نئی دہلی،  15/مارچ 2021 ۔ وزیر اعظم جناب نریندر مودی 16 مارچ 2021 کو فن لینڈ کی وزیر اعظم محترمہ سنّا میرین کے ساتھ ورچول سربراہ ملاقات کریں گے۔

بھارت اور فن لینڈ کے درمیان گرم جوش اور دوستانہ تعلقات ہیں جو جمہوریت، آزادی اور بین الاقوامی نظم پر مبنی ضابطوں پر مبنی ہیں۔ دونوں ملکوں کے درمیان تجارت و سرمایہ کاری، تعلیم، اختراعات، سائنس و ٹیکنالوجی اور تحقیق و ترقی کے شعبوں میں باہمی تعاون ہے۔ دونوں فریقوں کے درمیان سماج کو درپیش چیلنجوں کے تدارک کے لئے مصنوعی ذہانت کا استعمال کرتے ہوئے کوانٹم کمپیوٹر کے مشترکہ فروغ سے متعلق بھی شراکت داری ہے۔ فن لینڈ کی تقریباً 100 کمپنیاں قابل تجدید توانائی سمیت ٹیلی مواصلات، ایلیویٹرس، مشینری اور توانائی جیسے متعدد شعبوں  میں بھارت میں سرگرمی سے کام کررہی ہیں۔ تقریباً 30 بھارتی کمپنیاں بھی فن لینڈ میں اطلاعاتی ٹیکنالوجی، آٹو کمپونینٹس اور ہاسپیٹلٹی جیسے شعبوں میں خاص طور پر سرگرم ہیں۔

سربراہ ملاقات کے دوران دونوں لیڈران دو فریقی تعلقات سے متعلق سبھی پہلوؤں کا احاطہ کریں گے اور باہمی دلچسپی کے علاقائی اور عالمی امور پر بھی خیالات کا تبادلہ کریں گے۔ ورچول سربراہ ملاقات بھارت – فن لینڈ شراکت داری کی مستقبل میں توسیع اور تنوع کا ایک خاکہ بھی فراہم کرے گی۔

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
How digital tech and AI are revolutionising primary health care in India

Media Coverage

How digital tech and AI are revolutionising primary health care in India
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
Delegation from Catholic Bishops' Conference of India calls on PM
July 12, 2024

A delegation from the Catholic Bishops' Conference of India called on the Prime Minister, Shri Narendra Modi today.

The Prime Minister’s Office posted on X:

“A delegation from the Catholic Bishops' Conference of India called on PM Narendra Modi. The delegation included Most Rev. Andrews Thazhath, Rt. Rev. Joseph Mar Thomas, Most Rev. Dr. Anil Joseph Thomas Couto and Rev. Fr. Sajimon Joseph Koyickal.”