Share
 
Comments
‘‘کشی نگر بین الاقوامی ہوائی اڈہ دنیا بھر میں بدھ سماج کی عقیدت کو ایک خراج ہے’’
‘‘بہتر کنیکٹویٹی اور عقیدت مندو ں کے لئے سہولتوں کے قیام کے ذریعہ بھگوان بدھ سے وابستہ مقامات کی ترقی پر خصوصی توجہ مرکوز کی گئی ہے’’
‘‘ اڑان اسکیم کے تحت 900 سے زیادہ نئے روٹس کی منظوری دی گئی ہے، 350 روٹس پہلے سے کام کر رہے ہیں،ان میں سے 50 سے زیادہ نئے ہوائی اڈے یا وہ ہوائی اڈے جو پہلے خدمات انجام نہیں دے رہے تھےاب پوری طرح سے کام کر رہے ہیں ’’
‘‘اتر پردیش میں کشی نگر ہوائی اڈے سے پہلے 8 ہوائی اڈے پہلے ہی سے کام کر رہے ہیں۔ لکھنؤ، وارانسی اور کشی نگر کے بعد جیور بین الاقوامی ہوائی اڈے پر کام جاری ہے۔ اس کے علاوہ ایودھیا، علی گڑھ، اعظم گڑھ، چترکوٹ، مراد آباد اور شراوستی میں ہوائی اڈے کے پروجیکٹس جاری ہیں’’
"ایئر انڈیا سے متعلق فیصلے سے بھارت کے ہوا بازی سیکٹر کو نئی توانائی ملے گی"
"حال ہی میں شروع کی گئی ڈرون پالیسی زراعت سے لے کر صحت تک اور قدرتی آفات کے بندو بست سے لے کر دفاع تک کے مختلف شعبوں میں زندگی بدلنے والی تبدیلی لانے والی ہے"

وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے آج کشی نگر بین الاقوامی ہوائی اڈے کا افتتاح کیا۔

اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ہندوستان دنیا بھر میں بدھ مت سماج کے عقیدے کا مرکز ہے۔ انہوں نے کشی نگر بین الاقوامی ہوائی اڈے پر  شروع  کی گئی  آج کی سہولتوں کو  ان کی عقیدت اور  عبودیت  کے لئے بہترین  خراج قرار دیا  ۔  وزیر اعظم نے کہا کہ یہ خطہ بھگوان بدھ کو عرفان حاصل ہونے  سے لے کر مہاپری نروان تک کے پورے سفر کا گواہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج یہ اہم خطہ پوری  دنیا سے براہ راست جڑ رہا ہے۔

وزیر اعظم نے بہتر کنیکٹویٹی اور عقیدت مندوں کے لئے سہولتوں کے قیام  کے ذریعہ بھگوان بدھ سے وابستہ مقامات کی ترقی پر خصوصی توجہ مرکوز کرنے پر  روشنی ڈالی۔  وزیر اعظم نےکشی نگر  ہوائی اڈے پر  اترنے  والی  سری لنکا کی فلائٹ  اور وفد کو خوش آمدید کہا۔ آج مہارشی والمیکی کو ان کی جینتی پر خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ملک سب کا ساتھ اور سب کا پریاس کی مدد سے سب کا وکاس کی راہ پر گامزن ہے۔ انہوں نے کہا کہ ‘‘کشی نگر کی ترقی یوپی سرکار  اور مرکزی حکومت کی اہم ترجیحات میں سے ایک ہے۔’’

وزیر اعظم نے کہا کہ سیاحت کو اس کی  اپنی تمام شکلوں میں چاہے یہ  عقیدے کے لیے ہو یا تفریح ​​کے لیے ریل، سڑک، ہوائی راستے، آبی گزرگاہوں، ہوٹلوں، اسپتالوں، انٹرنیٹ کنیکٹوٹی، حفظان صحت، سیوریج ٹریٹمنٹ اور آلودگی سے پاک  صاف ستھرے   ماحولیات  کو یقینی بنانے والی قابل تجدید توانائی پر مشتمل  جدید بنیادی ڈھانچے  کی ضرورت ہوتی ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ  "یہ سب ایک دوسرے سے باہمی طور پر  جڑے ہوئے ہیں اور ان سب پر بیک وقت کام کرنا ضروری ہے۔ آج کی 21 ویں صدی کا ہندوستان اسی نقطہ نظر سے آگے بڑھ رہا ہے۔’’

وزیر اعظم نے اعلان کیا کہ اڑان  اسکیم کے تحت پچھلے کچھ سالوں میں 900 سے زائد نئے روٹس کی منظوری دی گئی ہے جن میں سے 350 سے زائد روٹس پر فضائی خدمات پہلے ہی شروع ہو چکی ہیں ۔ 50  سے زائد نئے ہوائی اڈے یا وہ ہوائی اڈے  جو پہلے خدمات انجام نہیں دے رہے تھے  اب کام کرنے والے  بنائے جا  چکے ہیں۔

وزیر اعظم نے اتر پردیش میں ہوا بازی کے سیکٹر سے متعلق ترقی پر روشنی ڈالی۔ ریاست میں فضائی کنیکٹویٹی  مسلسل بہتر ہو رہی ہے۔ اتر پردیش میں کشی نگر ہوائی اڈے سے پہلے  8 ہوائی اڈے پہلے ہی  سے کام کر رہے ہیں۔ لکھنؤ، وارانسی اور کشی نگر کے بعد جیور بین الاقوامی ہوائی اڈے پر کام جاری ہے۔ اس کے علاوہ ایودھیا، علی گڑھ، اعظم گڑھ، چترکوٹ، مراد آباد اور شراوستی میں ہوائی اڈے کے پروجیکٹس جاری ہیں۔

ایئر انڈیا سے متعلق  حالیہ فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ  اس اقدام سے ملک کے ہوا بازی سیکٹر  کو پیشہ ورانہ طور پر چلانے،  نیز سہولتوں  اور سیفٹی کو ترجیح دینے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے مزید کہا  کہ ‘‘اس اقدام سے  بھارت  کے ہوا بازی کے شعبے کو نئی توانائی ملے گی ۔  اسی طرح کی ایک اور  بڑی اصلاح شہری استعمال کے لیے دفاعی فضائی حدود کھولنے سے متعلق ہے۔’’ یہ اقدام مختلف فضائی راستوں پر فاصلے کو کم کرے گا۔ وزیراعظم نے یہ بھی بتایا کہ حال ہی میں شروع کی گئی ڈرون پالیسی زراعت سے لے کر صحت، قدرتی آفات  کے بندو بست   سے لے کر دفاع تک کے مختلف  شعبوں میں زندگی کو  بدل دینے  والی تبدیلی لانے والی ہے۔

 

وزیر اعظم نے کہا کہ حال ہی میں شروع کیا گیا پی ایم گتی شکتی - نیشنل ماسٹر پلان نہ صرف گورننس کو بہتر بنائے گا بلکہ نقل و حمل کے تمام طریقے جیسے سڑک، ریل، ہوائی جہاز وغیرہ  کو باہم تعاون فراہم کر نے اور ایک دوسرے کی صلاحیت میں اضافہ کرنے کو بھی  یقینی بنائے گا ۔

 

تقریر کا مکمل متن پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

'من کی بات ' کے لئے اپنے مشوروں سے نوازیں.
وزیر اعظم نے ’پریکشا پے چرچا 2022‘ میں شرکت کے لیے مدعو کیا
Explore More
اترپردیش کے وارانسی میں کاشی وشوناتھ دھام کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کی تقریر کا متن

Popular Speeches

اترپردیش کے وارانسی میں کاشی وشوناتھ دھام کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کی تقریر کا متن
Experts highlight PM Modi’s integrated approach to security in anthology of essays

Media Coverage

Experts highlight PM Modi’s integrated approach to security in anthology of essays
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM to interact with Pradhan Mantri Rashtriya Bal Puraskar awardees on 24th January
January 23, 2022
Share
 
Comments
For the first time, awardees to get digital certificates using Blockchain technology

Prime Minister Shri Narendra Modi will interact with Pradhan Mantri Rashtriya Bal Puraskar (PMRBP) awardees on 24th January, 2022 at 12 noon via video conferencing. Digital certificates will be conferred on PMRBP awardees for the year 2022 and 2021 using Blockchain Technology. This technology is being used for the first time for giving certificates of awardees.

The Government of India has been conferring the PMRBP award to children for their exceptional achievement in six categories namely Innovation, Social Service, Scholastic, Sports, Art & Culture and Bravery. This year, 29 children from across the country, under different categories of Bal Shakti Puraskar, have been selected for PMRBP-2022. The awardees also take part in the Republic day parade every year. Each awardee of PMRBP is given a medal, a cash prize of Rs. 1 Lakh and certificate. The cash prize will be transferred to the respective accounts of PMRBP 2022 winners.