پرولیا کے رگھوناتھ پور میں واقع رگھوناتھ پور تھرمل پاور اسٹیشن مرحلہ II (2x660 میگاواٹ) کا سنگ بنیاد رکھا
میجیا تھرمل پاور اسٹیشن کے یونٹ 7 اور 8 کے فلو گیس ڈی سلفرائزیشن (ایف جی ڈی) سسٹم کا افتتاح کیا
این ایچ-12 کے فرکا-رائے گنج سیکشن کو چار لین کرنے کے سڑک منصوبے کا افتتاح کیا
مغربی بنگال میں 940 کروڑ روپے سے زیادہ کے چار ریل منصوبوں کو ملک کے نام وقف کیا
ہماری کوشش ہے کہ مغربی بنگال اپنی موجودہ اور مستقبل کی بجلی کی ضروریات کے لیے خود کفیل ہو
مغربی بنگال ملک اور کئی مشرقی ریاستوں کے لیے مشرقی دروازے کے طور پر کام کرتا ہے
حکومت سڑک، ریلوے، فضائی اور آبی گزر گاہوں کے جدید انفراسٹرکچر کے لیے کام کر رہی ہے

وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے آج کرشنا نگر، نادیہ ضلع، مغربی بنگال میں 15,000 کروڑ روپے کے متعدد ترقیاتی منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھا اور انہیں ملک کے نام وقف کیا۔ آج کے ترقیاتی منصوبے بجلی، ریل اور سڑک جیسے شعبوں سے وابستہ ہیں۔

 

اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ آج کا دن مغربی بنگال کو وکست ریاست بنانے کی طرف ایک اور قدم کی نشاندہی کرتا ہے۔ انہوں نے آرام باغ میں کل کی تقریب کو یاد کیا جہاں انہوں نے ریلوے، بندرگاہ اور پٹرولیم کے شعبوں میں 7000 کروڑ روپے سے زیادہ کے متعدد ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح کیا تھا اور سنگ بنیاد رکھا تھا۔ آج بھی، وزیر اعظم نے کہا، ”میں خوش قسمت ہوں کیونکہ 15,000 کروڑ روپے سے زیادہ کے ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح کیا جا رہا ہے اور مغربی بنگال کے شہریوں کی زندگیوں کو آسان بنانے کے لیے بجلی، سڑک اور ریلوے کے شعبوں کا سنگ بنیاد رکھا جا رہا ہے۔“ انہوں نے کہا کہ ان منصوبوں سے مغربی بنگال کی ترقی کو رفتار ملے گی اور نوجوانوں کے لیے روزگار کے بہتر مواقع بھی فراہم ہوں گے۔ وزیراعظم نے آج کے ترقیاتی منصوبوں کے لیے شہریوں کو مبارک باد دی۔

ترقی کے عمل میں بجلی کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت مغربی بنگال کو اس کی بجلی کی ضروریات کے لیے خود کفیل بنانے کی سمت میں کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ رگھوناتھ پور تھرمل پاور اسٹیشن مرحلہ II (2x660 میگاواٹ)، پرولیا ضلع کے رگھوناتھ پور میں واقع، دامودر ویلی کارپوریشن کا کوئلہ پر مبنی تھرمل پاور پروجیکٹ ریاست میں 11,000 کروڑ روپے سے زیادہ کی سرمایہ کاری لائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ ریاست کی توانائی کی ضروریات کو پورا کرے گا اور علاقے کی اقتصادی ترقی کو بھی آگے بڑھائے گا۔ اس کے علاوہ، انہوں نے کہا کہ میجیا تھرمل پاور اسٹیشن کے یونٹ 7 اور 8 کا فلو گیس ڈیسلفرائزیشن (ایف جی ڈی) سسٹم، جو تقریباً 650 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار کیا گیا ہے، ماحولیاتی مسائل کے تئیں ہندوستان کی سنجیدگی کی ایک مثال ہے۔

 

وزیر اعظم نے کہا کہ مغربی بنگال ملک کے لیے ’مشرقی دروازے‘ کے طور پر کام کرتا ہے اور یہاں سے مشرق کے لیے مواقع کے بے پناہ امکانات ہیں۔ اس لیے حکومت سڑک، ریلوے، فضائی اور آبی راستوں کے جدید رابطوں کے لیے کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ این ایچ-12 (100 کلومیٹر) کے فرکا-رائے گنج سیکشن کو چار لین کرنے کے لیے سڑک کے منصوبے کا آج افتتاح کیا گیا جس کا بجٹ تقریباً 2000 کروڑ روپے ہے اور اس سے سفر کا وقت آدھا رہ جائے گا۔ اس سے قریبی قصبوں میں ٹریفک میں آسانی ہوگی اور علاقے میں معاشی سرگرمیوں میں اضافے کے ساتھ کسانوں کو بھی مدد ملے گی۔

بنیادی ڈھانچے کے نقطہ نظر سے، وزیر اعظم نے اس بات پر زور دیا کہ ریلوے مغربی بنگال کی شاندار تاریخ کا حصہ رہا ہے اور اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ ریاست کی وراثت اور فائدے کو سابقہ حکومتوں کے ذریعہ صحیح طریقے سے آگے نہیں بڑھایا گیا جس سے ترقی کی خلیج پیدا ہوئی ہے۔ وزیر اعظم نے پچھلے 10 سالوں میں مغربی بنگال کے ریلوے انفراسٹرکچر کو تقویت دینے کے لیے حکومت کی کوششوں پر روشنی ڈالی اور پہلے کے مقابلے میں دو گنا رقم خرچ کرنے کا ذکر کیا۔ انہوں نے آج کے اس موقع کا ذکر کیا جب ریلوے کے چار پروجیکٹ ریاست کی جدید کاری اور ترقی کے لیے وقف کیے جا رہے ہیں اور وکست بنگال کی قراردادوں کو پورا کرنے میں مدد کر رہے ہیں۔ انہوں نے شہریوں کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے اپنی تقریر کا اختتام کیا۔

 

اس موقع پر دیگر کے علاوہ مغربی بنگال کے گورنر ڈاکٹر سی وی آنند بوس اور بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں کے مرکزی وزیر مملکت جناب شانتنو ٹھاکر موجود تھے۔

پس منظر

وزیر اعظم نے پرولیا ضلع کے رگھوناتھ پور میں واقع رگھوناتھ پور تھرمل پاور اسٹیشن مرحلہ II (2x660 میگاواٹ) کا سنگ بنیاد رکھا۔ دامودر ویلی کارپوریشن کا کوئلہ پر مبنی تھرمل پاور پروجیکٹ انتہائی مؤثر سپر کریٹیکل ٹیکنالوجی کو استعمال کرتا ہے۔ نیا پلانٹ ملک کی انرجی سیکیورٹی کو مضبوط بنانے کی جانب ایک قدم ہوگا۔

 

وزیر اعظم نے میجیا تھرمل پاور اسٹیشن کے یونٹ 7 اور 8 کے فلو گیس ڈی سلفرائزیشن (ایف جی ڈی) سسٹم کا افتتاح کیا۔ تقریباً 650 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار کیا گیا، ایف جی ڈی سسٹم فلو گیسوں سے سلفر ڈائی آکسائیڈ کو نکال کر صاف فلو گیس اور جپسم کی تشکیل کرے گا، جسے سیمنٹ کی صنعت میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔

وزیر اعظم نے این ایچ-12 (100 کلومیٹر) کے فرکا-رائے گنج سیکشن کو چار لین کرنے کے سڑک منصوبے کا بھی افتتاح کیا۔ تقریباً 1986 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار کیا گیا یہ پروجیکٹ ٹریفک کی بھیڑ کو کم کرے گا، کنیکٹیویٹی کو بہتر بنائے گا اور شمالی بنگال اور شمال مشرقی خطے کی سماجی و اقتصادی ترقی میں تعاون کرے گا۔

 

وزیر اعظم نے مغربی بنگال میں 940 کروڑ روپے سے زیادہ کے چار ریل منصوبوں کو ملک کے نام وقف کیا جس میں دامودر - موہشیلا ریل لائن کو دوگنا کرنے، رامپورہاٹ اور مرارائی کے درمیان تیسری لائن؛ بازارسو - عظیم گنج ریل لائن کو دوگنا کرنے اور عظیم گنج – مرشد آباد کو جوڑنے والی نئی لائن کے منصوبے شامل ہیں۔ یہ منصوبے ریل رابطے کو بہتر بنائیں گے، مال برداری میں سہولت فراہم کریں گے اور خطے میں اقتصادی اور صنعتی ترقی میں اپنا تعاون کریں گے۔

 

تقریر کا مکمل متن پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
How digital tech and AI are revolutionising primary health care in India

Media Coverage

How digital tech and AI are revolutionising primary health care in India
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
Governor of Karnataka meets Prime Minister
July 12, 2024

Governor of Karnataka, Shri Thaawarchand Gehlot met Prime Minister, Shri Narendra Modi today in New Delhi.

The Prime Minister’s Office posted on X;

“Governor of Karnataka, Shri @TCGEHLOT, met Prime Minister @narendramodi.”