یہ نئے بھارت کی امنگوں کی بھی عکاسی کرتا ہے جو اپنے لیے بہترین سہولیات کا خواہاں ہے۔ جناب مودی نے شہریوں پر زور دیا کہ وہ آگے بڑھتے رہیں، نئے اہداف تخلیق کریں، ان کے لیے جدوجہد کریں اور 2047 تک بھارت کو ایک ترقی یافتہ ملک میں تبدیل کریں۔ اپنے خطاب کے اختتام پر وزیر اعظم نے تمام شہریوں کو سخت محنت کرنے اور متحد ہونے کی ضرورت پر زور دیا۔ ہمارے وشوکرما کے ساتھی میک ان انڈیا کا فخر ہیں اور یہ بین الاقوامی کنونشن سینٹر دنیا کو اس فخر کو ظاہر کرنے کا ایک ذریعہ بنے گا۔

اس موقع پر مرکزی وزیر خزانہ محترمہ نرملا سیتارمن، کامرس اور صنعت کے مرکزی وزیر جناب پیوش گوئل، مرکزی وزیر برائے تعلیم، ہنرمندی کی ترقی اور انٹرپرینیورشپ جناب دھرمیندر پردھان، چھوٹی، بہت چھوٹی اور درمیانی صنعتوں کے مرکزی وزیر جناب نارائن رانے اور چھوٹی، بہت چھوٹی اور درمیانی صنعتوں کے مرکزی وزیر مملکت جناب بھانو پرتاپ سنگھ ورما بھی موجود تھے۔

پس منظر

یشو بھومی

دوارکا میں ’یشوبھومی‘ کے فعال ہونے سے ملک میں میٹنگوں، کانفرنسوں اور نمائشوں کی میزبانی کے لیے عالمی معیار کا بنیادی ڈھانچہ رکھنے کے وزیر اعظم کے وژن کو تقویت ملے گی۔ 8.9 لاکھ مربع میٹر سے زیادہ کے مجموعی پروجیکٹ ایریا اور 1.8 لاکھ مربع میٹر سے زیادہ کے مجموی بلٹ اپ ایریا کے ساتھ ، ’یشوبھومی‘ دنیا کی سب سے بڑی ایم آئی سی ای (میٹنگز ، ترغیبات ، کانفرنسوں اور نمائشوں) سہولیات میں اپنی جگہ بنائے گی۔

 

تقریبا 5400 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار کی گئی ’یشو بھومی‘ میں ایک شاندار کنونشن سینٹر، متعدد نمائش ہال اور دیگر سہولیات موجود ہیں۔ کنونشن سینٹر 73 ہزار مربع میٹر سے زائد رقبے پر تعمیر کیا گیا ہے، جس میں مین آڈیٹوریم، گرینڈ بال روم اور 13میٹنگ رومز سمیت 15کنونشن رومز شامل ہیں جن میں 11،000 مندوبین کے بیٹھنے کی مجموعی گنجائش ہے۔ کنونشن سینٹر میں ملک کا سب سے بڑا ایل ای ڈی میڈیا فرنٹ ہے۔ کنونشن سینٹر کا پلینری ہال تقریبا 6,000 مہمانوں کے بیٹھنے کی گنجائش سے لیس ہے۔ آڈیٹوریم میں سب سے جدید خودکار بیٹھنے کا نظام موجود ہے جس میں فرش کو فلیٹ فرش یا آڈیٹوریم کی طرز پر مختلف نشستوں کی ترتیب کے لیے ٹائرڈ نشستیں بنائی جاسکتی ہیں۔ آڈیٹوریم میں استعمال ہونے والے لکڑی کے فرش اور صوتی دیوار کے پینل زائرین کے لیے عالمی معیار کے تجربے کو یقینی بنائیں گے۔ گرینڈ بال روم، ایک منفرد پنکھی کی چھت کے ساتھ، تقریبا 2،500 مہمانوں کی میزبانی کر سکتا ہے۔ اس میں ایک وسیع کھلا علاقہ بھی ہے جس میں 500 افراد بیٹھ سکتے ہیں۔ آٹھ منزلوں پر پھیلے 13 میٹنگ رومز میں مختلف پیمانے پر مختلف قسم کے اجلاس منعقد کیے جاسکتے ہیں۔

’یشو بھومی‘ دنیا کے سب سے بڑے نمائش ہالوں میں سے ایک بھی ہے۔ 1.07 لاکھ مربع میٹر پر محیط یہ نمائش ہال نمائشوں، تجارتی میلوں اور کاروباری تقریبات کی میزبانی کے لیے استعمال کیے جائیں گے، اور ایک عظیم الشان احاطے کی جگہ سے جڑے ہوئے ہیں جسے تانبے کی چھت کے ساتھ منفرد طور پر ڈیزائن کیا گیا ہے جو مختلف اسکائی لائٹس کے ذریعے ہال روشنی کو فلٹر کرتا ہے۔ اس احاطے میں میڈیا رومز، وی وی آئی پی لاؤنجز، کلاک سہولیات، وزیٹر انفارمیشن سینٹر اور ٹکٹنگ سمیت مختلف سپورٹ ایریاز ہوں گے۔

’یشوبھومی‘ میں تمام عوامی گردش کے علاقوں کو اس طرح سے ڈیزائن کیا گیا ہے کہ وہ کنونشن سینٹر کی بیرونی جگہ کے تسلسل کی نمائندگی کرتے ہیں۔ یہ ٹیرازو فرش کی شکل میں بھارتی ثقافت سے متاثر مواد اور اشیا سے بنا ہے جس میں براس انلے رنگولی کے نمونوں، معطل آواز جذب کرنے والے دھاتی سلنڈروں اور روشن پیٹرن والی دیواروں کی نمائندگی کرتا ہے۔

’یشوبھومی‘ پائیداری کے لیے مضبوط عزم کو بھی ظاہر کرتی ہے کیونکہ یہ 100 فیصد گندے پانی کے دوبارہ استعمال، بارش کے پانی کو جمع کرنے کے اہتمام کے ساتھ ایک جدید ترین گندے پانی کے علاج کے نظام سے لیس ہے، اور کیمپس کو سی آئی آئی کی انڈین گرین بلڈنگ کونسل (آئی جی بی سی) سے پلاٹینم سرٹیفکیٹ ملا ہے۔

آنے والوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے ’یشوبھومی‘ ہائی ٹیک سیکورٹی انتظامات سے بھی لیس ہے۔ تین ہزار سے زائد کاروں کے لیے زیر زمین کار پارکنگ کی سہولت بھی 3 سے زائد الیکٹرک چارجنگ پوائنٹس سے لیس ہے۔

نئے میٹرو اسٹیشن ’یشوبھومی دوارکا سیکٹر 25‘ کے افتتاح کے ساتھ ’یشوبھومی‘ کو دہلی ایئر پورٹ میٹرو ایکسپریس لائن سے بھی جوڑا جائے گا۔ نئے میٹرو اسٹیشن میں تین سب وے ہوں گے - ایک 735 میٹر طویل سب وے جو اسٹیشن کو نمائش ہال ، کنونشن سینٹر اور سینٹرل ایرینا سے جوڑتا ہے۔ دوارکا ایکسپریس وے میں داخلی / خارجی راستوں کو جوڑنے والا ایک اور۔ جبکہ تیسرا میٹرو اسٹیشن کو ’یشوبھومی‘ کے مستقبل کے نمائش ہال کے احاطے سے جوڑتا ہے۔

پی ایم وشوکرما

روایتی دستکاریوں میں مصروف لوگوں کی مدد کرنے پروزیر اعظم کی مستقل توجہ رہی ہے۔ یہ توجہ نہ صرف دستکاروں اور دستکاروں کی مالی مدد کرنے کی خواہش پر مبنی ہے بلکہ مقامی مصنوعات، آرٹ اور دستکاری کے ذریعے صدیوں پرانی روایت، ثقافت اور متنوع ورثے کو زندہ اور پھلنے پھولنے کی بھی خواہش ہے۔

 

پی ایم وشوکرما کو مرکزی حکومت 13,000 کروڑ روپئے کی لاگت سے مکمل طور پر مالی اعانت فراہم کرے گی۔ اس اسکیم کے تحت بائیو میٹرک پر مبنی پی ایم وشوکرما پورٹل کا استعمال کرتے ہوئے مشترکہ خدمات مراکز کے ذریعے وشوکرما کو مفت رجسٹر کیا جائے گا۔ انھیں پی ایم وشوکرما سرٹیفکیٹ اور شناختی کارڈ کے ذریعے شناخت، بنیادی اور جدید تربیت کے ساتھ مہارت کی اپ گریڈیشن، 15,000 روپے کی ٹول کٹ ترغیب، ایک لاکھ روپے (پہلی قسط) اور 2لاکھ روپے (دوسری قسط) تک کولیٹرل فری کریڈٹ سپورٹ 5فیصد رعایتی شرح سود پر، ڈیجیٹل لین دین اور مارکیٹنگ سپورٹ کے لیے حوصلہ افزائی فراہم کی جائے گی۔

اس اسکیم کا مقصد اپنے ہاتھوں اور اوزاروں سے کام کرنے والے وشوکرما کے ذریعہ گرو-شیشیا پرمپرا یا روایتی مہارتوں کی فیملی پر مبنی مشق کو مضبوط بنانا اور فروغ دینا ہے۔ پی ایم وشوکرما کی بنیادی توجہ معیار کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ دستکاروں اور دستکاروں کی مصنوعات اور خدمات کی رسائی کو بہتر بنانا اور اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ وہ گھریلو اور عالمی ویلیو چین کے ساتھ مربوط ہوں۔

یہ اسکیم پورے بھارت میں دیہی اور شہری علاقوں میں دستکاروں اور ہنرمندوں کو مدد فراہم کرے گی۔ پی ایم وشوکرما کے تحت اٹھارہ روایتی دستکاریوں کا احاطہ کیا جائے گا۔ ان میں  شامل ہیں: (1) بڑھئی۔ (2) کشتی ساز؛ (3) آرمرر؛ (4) لوہار۔ (5) ہیمر اور ٹول کٹ میکر؛ (6) تالا ساز۔ (vii) سنار۔ (8) کمار۔ (9) مجسمہ ساز، سنگ تراش؛ (x) موچی (جوتے کے کاریگر)؛ (xi) میسن (راج مستری)؛ (xii) ٹوکری / چٹائی / جھاڑو بنانے والے / کوئر ویور؛ (xii) گڑیا اور کھلونا بنانے والے(روایتی)؛ (14) حجام۔ (xv) گارلینڈ بنانے والے؛ (16) دھوبی۔ (xvii) درزی؛ اور (xviii) ماہی گیری کا جال بننےوالے۔

 

تقریر کا مکمل متن پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
India is top performing G-20 nation in QS World University Rankings, research output surged by 54%

Media Coverage

India is top performing G-20 nation in QS World University Rankings, research output surged by 54%
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
سوشل میڈیا کارنر، 23 اپریل 2024
April 23, 2024

Taking the message of Development and Culture under the leadership of PM Modi