’’ہندوستان لچک اور ترقی کی علامت بن کر ابھرا ہے‘‘
’’ہندوستان کی ترقی کی وجہ یہ ہے کہ حکومت نے پالیسی، اچھی حکمرانی اور شہریوں کی فلاح و بہبود کو اولین ترجیح دی ہے‘‘
’’ہندوستان دنیا کے لیے امید کی کرن ہے، جو اس کی مضبوط ہوتی ہوئی معیشت اور گزشتہ دہائی کی کایا پلٹ کردینے والی اصلاحات کا نتیجہ ہے‘‘
’’گفٹ سٹی کا تصور ایک متحرک ایکو سسٹم کے طور پر کیا گیا ہے جو بین الاقوامی مالیات کے منظرنامے کی نئے سرے سے تشریح کرے گا‘‘
’’ہم گفٹ سٹی کو نئے دور کے عالمی مالیاتی اور ٹیکنالوجی سے متعلق خدمات کا ایک عالمی نرو سینٹر بنانا چاہتے ہیں‘‘
کوپ 28 میں ہندوستان کی جانب سے ’گلوبل گرین کریڈٹ انیشیٹیو‘ کی پیشکش کی گئی جو کہ کرۂ ارض کے موافق پہل ہے
’’ہندوستان آج دنیا میں سب سے تیزی سے ترقی کرنے والی فن ٹیک مارکیٹوں میں سے ایک ہے‘‘
’’گفٹ آئی ایف ایس سی کا ایسی جدید ترین ڈیجیٹل انفرا اسٹرکچر ہے جو کاروباروں کی کارکردگی میں اضافہ میں مدد کرنے والا ایک پلیٹ فارم فراہم کراتا ہے‘‘
’’ہندوستان ایک ایسا ملک ہے جس میں جمہوری اقدار اور تجارت اور کامرس کی تاریخی روایات کی جڑیں بہت گہری ہیں‘‘

نمسکار، گجرات کے ہردلعزیز وزیر اعلىٰ، جناب بھوپیندر بھائی، ریاستی حکومت کے وزراء، آئی ایف ایس سی اے کے چیئرمین کے راجمن جی، دنیا کے معزز مالیاتی ادارے اور مختلف اداروں کے قائدین، خواتین و حضرات،

انفینٹی فورم کے دوسرے ایڈیشن میں آپ سب کا خیر مقدم ہے۔ مجھے یاد ہے جب ہم دسمبر 2021 میں پہلے انفینٹی فورم کے دوران ملے تھے، وبائی مرض کی وجہ سے دنیا میں کتنی غیر یقینی صورتحال تھی۔ ہر کوئی عالمی اقتصادی ترقی سے پریشان تھا اور یہ تشویش آج بھی ختم نہیں ہوئی۔ آپ سب جغرافیائی سیاسی کشیدگی، بلند افراط زر اور قرضوں کی سطح کی مشکلات کو بخوبی جانتے ہیں۔ ایسے وقت میں ہندوستان استحکام اور ترقی کی ایک روشن مثال کے طور پر ابھرا ہے۔ ایسے اہم دور میں گفٹ سٹی میں 21ویں صدی کی معاشی پالیسیوں پر غور و خوض گجرات کو فخر سے بلند کرے گا۔ ویسے آج میں گجرات کے لوگوں کو ایک اور چیز کی مبارکباد دوں گا۔ حال ہی میں گجرات کے روایتی رقص گربا کو یونیسکو نے دائمی ثقافتی ورثے میں شامل کیا ہے۔ یہ اپنے آپ میں ایک بڑی کامیابی ہے۔ گجرات کی کامیابی ملک کی کامیابی ہے۔

دوستو،

آج ہندوستان کی ترقی کی کہانی نے دنیا کو دکھادیا ہے کہ جب پالیسی کو اولین ترجیح دی جاتی ہے، جب اچھی حکمرانی کے لیے تمام کوششیں کی جاتی ہیں، جب ملک اور اس کے عوام کا مفاد اقتصادی پالیسیوں کی بنیاد ہوتی ہے۔ ہندوستانی معیشت نے رواں مالی سال کے پہلے 6 مہینے میں 7.7 فیصد کی شرح سے ترقی کی ہے۔ اس سال ستمبر میں آئی ایم ایف نے کہا تھا کہ 2023 میں عالمی ترقی میں سولہ فیصد ہندوستان کا حصہ ہوگا۔ اس سے قبل جولائی 2023 میں ورلڈ بینک نے کہا تھا کہ عالمی چیلنجوں کے درمیان ہندوستان اور اس کی معیشت سے بہت زیادہ توقعات وابستہ ہیں۔ اس سال مارچ میں آسٹریلیا کے وزیر اعظم نے کہا تھا کہ ہندوستان عالمی خطہ جنوب کو قیادت فراہم کرنے کی مضبوط پوزیشن میں ہے۔ چند ماہ قبل عالمی اقتصادی فورم نے بھی کہا تھا کہ ہندوستان میں سرخ فیتہ شاہی کم ہوئی ہے اور سرمایہ کاری کا بہتر ماحول پیدا ہوا ہے۔

آج پوری دنیا کو ہندوستان سے امیدیں وابستہ ہیں۔ اور ایسے ایسا ہی نہیں ہوا۔ یہ ہندوستان کی مضبوط ہوتی ہوئی معیشت اور پچھلے 10 سال میں کی گئی ترقی پسند اصلاحات کا عکاس ہے۔ ان اصلاحات سے ملک کی اقتصادی بنیادیں مضبوط ہوئی ہیں۔ وبائی مرض کے دوران جب زیادہ تر ممالک صرف مالیاتی اور مالیاتی ریلیف پر توجہ مرکوز کر رہے تھے، ہم نے طویل مدتی ترقی اور اقتصادی صلاحیت کی توسیع پر توجہ مرکوز کی۔

 

ساتھیو،

ہماری اصلاحات کا ایک اہم ہدف عالمی معیشت کے ساتھ انضمام کو بڑھانا ہے۔ ہم نے بہت سے شعبوں میں ایف ڈی آئی پالیسی کو لچکدار بنایا، ہم نے قوانین کی تعمیل کا بوجھ کم کیا، ہم نے 3 ایف ٹی اے پر دستخط کیے اور آج بھی ہم بہت سے اہم اقدامات کر رہے ہیں۔ یہ تحفہ  آئی ایف ایس سی اے ہندوستانی مالیاتی منڈیوں کو عالمی مالیاتی منڈیوں کے ساتھ مربوط کرنے کے لیے ہماری بڑی اصلاحات کا حصہ ہے۔ گفٹ سٹی کا تصور ایک متحرک ایکو سسٹم کے طور پر کیا گیا ہے جو بین الاقوامی مالیات کے منظر نامے کو نئے سرے سے متعین کرے گا۔ یہ جدت طرازی، کارکردگی اور عالمی تعاون کے نئے معیارات قائم کرے گا۔ 2020 میں ایک متحدہ ریگولیٹر کے طور پر انٹرنیشنل فنانشل سروسز سینٹرز اتھارٹی کا قیام اس سفر میں ایک اہم سنگ میل ہے۔ معاشی بحران کے اس مشکل دور میں بھی آئی ایف ایس سی اے نے 27 ضابطے اور 10 سے زیادہ فریم ورک بنائے ہیں۔ اس سے سرمایہ کاری کی نئی راہیں بھی کھلی ہیں۔

آپ کو یہ جان کر خوشی ہوگی کہ انفینٹی فورم کے پہلے ایڈیشن میں آپ کی دی گئی تجاویز کی بنیاد پر بہت سے اقدامات شروع کیے گئے ہیں۔ مثال کے طور پر اپریل 2022 میں آئی ایف ایس سی اے نے فنڈ مینجمنٹ کی سرگرمیوں کو کنٹرول کرنے کے لیے ایک جامع فریم ورک کو نوٹیفائی کیا۔ آج آئی ایف ایس سی اے کے ساتھ 80 فنڈ مینجمنٹ ادارے رجسٹرڈ ہیں، جن کے پاس 24 بلین امریکی ڈالر سے زیادہ مالیت کے فنڈز ہیں۔ ان دو سرکردہ بین الاقوامی یونیورسٹیوں کو 2024 سےجی آئی ایف ٹی آئی ایف ایس سی  میں اپنے کورسز شروع کرنے کی منظوری مل گئی ہے۔ ہوائی جہاز لیز پر دینے کا فریم ورک آئی ایف ایس سی اے نے مئی 2022 میں جاری کیا تھا، آج 26 اکائیوں نے آئی ایف ایس سی اے کے ساتھ کام شروع کردیا ہے۔

ساتھیو،

پہلے ایڈیشن کی شاندار کامیابی کے بعد آپ کی تجاویز پر اتنا کام ہو چکا ہے، اب سوال یہ ہے کہ آگے کیا ہو گا؟ کیا جی آئی ایف ٹی آئی ایف ایس سی اے کا دائرہ وہی رہے گا؟ تو میرا جواب ہوگا، نہیں۔ حکومت جی آئی ایف ٹی آئی ایف ایس سی اے کو روایتی فنانس اور وینچرز سے آگے لے جانا چاہتی ہے۔ ہم گفٹ سٹی کو نئے دور کی عالمی مالیاتی اور ٹیکنالوجی خدمات کا عالمی اعصابی مرکز بنانا چاہتے ہیں۔ مجھے یقین ہے کہ گفٹ سٹی کی مصنوعات اور خدمات دنیا کو درپیش چیلنجز کو حل کرنے میں مدد کریں گی۔ اور آپ تمام اسٹیک ہولڈرز کا اس میں بڑا کردار ہے۔

ساتھیو،

آج دنیا کو درپیش سب سے بڑے چیلنجوں میں سے ایک موسمیاتی تبدیلی ہے۔ ہندوستان، دنیا کی سب سے بڑی معیشتوں میں سے ایک ہونے کے ناطے ان خدشات کو کم نہیں سمجھتا، ہم اس سے باخبر ہیں۔ یہاں تک کہ کچھ دن پہلے سی او پی سمٹ میں بھی ہندوستان نے دنیا سے نئے وعدے کئے ہیں۔ ہندوستان اور دنیا کے عالمی اہداف کو حاصل کرنے کے لیے ہمیں کفایت شعاری مالیات کی مناسب دستیابی کو یقینی بنانا ہوگا۔

جی- 20 کی صدارت کے دوران ہماری ترجیحات میں سے ایک یہ تھی کہ ہر کوئی عالمی ترقی اور استحکام کو یقینی بنانے کے لیے پائیدار مالیات کی ضرورت کو سمجھے۔ یہ سرسبز، لچکدار اور جامع معاشروں اور معیشتوں کی طرف منتقلی کو فروغ دے گا۔ کچھ تخمینے کے مطابق، بھارت کو 2070 تک صفر کاربن اخراج کا ہدف حاصل کرنے کے لیے کم از کم 10 ٹریلین امریکی ڈالر کی ضرورت ہوگی۔ اس سرمایہ کاری کی ایک خاص رقم عالمی ذرائع سے بھی حاصل کرنی ہوگی۔ لہذا، ہم آئی ایف ایس سی کو پائیدار مالیات کا عالمی مرکز بھی بنانا چاہتے ہیں۔

 

جی آئی ایف ٹی آئی ایف ایس سی گرین سرمائے کے بہاؤ کے لیے ایک موثر چینل ہے جو ہندوستان کو کم کاربن والی معیشت بنانے کے لیے درکار ہے۔ گرین بانڈز، پائیدار بانڈز، پائیداری سے منسلک بانڈز جیسی مالیاتی مصنوعات کی ترقی سے پوری دنیا کا راستہ آسان ہو جائے گا۔ آپ جانتے ہیں کہ ہندوستان نے کوپ 28 میں کرہ ارض کے موافق ایک پہل کے طور پر ’گلوبل گرین کریڈٹ انیشیٹو‘ کا اعلان کیا ہے۔ میں یہاں موجود تمام تجربہ کار لوگوں سے چاہوں گا کہ وہ گرین کریڈٹ کے لیے مارکیٹ میکانزم تیار کرنے پر اپنے خیالات کا تبادلہ کریں۔

ساتھیو،

ہندوستان آج دنیا میں تیزی سے ترقی کرنے والی مالیاتی ٹیکنالوجی مارکیٹوں میں سے ایک ہے۔ مالیاتی ٹیکنالوجی میں ہندوستان کی طاقت جی آئی ایف ٹی آئی ایف ایس سی کے وژن سے جڑی ہوئی ہے، جس کی وجہ سے یہ جگہ مالیاتی ٹیکنالوجی کا ابھرتا ہوا مرکز بن رہی ہے۔ 2022 میں آئی ایف ایس سی اے نے مالیاتی ٹیکنالوجی کے لیے ایک ترقی پسند انضباطی فریم ورک جاری کیا۔ جدت طرازی اور صنعت کاری کو فروغ دینے کے لیے آئی ایف ایس سی اے کے پاس ایک مالیاتی ٹیکنالوجی اقدام اسکیم بھی ہے، جو ہندوستانی اور غیر ملکی مالیاتی ٹیکنالوجی کو گرانٹ فراہم کرتی ہے۔ گفٹ سٹی عالمی مالیاتی ٹیکنالوجی دنیا کے لیے ایک گیٹ وے اور فن ٹیک لیبارٹری بننے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ میری آپ سب سے گزارش ہے کہ اس سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھائیں۔

ساتھیو،

اپنے قیام کے چند سالوں کے اندر، جس طرح سے جی آئی ایف ٹی –آئی ایف ایس سی عالمی سرمائے کے بہاؤ کا ایک نمایاں گیٹ وے بن گیا ہے وہ اپنے آپ میں ایک مطالعہ کا موضوع ہے۔ گفٹ سٹی نے ایک منفرد ’ٹرائی سٹی‘ تصور تیار کیا ہے۔ تاریخی شہر احمد آباد اور دارالحکومت گاندھی نگر کے درمیان واقع گفٹ سٹی کا رابطہ غیر معمولی ہے۔ جی آئی ایف ٹی آئی ایف ایس سی کا جدید ترین ڈیجیٹل انفراسٹرکچر ایک ایسا پلیٹ فارم مہیا کرتا ہے جو کاروبار کی رفتار اور کارکردگی کو بڑھاتا ہے۔ آپ اس کے عالمی رابطے کے بارے میں اچھی طرح جانتے ہیں۔ جی آئی ایف ٹی   آئی ایف ایس سی ایک ایسے انتظام کے طور پر ابھرا ہے جو مالیاتی اور ٹیکنالوجی کی دنیا کے سب سے بڑے ذہنوں کو اپنی طرف متوجہ کرتا ہے۔

آج آئی ایف ایس سی میں 580 آپریشنل ادارے ہیں۔ 3 ایکسچینجز، بشمول بین الاقوامی بلین ایکسچینج، 25 بینک، بشمول 9 غیر ملکی بینک، 29 بیمہ ادارے، 2 غیر ملکی یونیورسٹیاں، 50 سے زیادہ پیشہ ورانہ خدمات فراہم کرنے والے بشمول کنسلٹنگ فرم، لاء فرم، CA فرم۔ مجھے یقین ہے کہ اگلے چند سالوں میں گفٹ سٹی دنیا کے بہترین بین الاقوامی مالیاتی مراکز میں سے ایک ہو گا۔

 

ساتھیو،

ہندوستان ایک ایسا ملک ہے جس میں گہری جمہوری اقدار ہیں اور تجارت و کاروبار کی ایک تاریخی روایت ہے۔ ہندوستان میں ہر سرمایہ کار یا کمپنی کے لیے مواقع کی سب سے زیادہ متنوع رینج موجود ہے۔ جی آئی ایف ٹی کے حوالے سے ہمارا وژن ہندوستان کی ترقی کی کہانی سے جڑا ہوا ہے۔ میں آپ کے سامنے چند مثالیں پیش کرتا ہوں۔ آج 4 لاکھ ہوائی مسافر روزانہ سفر کر رہے ہیں۔ 2014 میں ہمارے ملک میں مسافر طیاروں کی تعداد 400 تھی جو آج بڑھ کر 700 سے زیادہ ہو گئی ہے۔ پچھلے 9 سالوں میں ہندوستان میں طیاروں کی تعداد دوگنی ہوگئی ہے۔ ہماری ایئر لائنز آنے والے سالوں میں تقریباً 1000 طیارے خریدنے جا رہی ہیں۔

ان حالات میں گفٹ سٹی کی جانب سے طیارہ کرایہ پر لینے والوں کو فراہم کی جانے والی مختلف سہولیات بہت قابل ذکر ہیں۔ بھارت میں آبی گزرگاہوں سے نہ صرف سامان کی نقل و حرکت بڑھ رہی ہے بلکہ جہازوں کی تعداد بھی بڑھ رہی ہے۔ آئی ایف ایس سی اے کا جہاز لیزنگ کا فریم ورک اس رجحان سے بھرپور فائدہ اٹھانے کا موقع فراہم کر رہا ہے۔ اسی طرح، ہندوستان کا مضبوط آئی ٹی ٹیلنٹ، ڈیٹا پروٹیکشن قوانین، اور جی آئی ایف ٹی کا ڈیٹا ایمبیسی پہل تمام ممالک اور کاروباروں کو ڈیجیٹل کنیکٹیویٹی تک محفوظ رسائی فراہم کرتی ہے۔ ہندوستان کے نوجوان ہنر کی بدولت، ہم تمام بڑی کمپنیوں کے عالمی قابلیت کے مراکز کے لیے بنیاد بن گئے ہیں۔

ساتھیو،

اگلے چند سالوں میں ہندوستان دنیا کی تیسری سب سے بڑی معیشت بن جائے گا اور 2047 تک ہندوستان ایک ترقی یافتہ ملک بن جائے گا۔ سرمائے کی نئی شکلیں، ڈیجیٹل ٹیکنالوجیز اور نئے دور کی مالی خدمات اس سفر میں اہم کردار ادا کریں گی۔ اپنے موثر قواعد و ضوابط، پلگ اینڈ پلے انفراسٹرکچر، بڑی ہندوستانی اندرونی معیشت تک رسائی، آپریشنز کی فائدہ مند لاگت، اور ہنر سے فائدہ اٹھانے کے ساتھ، گفٹ سٹی ایسے مواقع پیدا کر رہا ہے جن کا کوئی مقابلہ نہیں کر سکتا۔

آئیے ہم جی آئی ایف ٹی آئی ایف ایس سی کے ساتھ ملکر عالمی خوابوں کو پورا کرنے کی سمت آگے بڑھیں۔ درخشاں گجرات گلوبل انوسٹرس سمٹ بھی بہت جلد منعقد ہونے جا رہی ہے۔ میں اس کے لیے تمام سرمایہ کاروں کو بھی مدعو کرتا ہوں اور آپ کی کوششوں کے لیے بہت سی نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں۔ آئیے ہم ملکر دنیا کے سنگین مسائل کا حل تلاش کرنے کے لیے اختراعی خیالات کو تلاش کریں اور ان کی پیروی کریں۔

بہت بہت شکریہ۔

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Media Coverage

"India of 21st century does not think small...": PM Modi
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM offers prayers at Madurai Meenakshi Amman Temple
February 27, 2024

The Prime Minister, Shri Narendra Modi today offers prayers at Madurai Meenakshi Amman Temple.

PM Modi posted on X :

"Feeling blessed to pray at the Madurai Meenakshi Amman Temple."