Share
 
Comments
ہمارا ہدف بھارت کو تیل اور گیس سیکٹر میں خود کفیل بنانا ہے:وزیراعظم
وزیراعظم نے بھارت میں تیل اور گیس کی تلاش اوراس سیکٹر کے فروغ کے لئے چیف ایگزیکٹو افسران کو مدعو کیا
صنعتی حلقے کے اہم لیڈروں نے توانائی تک رسائی، سستی توانائی اور توانائی کے تحفظ میں بہتری کے لئے حکومت کے ذریعہ اٹھائے گئے اقدامات کی تعریف کی

وزیراعظم جناب نریندر مودی نے دنیاکے تیل اور گیس سیکٹر کے چیف ایگزیکٹو افسران اور ماہرین کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے توسط سے  بات چیت کی۔

وزیراعظم نے پچھلے سات برسوں کے دوران تیل اور گیس سیکٹر میں بہتری لانے کی کوششوں کے بارے میں تفصیلی تبادلہ  خیال کیا، جس میں تیل ا ور گیس کی تلاش  اور لائسنس پالیسی ، گیس مارکیٹنگ ، کوئلے کی کانوں سے ملنے و الی قدرتی گیس ، کوئلے کو گیس میں تبدیل کرنے  اور حال میں انڈین گیس   ایکسچینج میں کی گئی ا  صلاحات شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ‘  بھارت کو تیل اور گیس سیکٹر میں خود کفیل بنانے کے لئے ’ اس طرح کی اصلاحات جاری رہیں گی۔

تیل سیکٹر کے موضوع پر اظہارخیال کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ  ‘ریوینیو’ بڑھانے کے بجائے  ‘ پروڈکشن’ بڑھانے پر توجہ دی جارہی ہے۔ انہو ں نے اس بات  کا بھی ذکر کیا ہے کہ خام تیل کو ذخیرہ کرنے کی سہولت بڑھانے کی بھی ضرورت ہے۔ انہوں نے آگے کہاکہ ملک میں  قدرتی گیس کی مانگ تیزی سے بڑھ رہی ہے ۔ انہوں نے موجودہ گیس  انفراسٹرکچر اور اس کے امکانات کا بھی ذکر کیا، جس میں پائپ لائن، شہری گیس کی تقسیم اور ایل این جی کو دوبارہ گیس میں تبدیل کرنے والے ٹرمنل جیسے موضوعات شامل تھے۔

وزیراعظم نے ذکر کیا کہ 2016 سے  ایسی میٹنگوں میں جو تجاویز پیش کی جاتی رہی ہیں وہ تیل اور گیس سیکٹر کے سامنے آنے والے چیلنجوں کو سمجھنے میں  کافی مدد گاررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت  کشادگی، امید پروری او رمواقع کی سرزمین ہے، اور یہاں نئے خیالات، امکانات اور اختراعات کی فراوانی ہے۔ انہوں نے  چیف ایگزیکٹو افسران اور ماہرین کو دعوت دی کہ وہ بھارت میں تیل اور گیس کی تلاش اوراس سیکٹر کے فروغ کے لئے بھارت کے ساتھ شراکت داری کریں۔

اس تبادلہ خیال میں  دنیا بھر سے صنعتی حلقے کی سرکردہ شخصیات نے حصہ لیا، ان میں روز نیفٹ کے صدر اور سی ای او  ڈاکٹر ای گورسیچن، سعودی ارامکو کے چیئرمین او ر سی ای او جناب امین ناصر، برٹش پٹرولیم کے سی ای او جناب برنارڈ لونی، آئی ایچ ایس  مارکیٹ کے نائب چیئرمین ڈاکٹر ڈینیل ایئرگن،سلوم برجر لمیٹڈ کے سی ای او جناب اولیویئر لی پیوش، ریلائنس انڈسٹریز لمیٹڈ کے چیئرمین اور منیجنگ ڈائریکٹر  جناب مکیش انبانی، ودانتا لمیٹڈ کے چیئرمین جناب انل اگروال اور دیگر شامل تھے۔

سبھی چیف ایگزیکٹو افسران اور ماہرین نے توانائی تک رسائی ، سستی توانائی اور توانائی کے تحفظ میں بہتری کے لئے حکومت کے ذریعہ اٹھائے گئے اقدامات کی تعریف کی ۔ انہوں نے وزیراعظم کی قیادت کی تعریف کی کہ ان کے ذریعہ  ویژنری اور حوصلہ مندانہ مقصد کے ذریعہ بھارت میں  صاف ستھری توانائی کی طرف قدم بڑھائیں۔ صنعتی حلقے کی سرکردہ شخصیات نے کہاکہ بھارت صاف ستھری توانائی ٹکنالوجی کو تیزی سے اپنا رہا ہے اور وہ عالمی توانائی سپلائی چین کو شکل دینے میں اہم رول اد ا کرسکتا ہے۔ ان سبھی نے کہا کہ توانائی میں تبدیلی کو  پائیدار اور مساوات پر مبنی بنانے کو یقینی کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے صاف ستھری ترقی اور پائیداریت کو مزید فروغ دینے کے لئے اپنی تجاویز اور خیالات بھی پیش کئے۔

 

20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Mann KI Baat Quiz
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
Terror violence in J&K down by 41% post-Article 370

Media Coverage

Terror violence in J&K down by 41% post-Article 370
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM chairs high level meeting to review preparedness to deal with Cyclone Jawad
December 02, 2021
Share
 
Comments
PM directs officials to take all necessary measures to ensure safe evacuation of people
Ensure maintenance of all essential services and their quick restoration in case of disruption: PM
All concerned Ministries and Agencies working in synergy to proactively counter the impact of the cyclone
NDRF has pre-positioned 29 teams equipped with boats, tree-cutters, telecom equipments etc; 33 teams on standby
Indian Coast Guard and Navy have deployed ships and helicopters for relief, search and rescue operations
Air Force and Engineer task force units of Army on standby for deployment
Disaster Relief teams and Medical Teams on standby along the eastern coast

Prime Minister Shri Narendra Modi chaired a high level meeting today to review the preparedness of States and Central Ministries & concerned agencies to deal with the situation arising out of the likely formation of Cyclone Jawad.

Prime Minister directed officials to take every possible measure to ensure that people are safely evacuated and to ensure maintenance of all essential services such as Power, Telecommunications, health, drinking water etc. and that they are restored immediately in the event of any disruption. He further directed them to ensure adequate storage of essential medicines & supplies and to plan for unhindered movement. He also directed for 24*7 functioning of control rooms.

India Meteorological Department (IMD) informed that low pressure region in the Bay of Bengal is expected to intensify into Cyclone Jawad and is expected to reach coast of North Andhra Pradesh – Odisha around morning of Saturday 4th December 2021, with the wind speed ranging upto 100 kmph. It is likely to cause heavy rainfall in the coastal districts of Andhra Pradesh, Odisha & W.Bengal. IMD has been issuing regular bulletins with the latest forecast to all the concerned States.

Cabinet Secretary has reviewed the situation and preparedness with Chief Secretaries of all the Coastal States and Central Ministries/ Agencies concerned.

Ministry of Home Affairs is reviewing the situation 24*7 and is in touch with the State Governments/ UTs and the Central Agencies concerned. MHA has already released the first instalment of SDRF in advance to all States. NDRF has pre-positioned 29 teams which are equipped with boats, tree-cutters, telecom equipments etc. in the States and has kept 33 teams on standby.

Indian Coast Guard and the Navy have deployed ships and helicopters for relief, search and rescue operations. Air Force and Engineer task force units of Army, with boats and rescue equipment, are on standby for deployment. Surveillance aircraft and helicopters are carrying out serial surveillance along the coast. Disaster Relief teams and Medical Teams are standby at locations along the eastern coast.

Ministry of Power has activated emergency response systems and is keeping in readiness transformers, DG sets and equipments etc. for immediate restoration of electricity. Ministry of Communications is keeping all the telecom towers and exchanges under constant watch and is fully geared to restore telecom network. Ministry of Health & Family Welfare has issued an advisory to the States/ UTs, likely to be affected, for health sector preparedness and response to COVID in affected areas.

Ministry of Port, Shipping and Waterways has taken measures to secure all shipping vessels and has deployed emergency vessels. The states have also been asked to alert the industrial establishments such as Chemical & Petrochemical units near the coast.

NDRF is assisting the State agencies in their preparedness for evacuating people from the vulnerable locations and is also continuously holding community awareness campaigns on how to deal with the cyclonic situation.

The meeting was attended by Principal Secretary to PM, Cabinet Secretary, Home Secretary, DG NDRF and DG IMD.