Share
 
Comments
بی جے پی سب کا ساتھ، سب کا وکاس میں یقین رکھتی ہے۔ بی جے پی کا یقین ہے کہ ہندوستان تب ہی ترقی کر سکتا ہے جب شمال، جنوب، مشرق اور مغرب ، ان تمام خطوں کی ترقی ہو: وزیر اعظم مودی
ایماندار ٹیکس دہندہ شہری ہی ملک کی ریڑھ کی ہڈی ہے کیونکہ یہ لوگ اپنی محنت کی کمائی سے ملک کو تعاون دیتے ہیں: وزیر اعظم مودی
جی ایس ٹی کے نفاذ کے ساتھ، 150 اشیاء پر سے ٹیکس ہٹ چکا ہے اور 400 ایسی اشیاء ہیں جن پر ٹیکس میں تخفیف کی گئی ہے: وزیر اعظم
وزیر اعظم مودی کا کہنا ہے کہ یہ ہمارا پکا یقین ہے کہ صحت مند بھارت خوشحال بھارت کی پہلی شرط ہے۔
ایک تاریخی قدم اٹھاتے ہوئے کم از کم امدادی قیمت میں اضافہ کر دیا گیا ہے تاکہ کاشتکاروں کو پیداواری لاگت کا کم از کم 150 فیصد مل سکے: وزیر اعظم مودی

وزیر اعظم نریندر مودی نے آج تامل ناڈو میں بوتھ کی سطح کے بی جے پی کاریہ کرتاؤں سے گفت و شنید کی۔ ویڈیو کانفرنسنگ پر مبنی یہ گفتگو وزیر اعظم مودی کے ذریعہ بوتھ کی سطح کے کاریہ کرتاؤں سے کی جانے والی متعدد گفت وشنید کے طریقوں میں سے ایک ہے۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے اپنی گفتگو یہ کہتے ہوئے شروع کی کہ تامل زبان و ثقافت دنیا کی قدیم زبان و ثقافت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ’’بی جے پی سب کا ساتھ سب کا وکاس پر یقین رکھتی ہے ۔ ہمیں یقین ہے کہ ہندوستان اسی صورت میں ترقی کر سکتا ہے جب شمال، جنوب، مشرق اور مغرب سبھی خطوں میں یکساں اور مساوی ترقی ہو۔‘‘

کنیاکماری میں ایک کاریہ کرتا کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ملک کے درمیانہ درجے کے لوگوں نے سلے کی پرواہ کیے بغیر ہمیشہ ملک و قوم کی ترقی کی خدمات انجام دی ہیں اور زبردست قربانیاں دی ہیں۔ انہوں نے سبھی کے لئے بہتر زندگی کو یقینی بنانے کی خاطر درمیانہ درجے کے لوگوں کی نمایاں خدمات کی مثالیں پیش کیں۔ انہوں نے کہا، ’’ایمانداری سے ٹیکس ادا کرنے والے شہری ملک کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں کیونکہ وہ اپنی خون پسینے کی گاڑھی کمائی سے ملک کی ترقی میں تعاون کرتے ہیں۔‘‘

بعد میں وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے نمکل میں بی جے پی کے کاریہ کرتاؤں سے گفتگو کی جہاں ان سے سوال کیا گیا کہ ہندوستان کے حفظانِ صحت کے بارے میں ان کے نظریات کیا ہیں۔ اس سوال کے جواب میں انہوں نے کہا، ’’یہ ہمارا یقین محکم ہے کہ ایک خوشحال ہندوستان، ایک تندروست و صحت مند ہندوستان سے مشروط ہے۔ اگر ہم ہندوستان کی ترقی چاہتے ہیں تو صحت کی دیکھ بھال اور علاج کی خدمات کفایتی ہونی چاہئیں۔‘‘ اس موقع پر وزیر اعظم نے اپنی سرکار کے ذریعہ حفظان صحت کے لئے کیے جانے والے متعدد کلیدی اقدامات کی تفصیل بیان کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقدامات صحت مند ہندوستان کے نشانے کے حصول میں معاون ہوں گے۔

پارٹی ورکروں کے ساتھ وزیر اعظم کی گفتگو کے آخری مرحلے میں کانگریس پر نہ صرف یہ کہ قومی سلامتی کو نظرانداز کرنے بلکہ بدعنوانیوں کو بڑھاوا دینے کے لئے کانگریس پر شدید نکتہ چینی کی۔ کانگریس پر طنز کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا، ’’کانگریس کے لئے یہ انتہائی افسوسناک بات ہے کہ قومی سلامتی اور ملک کا دفاعی شعبہ کانگریس کے لئے مکے بازی کی مشق کے بیگ اور مالیہ کے وسیلے سے زیادہ حیثیت نہیں رکھتا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نے لاتعداد گھپلے کرکے شعبہ دفاع کو بری طرح لوٹا، ان گھپلوں میں 40 اور 50  کے جیب گھپلوں سے لے کر سن 80 کا بوفورس گھپلا اور آگسٹا جیسے بڑے گھپلے شامل ہیں۔ ان کی توجہ صرف اور صرف پیسے پر ہوتی ہے، خواہ اس سے ملک کا اخلاق اور ہماری افواج کی حفاظت ہی خطرے میں کیوں نہ پڑ جائے۔‘‘

عطیات
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
Dreams take shape in a house: PM Modi on PMAY completing 3 years

Media Coverage

Dreams take shape in a house: PM Modi on PMAY completing 3 years
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM’s Meeting with Mr. Tony Abbott, Former Prime Minister of Australia
November 20, 2019
Share
 
Comments

Prime Minister Shri Narendra Modi met Mr Tony Abbott, Former Prime Minister of Australia today.

The Prime Minister conveyed his condolences on the loss of life and property in the recent bushfires along the eastern coast of Australia.

The Prime Minister expressed happiness at the visit of Mr. Tony Abbott to India, including to the Golden Temple on the 550th year of Guru Nanak Dev Ji’s Prakash Parv.

The Prime Minister fondly recalled his visit to Australia in November 2014 for G-20 Summit in Brisbane, productive bilateral engagements in Canberra, Sydney and Melbourne and his address to the Joint Session of the Australian Parliament.

The Prime Minister also warmly acknowledged the role of Mr. Tony Abbott in strengthening India-Australia relations.