Relationship between India and Uzbekistan goes back to a long time. Both the nations have similar threats and opportunities: PM
India and Uzbekistan have same stance against radicalism, separatism, fundamentalism: PM Modi

عالیجناب  ، نمسکار!

سب  سے پہلے تومیں 14دسمبرکو آپ کی مدت کار کے  5ویں سال میں داخل ہونے کے لئے مبارکباد  اورنیک خواہشات پیش کرناچاہتاہوں ۔

میں اس سال ازبیکستان کے دورے کے لئے پرجوش تھا۔

کووڈ -19وباء کی وجہ سے میرا دورہ تونہیں ہوپایا ، لیکن مجھے خوشی ہے کہ ‘‘work from anywhere’’کے اس دورمیں ہم آج ورچوئل طریقے سے مل رہے ہیں ۔

عالیجناب ،

بھارت اورازبیکستان دوخوشحال تہذیبیں ہیں ۔ ہمارے قدیم زمانے سے ہی  مستقل آپسی تعلقات رہے ہیں ۔

ہمارے علاقے کی چنوتیوں اورمواقع کے بارے میں ہماری سمجھ اوراپروچ  میں بہت مماثلت ہے اور اس لئے ہمارےتعلقات ہمیشہ سے بہت مضبوط رہے ہیں ۔

2018اور2019میں آپ کے  بھارت دوروں کے دوران ہمیں کئی معاملوں پر تبادلہ خیال  کرنے کا موقع ملا ، جس سے ہمارے تعلقات میں ایک نئی رفتاردیکھنے کوملی ۔

عالیجناب ،

شورش  پسندی ، شدت پسندی اورعلیحدگی پسندی کے بارے میں ہماری ایک جیسی فکرمندیاں ہیں ۔

ہم دونوں ہی دہشت گردی کے خلاف مضبوطی  سے ایک ساتھ کھڑے ہیں ۔ علاقائی تحفظ کے معاملوں پربھی ہمارانظریہ ایک جیسا ہے ۔

ہم متفق ہیں کہ افغانستان میں امن کی بحالی کے لئے ایک ایسا عمل ضروری ہے جو خود افغانستان کی قیادت  اور کنٹرول میں ہو۔ گذشتہ دودہائیوں کی حصولیابیوں کومحفوظ رکھنا بھی ضروری ہے ۔

بھارت اور ازبیکستان نے مل کرانڈیا۔ سینٹرل ایشیا ڈائیلاگ کی شروعات کی تھی ۔ اس کی شروعات پچھلے سال سمرقندسے ہوئی تھی ۔پچھلے کچھ برسوں میں ہمار ی اقتصادی شراکت داری بھی مضبوط ہوئی ہے ۔

ہم ازبیکستان کے ساتھ اپنی ڈیولپمنٹ پارٹنرشپ کوبھی اورمستحکم بناناچاہتے ہیں ۔

مجھےیہ جان کرخوشی ہے کہ بھارتیہ لائن آف کریڈٹ کے تحت کئی پروجیکٹوں  پرغورکیاجارہاہے ۔

آپ کی ترقیاتی ترجیحات کے مطابق ہم بھارت کی expertise اورتجربہ ساجھاکرنے کے لئے تیارہیں ۔

انفراسٹرکچر، آئی ٹی ، تعلیم ، صحت ، ٹریننگ اورصلاحیت سازی جیسے شعبوں میں بھارت میں کافی صلاحیت ہے جو ازبیکستان کے کام آسکتی ہے ۔ ہمارے درمیان زراعت سے متعلق جوائنٹ ورکنگ گروپ کا قیام ایک اہم اورمثبت قدم ہے ۔ اس سے ہم اپنے زرعی کاروبارکو بڑھانے کے مواقع کھوج سکتے ہیں جس سے  دونوں ملکوں کومدد ملے گی ۔

عالیجناب ،

ہماری سیکوریٹی ساجھیداری دوطرفہ رشتوں کاایک مضبوط ستون بنتی جارہی ہے ۔

پچھلے سال ہماری مسلح افواج کا سب سے پہلامشترکہ فوجی مشق ہوا ۔

خلاء اورایٹمی توانائی کے شعبوں میں بھی ہماری مشترکہ کوششیں بڑھ رہی ہیں ۔

یہ بھی اطمینان کی بات ہے کہ کووڈ -19وباء کے اس مشکل دورمیں دونوں ملکوں نے ایک دوسرے کوبھرپورتعاون دیاہے ۔ خواہ دوائیوں کی سپلائی کے لئے ہو یاایک دوسرے کے شہریوں کو محفوظ طورپرگھرلوٹانے کے لئے ۔

ہماری ریاستوں کے درمیان بھی تعاون بڑھ رہاہے ۔ گجرات اور اندیجوں کی کامیاب ساجھیداری کے ماڈل پراب ہریانہ اورفرگانہ کے درمیان تعاون کاخاکہ بن رہاہے ۔

عالیجناب ،

آپ کی قیادت میں ازبیکستان میں اہم تبدیلی آرہی ہے اوربھارت میں بھی ہم اصلاحات کے راستے پرگامزن ہیں ۔

اس سے کووڈکے بعد دورمیں ہمارے درمیان باہمی تعاون کے امکانات مزید بڑھیں گے ۔

مجھے یقین ہے کہ آج کی ہماری اس چرچاسے ان کوششوں کو نئی سمت اورتوانائی ملے گی ۔

عالیجناب ،

میں اب آپ کوآپ کے افتتاحی خطاب کے لئے مدعوکرتاہوں ۔

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
Industry Upbeat On Modi 3.0: CII, FICCI, Assocham Expects Reforms To Continue

Media Coverage

Industry Upbeat On Modi 3.0: CII, FICCI, Assocham Expects Reforms To Continue
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM condoles loss of lives due to fire mishap in Kuwait City
June 12, 2024

The Prime Minister, Shri Narendra Modi has condoled the loss of lives due to a fire mishap in Kuwait City. The Prime Minister assured that the Indian Embassy in Kuwait is closely monitoring the situation and working with the authorities to assist the affected.

Sharing a post on X by Indian Embassy in Kuwait, the Prime Minister wrote;

“The fire mishap in Kuwait City is saddening. My thoughts are with all those who have lost their near and dear ones. I pray that the injured recover at the earliest. The Indian Embassy in Kuwait is closely monitoring the situation and working with the authorities there to assist the affected.”