’’خواہ تعلیم کا میدان ہو، زراعت ہو یا صحت، کھوڈل دھام ٹرسٹ نے ہر سمت میں بہترین کام انجام دیا ہے‘‘
’’گذشتہ 9 برسوں کے دوران ملک میں 30 نئے کینسر ہسپتال قائم کیے گئے ہیں‘‘
’’آیوشمان آروگیہ مندر بیماریوں کا شروعات میں ہی پتہ لگانے میں ایک اہم کردار ادا کر رہا ہے‘‘
’’گجرات نے گذشتہ 20 برسوں میں صحتی شعبے میں غیر معمولی ترقی کی ہے ‘‘

جئے ماں کھوڈل!

آج، اس خاص موقع پر، کھوڈل دھام کی مقدس سرزمین اور ماں کھوڈل کے عقیدت مندوں سے جڑنا میرے لیے بڑے اعزاز کی بات ہے۔ آج شریکھوڈل دھام ٹرسٹ نے عوامی فلاح و بہبود اور خدمت کے میدان میں ایک اور اہم قدم اٹھایا ہے۔ امریلی میں کینسر ہسپتال اور ریسرچ سینٹر کا کام آج سے شروع ہو رہا ہے۔ اگلے چند ہفتوں میں شریکھوڈل دھام ٹرسٹ کاگوڑ کے قیام کے 14 سال بھی مکمل ہو رہے ہیں ۔ آپ سب کو ان تقریبات کے لیے نیک خواہشات۔

میرے خاندان کے افراد،

14 سال قبل لیووا پاٹیدارسماج نے خدمت، اقدار اور لگن کے اسی عزم کے ساتھ شریکھوڈل دھام ٹرسٹ قائم کیا تھا۔ تب سے اس ٹرسٹ نے اپنے خدمتی کام کے ذریعہ لاکھوں لوگوں کی زندگیوں کو بدلنے کا کام کیا ہے۔ تعلیم کا شعبہ ہو، زراعت کا یا صحت کا، آپ کے ٹرسٹ نے ہر سمت میں اچھا کام کرنے کی مسلسل کوشش کی ہے۔ مجھے یقین ہے کہ امریلی میں بننے والا کینسر ہسپتال خدمت کے جذبے کی ایک اور مثال بنے گا۔ اس سے امریلی سمیت سوراشٹر کے ایک بڑے علاقے کو فائدہ پہنچے گا۔

دوستو،

کینسر جیسی سنگین بیماری کا علاج کسی بھی فرد اور خاندان کے لیے ایک بڑا چیلنج بن جاتا ہے۔ حکومت اس بات کو یقینی بنانے کی کوشش کر رہی ہے کہ کینسر کے علاج میں کسی مریض کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ اسی سوچ کے ساتھ ملک میں گزشتہ 9 سالوں میں کینسر کے تقریباً 30 نئے ہسپتال بنائے گئے ہیں۔ اس وقت کینسر کے 10 نئے ہسپتالوں پر کام جاری ہے۔

 

دوستو،

کینسر کے علاج کے لیےیہ بھی بہت ضروری ہے کہ کینسر کا صحیح وقت پر پتہ چل جائے۔ اکثر ہمارے گاؤں کے لوگوں کو جب کینسر کا علم ہوتا ہے تب تک بہت دیر ہوچکی ہوتی ہے، یہ جسم میں بہت زیادہ پھیل چکا ہوتا ہے۔ ایسی صورتحال سے بچنے کے لیے مرکزی حکومت نے گاؤں کی سطح پر 1.5 لاکھ سے زیادہ آیوشمان آروگیہ مندر بنائے ہیں۔ ان آیوشمان آروگیہ مندروں میںکینسر سمیت کئی سنگین بیماریوں کی شروع میں ہیتشخیض کرنے پر زور دیا جا رہا ہے۔ جب کینسر کا جلد پتہ چل جاتا ہے تو ڈاکٹروں کو بھی اس کے علاج میں کافی مدد ملتی ہے۔ مرکزی حکومت کی اس کوشش سے خواتین کو بھی کافی فائدہ ہوا ہے۔ سروائیکل کینسر ہو یا چھاتی کا کینسر، آیوشمان آروگیہ مندر اس کی ابتدائی تشخیض میں اہم کردار ادا کر رہا ہے۔

دوستو،

گجرات نے گزشتہ 20 سالوں میں صحت کے شعبے میں بے مثال ترقی کی ہے۔ آج گجرات ہندوستان کا ایک بڑا طبی مرکز بن رہا ہے۔ 2002 تک گجرات میں صرف 11 میڈیکل کالج تھے، آج ان کی تعداد 40 ہو گئی ہے۔ یہاں ایم بی بی ایس کی نشستوں کی تعداد 20 سالوں میں تقریباً 5 گنا بڑھ گئی ہے۔ پی جی سیٹوں کی تعداد میں بھی تقریباً 3 گنا اضافہ ہوا ہے۔ اب ہمارے پاس راجکوٹ میں ایمس بھی ہے۔ 2002 تک گجرات میں صرف 13 فارمیسی کالج تھے، آج ان کی تعداد بڑھ کر 100 کے قریب ہو گئی ہے۔ 20 سالوں میں ڈپلومہ فارمیسی کالجوں کی تعداد بھی 6 سے بڑھ کر 30 کے قریب ہو گئی ہے۔ گجرات نے صحت کے شعبے میں بڑی اصلاحات کا ماڈل پیش کیا ہے۔ یہاں ہر گاؤں میں کمیونٹی ہیلتھ سینٹر کھولے گئے ہیں۔ صحت کی سہولیات قبائلی اور غریب علاقوں تک پہنچائی گئیں۔ گجرات میں 108 ایمبولینس کی سہولت پر لوگوں کا اعتماد مسلسل مضبوط ہوا ہے۔

میرے خاندان کے افراد،

ملک کی ترقی کے لیےیہ بھی ضروری ہے کہ ملک کے عوام صحت مند اور مضبوط ہوں۔ کھوڈل ماتا کے آشیرواد سے آج ہماری حکومت اسی سوچ پر عمل پیرا ہے۔ ہم نے آیوشمان بھارت یوجنا شروع کیا تاکہ غریبوں کو سنگین بیماری کی صورت میں علاج کے لیے پریشان نہ ہونا پڑے۔ آج اس اسکیمکی مدد سے 6 کروڑ سے زیادہ لوگوں کو اسپتال میں داخل کرایا گیا اور ان کا علاج کروایا گیا۔ اس میں کینسر کے مریضوں کی بھی بڑی تعداد ہے۔ اگر آیوشمان بھارت اسکیم نہ ہوتی تو ان غریبوں کو ایک لاکھ کروڑ روپے خرچ کرنے پڑتے۔ ہماری حکومت نے 10 ہزار جن اوشدھی کیندر بھیکھولے ہیں، جہاں لوگوں کو 80 فیصد رعایت پر دوائیں مل رہی ہیں۔ اب حکومت پی ایم جن اوشدھی مراکز کی تعداد بڑھا کر 25 ہزار کرنے جا رہی ہے۔ سستی ادویات کی وجہ سے مریضوں کو 30 ہزار کروڑ روپے خرچ ہونے سے بچایا گیا ہے۔ حکومت نے کینسر کی ادویات کی قیمتوں کو بھی کنٹرول کیا ہے جس سے کینسر کے بہت سے مریضوں کو فائدہ پہنچا ہے۔

 

دوستو،

میرا آپ سب کے ساتھ اتنا پرانا رشتہ ہے۔ میں جب بھی آپ کے درمیان آتا ہوں، کچھ نہ کچھ ضرور مانگتا ہوں۔ آج بھی میں آپ سے اپنی درخواست دہرانا چاہتا ہوں۔ ایک طرح سے، یہ میری 9 درخواستیں ہیں۔ اور جب ماں کا کام ہو تو نوراتری کا یاد آنا فطری ہے، اسی لیے میں کہتا ہوں کہ 9 درخواستیں ہیں۔ میں جانتا ہوں کہ آپ ان میں سے بہت سے شعبوں میں پہلے ہی بہت کچھ کر رہے ہیں۔ لیکن آپ کے لیے، آپ کی نوجوان نسل کے لیے، میںیہ 9 گزارشات دہرا رہا ہوں۔ سب سے پہلے - پانی کے ہر قطرے کو بچائیں اور زیادہ سے زیادہ لوگوں کو پانی کے تحفظ کے بارے میں آگاہ کریں۔ دوسرا- گاؤں گاؤں جائیں اور لوگوں کو ڈیجیٹل لین دین کے بارے میں آگاہ کریں، تیسرا- اپنے گاؤں، اپنے علاقے، اپنے شہر کو صفائی میں نمبر ون بنانے کے لیے کام کریں۔ چوتھا- مقامی، مقامی مصنوعات کو زیادہ سے زیادہ فروغ دیں، صرف ہندوستانی مصنوعات کا استعمال کریں۔ پانچویں- جتنا ممکن ہو، پہلے اپنے ملک کو دیکھیں۔اپنے ملک میں گھوم پھر کر سیاحت کو فروغ دیں۔ چھٹا- قدرتی کھیتی کے بارے میں کسانوں کو زیادہ سے زیادہ آگاہ کرتے رہیں۔ میری ساتویں گزارش ہے - اپنی زندگی میں جوار اور شری ان کو شامل کریں، اسے وسیع پیمانے پر پھیلائیں۔ میری آٹھویں درخواست ہے - چاہے وہ فٹنس ہو، یوگا ہو یا کھیل، اسے اپنی زندگی کا لازمی حصہ بنائیں۔ میری نویں گزارش ہے کہ کسی بھی قسم کے نشے اور لت سے دور رہیں، انہیں اپنی زندگی سے دور رکھیں۔

دوستو،

مجھےیقین ہے کہ آپ سب اپنی ہر ذمہ داری کو پوری لگن اور صلاحیت کے ساتھ نبھاتے رہیں گے۔ امریلی میں بننے والا کینسر ہسپتال بھی پورے معاشرے کی فلاح و بہبود کے لیے ایک مثال بنے گا۔ میں لیووا پاٹیدار سماج اور شریکھوڈل دھام ٹرسٹ کو ان کے مستقبل کے پروگراموں کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں۔ ماں کھوڈل کی برکت سے آپ اسی طرح سماجی خدمت میں مصروف رہیں۔ ایک بار پھر آپ سب کے لیے میری نیک خواہشات۔

لیکن جاتے جاتے ایک بات اور کہہ دوں، برا مت ماننا۔ آج کل بھگوان کے کرم سے لکشمی دیوی نے یہاں بھی سکونت اختیار کی ہے اور میں خوش ہوں۔ لیکن کیا بیرون ملک شادی کرنا درست ہے؟ کیا ہمارے ملک میں شادی نہیں ہو سکتی؟ ہندوستان سے کتنی دولت باہر جاتی ہے! آپ بھی ایسا ماحول بنائیں کہ شادی کییہ بیماری بیرون ملک جانے کے بعد آتی ہے، یہ ہمارے معاشرے میں نہیں آنی چاہیے۔ شادی ماں کھوڈل کے قدموں میں کیوں نہ ہو؟ اور اسی لیے میں کہتا ہوں ویڈ اِن انڈیا۔ شادیہندوستان میں کرو۔ میڈ ان انڈیا، اسی طرح  ویڈ اِن انڈیا ۔ آپ خاندان کے فرد ہیں تو آپ کو بات کرنے کا  دل کر جاتا ہے۔ لمبی بات نہیں کرتا ہوں ۔ آپ سب کے لیے نیک خواہشات۔ شکریہ جئے ماں کھوڈل!

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
A Leader for a New Era: Modi and the Resurgence of the Indian Dream

Media Coverage

A Leader for a New Era: Modi and the Resurgence of the Indian Dream
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
Srinagar Viksit Bharat Ambassadors Unite for 'Viksit Bharat, Viksit Kashmir'
April 20, 2024

Srinagar hosted a momentous gathering under the banner of the Viksit Bharat Ambassador or VBA 2024. Held at the prestigious Radisson Collection, the event served as a unique platform, bringing together diverse voices and perspectives to foster the nation's collective advancement towards development.

Graced by the esteemed presence of Union Minister Shri Hardeep Singh Puri as the Chief Guest, the event saw the attendance of over 400 distinguished members of society, representing influencers, industry stalwarts, environmentalists, and young minds, including first-time voters. Presidents of Chambers of Commerce, Federation of Kashmir Industrial Corporation, House Boat Owners Association, and members of the writers' association were also present.

The VBA 2024 meetup began with an interesting panel discussion on Viksit Kashmir, which focused on the symbiotic relationship between industry growth and sustainable development. This was followed by an interactive session by Minister Puri, who engaged with the attendees through an engaging presentation. Another event highlight was the live doodle capture by a local artist of the discussions.

Union Minister Hardeep Singh Puri discussed how India has changed in the last decade. He said India is on track to become one of the world's top three economies, surpassing Germany and Japan soon.

 

"The country is set to surpass Germany and Japan and will become the world's third-largest economy by 2027-28," he said.

 

According to official estimates, India's economy is projected to reach a remarkable $40 trillion by 2040. Presently, the economy stands at approximately $3.5 trillion.

He also stressed that India's progress is incomplete without a developed Kashmir.

 

"Bharat cannot be Viksit without a Viksit Kashmir," he said.

Hardeep Puri reflected on India's economic journey, noting that in the 1700s, India contributed a significant 25% to the global GDP. However, as experts documented, this figure gradually dwindled to a mere 2% by 1947.

 

He highlighted how India, once renowned as the 'sone ki chidiya' (golden bird), lost its economic strength during British colonial rule and continued to struggle even after gaining independence, remaining categorized under the 'Fragile Five' until 2014.

 

Puri emphasized that the true shift in India's economic trajectory commenced under the Modi government. Over the past decade, the nation has ascended from among the top 11 economies to ranking among the top 5 globally.

The Union Minister also encouraged everyone to participate in the Viksit Bharat 2047 mission, emphasizing that achieving this dream requires the active engagement and coordination of all "ambassadors" of change.

He highlighted India's rapid progress in metro network development, stating that the operational metro network spans approximately 950 kilometres. He expressed confidence that within the next 2-3 years, India's metro network will expand to become the second-largest globally, surpassing that of the United States.

 

Regarding Jammu and Kashmir, he mentioned that through the Smart project, over 68 projects totalling Rs 6,800 crores were conceptualized, with Rs 3,200 crores worth of projects already completed.

 

He further stated that Jammu and Kashmir possesses more potential than Switzerland but has faced setbacks due to man-made crises. He emphasized the Modi government's dedication to the comprehensive development of the region.

The minister highlighted a significant government policy shift from women-centred to women-led development. Drawing from his extensive experience as a diplomat spanning 39 years, he shared that when a country transitions to women-led development, there is typically a substantial GDP increase of 20-30%. 

He mentioned that the government is actively pursuing this objective, citing examples such as the Awas Yojana, where houses are registered in the names of women household members, and the implementation of 33% reservation for women in elected bodies as part of this broader mission. 

He also provided insight into the transformative impact of the Modi government's welfare policies on people's lives. He highlighted the Ujjwala Yojana, noting that 32 crore individuals have received LPG cylinders, a significant increase from the 14 crore connections in 2014. Additionally, he mentioned the expansion of the gas pipeline network, which has grown from 14,000 km to over 20,000 km over the past ten years.

The Vision of Viksit Bharat: 140 crore dreams, 1 purpose 

The Viksit Bharat Ambassador movement aims to encourage citizens to take responsibility for contributing to India's development. VBA meet-ups and events are being organized in various parts of the country to achieve this goal. These events provide a platform for participants to engage in constructive discussions, exchange ideas, and explore practical strategies for contributing to the movement.

Join the movement on the NaMo App: https://www.narendramodi.in/ViksitBharatAmbassador

The NaMo App: Bridging the Gap

Prime Minister Narendra Modi's app, the NaMo App, is a digital bridge that empowers citizens to participate in the Viksit Bharat Ambassador movement. The NaMo App serves as a one-stop platform for individuals to:

Join the cause: Sign up and become a Viksit Bharat Ambassador and make 10 other people

Amplify Development Stories: Access updates, news, and resources related to the movement.

Create/Join Events: Create and discover local events, meet-ups, and volunteer opportunities.

Connect/Network: Find and interact with like-minded individuals who share the vision of a developed India.

The 'VBA Event' section in the 'Onground Tasks' tab of the 'Volunteer Module' of the NaMo App allows users to stay updated with the ongoing VBA events.