PM to visit Vikram Sarabhai Space centre (VSSC), Thiruvananthapuram, and inaugurate three important space infrastructure projects worth about Rs 1800 crore
Projects include ‘PSLV Integration Facility’ at Satish Dhawan Space Centre, Sriharikota; ‘Semi-cryogenics Integrated Engine and stage Test facility’ at ISRO Propulsion Complex at Mahendragiri; and ‘Trisonic Wind Tunnel’ at VSSC
PM to also review progress of Ganganyaan
PM to inaugurate, dedicate to nation and lay the foundation stone of multiple infrastructure projects worth more than Rs 17,300 crore in Tamil Nadu
In a step to establish a transshipment hub for the east coast of the country, PM to lay the foundation stone of Outer Harbor Container Terminal at V.O.Chidambaranar Port
PM to launch India's first indigenous green hydrogen fuel cell inland waterway vessel
PM to address thousands of MSME entrepreneurs working in Automotive sector in Madurai
PM to inaugurate and dedicate to nation multiple infrastructure projects related to rail, road and irrigation worth more than Rs 4900 crore in Maharashtra
PM to release 16th instalment amount of about Rs 21,000 crore under PM-KISAN; and 2nd and 3rd instalments of about Rs 3800 crore under ‘Namo Shetkari MahaSanman Nidhi’
PM to disburse Rs 825 crore of Revolving Fund to 5.5 lakh women SHGs across Maharashtra
PM to initiate the distribution of one crore Ayushman cards across Maharashtra
PM to launch the Modi Awaas Gharkul Yojana

وزیر اعظم جناب نریندر مودی 27-28 فروری 2024 کو کیرالہ، تمل ناڈو اور مہاراشٹر کا دورہ کریں گے۔

27 فروری کو، صبح تقریباً 10:45 بجے، وزیر اعظم کیرالہ کے ترواننت پورم میں وکرم سارا بھائی خلائی مرکز (وی ایس ایس سی) کا دورہ کریں گے۔ شام تقریباً 5:15 بجے، وزیر اعظم مدورائی، تمل ناڈو میں ’مستقبل کی تخلیق – آٹو موٹیو ایم ایس ایم ای انٹرپرینیورز کے لیے ڈیجیٹل موبلٹی‘ پروگرام میں شرکت کریں گے۔

28 فروری کو، صبح تقریباً 9:45 بجے، وزیر اعظم تمل ناڈو کے تھوتھکوڈی میں تقریباً 17,300 کروڑ روپے کے متعدد ترقیاتی پروجیکٹوں کا افتتاح اور سنگ بنیاد رکھیں گے۔ شام تقریباً 4:30 بجے، وزیر اعظم مہاراشٹر کے یاوتمال میں ایک عوامی پروگرام میں شرکت کریں گے اور یاوتمال، مہاراشٹرا میں 4900 کروڑ روپے سے زیادہ کے متعدد ترقیاتی پروجیکٹوں کا افتتاح کریں گے اور قوم کے نام وقف کریں گے۔ وہ پروگرام کے دوران پی ایم کسان اور دیگر اسکیموں کے تحت فوائد بھی جاری کریں گے۔

وزیر اعظم کیرالہ میں

ملک کے خلائی شعبے میں اصلاحات کے وزیر اعظم کے وژن کو اس کی مکمل صلاحیت کا ادراک کرنے کے لیے، اور اس شعبے میں تکنیکی اور آر اینڈ ڈی کی صلاحیت کو بڑھانے کے لیے ان کے عزم کو تقویت ملے گی کیونکہ وکرم سارابھائی خلائی مرکز، ترواننت پورم کے ان کے دورے کے دوران تین اہم خلائی بنیادی ڈھانچے کے پروجیکٹوں کا افتتاح کیا جائے گا۔  ان پروجیکٹوں  میں ستیش دھون خلائی مرکز، سری ہری کوٹا میں پی ایس ایل وی انٹیگریشن سہولت (پی آئی ایف)،مہندرگیری میں اسرو پروپلشن کمپلیکس میں نیا 'سیمی کرایوجینکس انٹیگریٹڈ انجن اور اسٹیج ٹیسٹ کی سہولت’ اور وی ایس ایس سی، ترواننت پورم میں ’ٹرائیسونک ونڈ ٹنل’ شامل ہیں۔ خلائی شعبے کے لیے عالمی معیار کی تکنیکی سہولیات فراہم کرنے والے یہ تین منصوبے تقریباً 1800 کروڑروپے کی مجموعی لاگت سے تیار کیے گئے ہیں۔

ستیش دھون خلائی مرکز، سری ہری کوٹا میں پی ایس ایل وی انٹیگریشن سہولت (پی آئی ایف) پی ایس ایل وی لانچوں کی فریکوئنسی کو 6 سے 15 تک بڑھانے میں مدد کرے گی۔ یہ جدید ترین سہولت ایس ایس ایل وی اور نجی خلائی کمپنیوں کے ڈیزائن کردہ دیگر چھوٹی لانچ گاڑیوں کے لانچوں کی ضروریات کو  بھی پورا کر سکتی ہے۔

آئی پی آر سی مہندرگیری میں نیا 'سیمی کرایوجینکس انٹیگریٹڈ انجن اور اسٹیج ٹیسٹ کی سہولت' سیمی کرایوجینک انجنوں اور مراحل کی ترقی کےقابل بنائے گی جس سے موجودہ لانچ گاڑیوں کی پے لوڈ کی صلاحیت میں اضافہ ہوگا۔ یہ سہولت مائع آکسیجن اور کیروسین کی سپلائی کے نظام سے لیس ہے تاکہ انجنوں کو 200 ٹن تک کے تھرسٹ کی جانچ کر سکے۔

ہوا کی ٹنل فضائی نظام میں پرواز کے دوران راکٹوں اور طیاروں کی خصوصیات کے لیے ایروڈائنامک ٹیسٹنگ کے لیے ضروری ہیں۔ وی ایس ایس سی میں جس"ٹرائیسونک ونڈ ٹنل" کا افتتاح کیا جا رہا ہے  وہ ایک پیچیدہ تکنیکی نظام ہے جو ہماری مستقبل کی ٹیکنالوجی کی ترقی کی ضروریات کو پورا کرے گا۔

اپنے دورے کے دوران، وزیر اعظم گگن یان مشن کی پیشرفت کا بھی جائزہ لیں گے اور نامزد خلابازوں کو ’خلا بازوں کے پنکھ‘ عطا کریں گے۔ گگن یان مشن ہندوستان کا پہلا انسانی خلائی پرواز کا پروگرام ہے جس کے لیے اسرو کے مختلف مراکز پر وسیع پیمانے پر تیاریاں جاری ہیں۔

وزیر اعظم تمل ناڈو میں

مدورائی میں، وزیر اعظم پروگرام ’مستقبل کی تخلیق – آٹو موٹیو ایم ایس ایم ای انٹرپرینیورز کے لیے ڈیجیٹل موبلٹی‘ میں شرکت کریں گے، اور آٹو موٹیو سیکٹر میں کام کرنے والے ہزاروں مائیکرو،ا سمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز (ایم ایس ایم ایز) کاروباریوں سے خطاب کریں گے۔ وزیر اعظم ہندوستانی آٹو موٹیو صنعت میں ایم ایس ایم ایز کی حمایت اور ترقی کے لیے تیار کیے گئے دو بڑے اقدامات کا بھی آغاز کریں گے۔ ان اقدامات میں ٹی وی ایس اوپن موبیلیٹی پلیٹ فارم اور ٹی وی ایس موبیلیٹی -سی آئی آئی سینٹر آف ایکسی لینس شامل ہیں۔ یہ اقدامات ملک میں ایم ایس ایم ایز کی ترقی میں معاونت کرنے میں وزیر اعظم کے وژن کو عملی جامہ پہنانے کی طرف ایک قدم ہوں گے اور آپریشنز کو باضابطہ بنانے، عالمی ویلیو چینز کے ساتھ انضمام اور خود انحصار بننے  میں ان کے مدد گار ہوں گے۔

تھوتھکوڈی میں عوامی پروگرام میں، وزیر اعظم وی او چدمبرانار پورٹ پر آؤٹر ہاربر کنٹینر ٹرمینل کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔ یہ کنٹینر ٹرمینل وی او چدمبرانار پورٹ کو مشرقی ساحل کے لیے ٹرانس شپمنٹ کے مرکز میں تبدیل کرنے کی جانب ایک قدم ہے۔ اس پروجیکٹ کا مقصد ہندوستان کی طویل ساحلی پٹی اور سازگار جغرافیائی محل وقوع کا فائدہ اٹھانا اور عالمی تجارتی میدان میں ہندوستان کی مسابقت کو مضبوط بنانا ہے۔ بنیادی ڈھانچے کا بڑا منصوبہ خطے میں روزگار کے مواقع پیدا کرنے اور اقتصادی ترقی کا باعث بنے گا۔

وزیر اعظم وی او چدمبرانار پورٹ کو ملک کی پہلی گرین ہائیڈروجن ہب پورٹ بنانے کے مقصد سے مختلف دیگر پروجیکٹوں کا افتتاح کریں گے۔ ان منصوبوں میں کھارے پانی کو  صاف  کرنے کاپلانٹ، ہائیڈروجن کی پیداوار اور بنکرنگ کی سہولت وغیرہ شامل ہیں۔

وزیر اعظم ہریت نوکا پہل کے تحت ہندوستان کے پہلے مقامی گرین ہائیڈروجن فیول سیل اندرون ملک آبی گزرگاہ  جہاز  کابھی آغاز کریں گے۔ اس جہاز کو کوچین شپ یارڈ نے تیار کیا ہے اور صاف توانائی کے حل کو اپنانے اور ملک کے خالص صفر کے وعدوں کے ساتھ ہم آہنگ ہونے کے لیے ایک اہم قدم کی نشاندہی کرتا ہے۔ اس کے علاوہ، وزیر اعظم پروگرام کے دوران دس ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں 75 لائٹ ہاؤسز میں سیاحتی سہولیات کو بھی وقف کریں گے۔

اس پروگرام کے دوران، وزیر اعظم وانچی مانیاچھی - ناگرکوئل ریل لائن بشمول وانچی مانیاچھی - ترونیل ویلی سیکشن اور میلاپالیم - ارالوائیمولی سیکشن کو دوگنا کرنے کے لیے قومی ریل پروجیکٹوں کو وقف کریں گے۔ تقریباً 1,477 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار کیا گیا، دوگنا کرنے کا منصوبہ کنیا کماری، ناگرکوئل اور ترونیل ویلی سے چنئی کی طرف جانے والی ٹرینوں کے سفر کے وقت کو کم کرنے میں مدد کرے گا۔

وزیر اعظم تمل ناڈو میں تقریباً 4,586 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار کیے گئے چار سڑکوں کے پروجیکٹوں کو بھی وقف کریں گے۔ ان پروجیکٹوں میں این ایچ-844 کے جیتنڈاہلی-دھرمپوری سیکشن کی چار لیننگ، این ایچ-81 کے مینسوروتی-چدمبرم سیکشن کے پختہ راستوں کے ساتھ دو لیننگ، این ایچ-83 کے اوڈنچترم- مداتھوکلم سیکشن کی چار لیننگ، اور این ایچ -83 کے ناگاپٹنم-تھنجاور سیکشن کے پختہ راستوں کے ساتھ دو لیننگ شامل ہیں۔ ان منصوبوں کا مقصد رابطے کو بہتر بنانا، سفر کے وقت کو کم کرنا، سماجی و اقتصادی ترقی کو بڑھانا اور خطے میں یاتریوں کے دوروں کو آسان بنانا ہے۔

وزیر اعظم مہاراشٹر میں

ایک اور  قدم جو کسانوں کی فلاح و بہبود کے تئیں وزیر اعظم کے عزم کی ایک اور مثال کو ظاہر کرے گا، پردھان منتری کسان سمان ندھی (پی ایم- کسان) کے تحت 21,000 کروڑ روپے سے زیادہ کی 16ویں قسط کی رقم فائدہ اٹھانے والوں کو براہ راست فوائد کی منتقلی کے ذریعے یاوتمال میں عوامی پروگرام میں جاری کی جائے گی۔  اس اجراء کے ساتھ، 3 لاکھ کروڑ سے زیادہ کی رقم، 11 کروڑ سے زیادہ کسانوں کے خاندانوں کو منتقل کی گئی ہے۔

وزیر اعظم ’نمو شیتکری مہاسمان ندھی‘ کی دوسری اور تیسری قسط بھی تقسیم کریں گے، جس کی مالیت تقریباً 3800 کروڑ روپے ہے اور اس سے پورے مہاراشٹر میں تقریباً 88 لاکھ استفادہ  کرنے والےکسانوں کو فائدہ ہوگا۔ یہ اسکیم مہاراشٹر میں پردھان منتری کسان سمان ندھی یوجنا کے استفادہ کنندگان کو سالانہ 6000 روپے کی اضافی رقم فراہم کرتی ہے۔

وزیر اعظم پورے مہاراشٹر میں 5.5 لاکھ خواتین سیلف ہیلپ گروپس (ایس ایچ جیز) کو گردشی فنڈ کے 825 کروڑ روپے تقسیم کریں گے۔ یہ رقم قومی دیہی روزی روٹی مشن (این آر ایل ایم) کے تحت حکومت ہند کی طرف سے فراہم کردہ گردشی فنڈ کے لیے اضافی ہے۔ گردشی فنڈ (آر ایف) ایس ایچ جیز کو دیا جاتا ہے تاکہ ایس ایچ جیز کے اندر رقم کے قرضے کو گردشی بنیادوں پر فروغ دیا جا سکے اور گاؤں کی سطح پر خواتین کی قیادت میں چھوٹے کاروباری اداروں کو فروغ دے کر غریب گھرانوں کی سالانہ آمدنی میں اضافہ کیا جا سکے۔

وزیر اعظم پورے مہاراشٹر میں ایک کروڑ آیوشمان کارڈ کی تقسیم کا آغاز کریں گے۔ یہ فلاحی اسکیموں کے استفادہ کنندگان تک پہنچنے کا ایک اور قدم ہے تاکہ تمام سرکاری اسکیموں کے 100 فیصد تکمیل کے وزیراعظم کے وژن کو پورا کیا جاسکے۔

وزیر اعظم مہاراشٹر میں او بی سی زمرہ کے مستفیدین کے لیے مودی آواس گھرکول یوجنا کا آغاز کریں گے۔ اس اسکیم میں مالی سال 2023-24 سے مالی سال 2025-26 تک کل 10 لاکھ مکانات کی تعمیر کا تصور کیا گیا ہے۔ وزیر اعظم یوجنا کے 2.5 لاکھ استفادہ کنندگان کو 375 کروڑ روپے کی پہلی قسط منتقل کریں گے۔

وزیر اعظم مہاراشٹر کے مراٹھواڑہ اور ودربھ خطے کو فائدہ پہنچانے والے متعدد آبپاشی پروجیکٹوں کو قوم کے نام وقف کریں گے۔ یہ پروجیکٹ پردھان منتری کرشی سنچائی یوجنا (پی ایم کے ایس وائی) اور بالی راجہ جل سنجیوانی یوجنا (بی جے ایس وائی) کے تحت 2750 کروڑ روپے سے زیادہ کی مجموعی لاگت سے تیار کیے گئے ہیں۔

وزیر اعظم مہاراشٹر میں 1300 کروڑ روپے سے زائد مالیت کے متعدد ریل منصوبوں کا بھی افتتاح کریں گے۔ ان پروجیکٹوں میں وردھا-کلمب براڈ گیج لائن (وردھا-یوتمال-ناندیڑ نئی براڈ گیج لائن پروجیکٹ کا حصہ) اور نیو اشٹی-املنیر براڈ گیج لائن (احمد نگر-بیڈ-پرلی نئی براڈ گیج لائن پروجیکٹ کا حصہ) شامل ہیں۔ نئی براڈ گیج لائنیں ودربھ اور مراٹھواڑہ کے علاقوں کے رابطے کو بہتر بنائیں گی اور سماجی و اقتصادی ترقی کو فروغ دیں گی۔ وزیر اعظم پروگرام کے دوران ورچوول طور پر دو ٹرین سروس کو بھی جھنڈی دکھائیں گے۔ اس میں کالمب اور وردھا کو ملانے والی ٹرین خدمات اور املنیر اور نیو اشٹی کو جوڑنے والی ٹرین سروس شامل ہیں۔ اس نئی ٹرین سروس سے ریل رابطے کو بہتر بنانے میں مدد ملے گی اور اس علاقے کے طلباء، تاجروں اور یومیہ مسافروں کو فائدہ پہنچے گا۔

وزیر اعظم مہاراشٹر میں سڑک کے شعبے کو مضبوط بنانے کے لیے کئی پروجیکٹ قوم کو وقف کریں گے۔ ان منصوبوں میں این ایچ- 930 کے ورورا-وانی سیکشن کی چار لیننگ، ساکولی-بھنڈارا اور سلائی خورد-تیرورہ کو جوڑنے والی اہم سڑکوں کے لیے سڑکوں کی اپ گریڈیشن کے منصوبے شامل ہیں۔ یہ منصوبے رابطے کو بہتر بنائیں گے، سفر کے وقت کو کم کریں گے اور خطے میں سماجی و اقتصادی ترقی کو فروغ دیں گے۔ وزیر اعظم یاوتمال شہر میں پنڈت دین دیال اپادھیائے کے مجسمے کا بھی افتتاح کریں گے۔

 

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
BJP manifesto 2024: Super app, bullet train and other key promises that formed party's vision for Indian Railways

Media Coverage

BJP manifesto 2024: Super app, bullet train and other key promises that formed party's vision for Indian Railways
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM Modi holds a public meeting in Tirunelveli, Tamil Nadu
April 15, 2024
People are regarding BJP's ‘Sankalp Patra’ as Modi Ki Guarantee card: PM Modi in Tirunelveli
BJP is dedicated to advancing the vision of leaders like MGR in Tamil Nadu, contrasting with DMK's historical disregard for MGR's legacy: PM Modi
Today, those who want to build the future of their children are voting for BJP: PM Modi
Today, the people of Tamil Nadu, as well as surveys, echo the resounding blessings towards Modi, leaving many puzzled: PM Modi

Prime Minister Narendra Modi graced a public meeting ahead of the Lok Sabha Elections, 2024 in Tirunelveli, Tamil Nadu. The audience welcomed the PM with love and adoration. Manifesting a third term, PM Modi exemplified his vision for Tamil Nadu and the entire nation as a whole.

Initiating his interaction with the crowd, PM Modi extended his heartfelt wishes on the auspicious occasion of Puthandu. The PM also shared that the BJP has released its manifesto for the resolution of New India in the New Year. PM Modi confidently added, “People are regarding BJP's Sankalp Patra as Modi Ki Guarantee card, promising free treatment for seniors over 70, expanding Kisan Samriddhi Kendras, and establishing India as a food processing hub. Additionally, BJP pledges to develop new production clusters for fisheries and promote seaweed and pearl cultivation among fishermen, all in line with Modi's vision for a prosperous Tamil Nadu and India.”

PM Modi also shared snippets from the NDA government’s tireless efforts towards Tamil Nadu’s development and said, “Initiatives like the Vande Bharat Express from Tirunelveli to Chennai have enhanced convenience and spurred progress. Now, the BJP's manifesto promises to extend this progress with the introduction of bullet trains in the South, with surveys set to begin once the third term commences.”

“Today, the people of Tamil Nadu, as well as surveys, echo the resounding blessings towards Modi, leaving many puzzled. What they fail to grasp is Modi's decade-long commitment to serving and winning the hearts of mothers and sisters. Emerging from humble beginnings, Modi understands the struggles faced by impoverished women first-hand. Upon assuming office, he dedicated himself to improving their quality of life, a mission that has greatly benefited the mothers, sisters, and daughters of Tamil Nadu,” the PM observed with humility.

Taking his firm stand on women empowerment, PM Modi thanked the schemes introduced by the BJP government through which “women in Tamil Nadu have gained new employment and self-employment opportunities. The Mudra Scheme alone has provided around Rs 3 lakh crore to Tamil Nadu residents, greatly benefiting women. Now, BJP's manifesto promises to increase Mudra Yojana assistance from Rs 10 lakh to Rs 20 lakh, aiming to empower 3 crore women as 'Lakhpati Didis'. Furthermore, the manifesto pledges to provide training to 10 crore sisters from Self Help Groups in sectors like IT, education, and tourism, ensuring significant benefits for the women of Tamil Nadu.”

PM Modi praising the unique culture and heritage of Tamil Nadu noted that, “The one who loves Tamil language, who loves Tamil culture, today BJP has become his first choice.”

Presenting a sharp contrast between the NDA government and the opposition parties, PM Modi said, “BJP is dedicated to advancing the vision of leaders like MGR in Tamil Nadu, contrasting with DMK's historical disregard for MGR's legacy. The people remember how DMK disrespected Jayalalitha Ji in the House. Additionally, the NDA government addressed the long-standing demand of the Devendrakula Vellalar community, highlighting parallels between their aspirations and Narendra's leadership.”

“The nation now sees the truth about the anti-national alliance between DMK and Congress. Their actions, like giving away Katchatheevu Island, still haunt our fishermen. This injustice, concealed for four decades, has left the people of Tamil Nadu speechless since BJP brought it to light,” the PM shared his discontent.

PM Modi also stated with hope that, “Today, those who want to build the future of their children are voting for BJP. Today, those who want to move ahead with the resolve of a developed India are voting for BJP.”

PM Modi in his final address to Tamil Nadu for the Lok Sabha Elections, 2024, confidently predicts that “the state is poised to make history. Tamil Nadu will decisively support the NDA alliance this time, inspired by BJP's governance and development model.” Attacking the opposition the PM said, “The illusion propagated by DMK and Congress, claiming BJP's insignificance in Tamil Nadu, will be shattered. They lack substantive issues and rely on old negative agendas. Tamil Nadu's people understand that these parties cannot deliver on their promises or preserve the state's culture.”

The PM also urged the first-time voters of Tamil Nadu to break the cycle and vote for the NDA and promised that together, “we will propel Tamil Nadu towards comprehensive development.”

In his closing thoughts, the PM aspired for the people of Tamil Nadu, “On April 19th, vote for NDA to drive both national and Tamil Nadu's development. Despite DMK's attempts to hinder BJP-NDA campaigning, remember, the people of Tamil Nadu stand by you, and so do I. Let's aim for maximum votes at every booth on the 19th May.”

PM Modi expressed gratitude to every individual in the audience and requested them to kindly convey his warm regards to everyone door to door.