ہم ’سب کا ساتھ، سب کا وِکاس‘ میں یقین رکھتے ہیں۔ ہم ووٹ بینک کی سیاست میں یقین نہیں رکھتے: وزیر اعظم مودی
کانگریس اور ٹی آر ایس دونوں ہی جماعتیں کنبہ پروری پر مبنی سیاست میں یقین رکھتی ہیں، یہ اقلیتوں کی خوشام کرتی ہیں، ووٹ بینک کی سیاست میں یقین رکھتی ہیں اور ان پارٹیوں میں داخلی طور پر جمہوریت ندارد ہے: وزیر اعظم
’ٹیلی فون بینکنگ‘ بینکنگ کے ذریعہ کانگریس نے اپنے قریبی ساتھیوں کے قرضے معاف کروائے: وزیر اعظم مودی
کانگریس کی مرکز میں ستر برسوں کی اور ٹی آر ایس کی تلنگانا میں پانچ برسوں کی بدانتظامی ہی کاشتکاروں کے ذریعہ جھیلی جا رہی مصیبتوں کی اصل وجہ ہے: وزیر اعظم
کانگریس کاشتکاروں کے مفاد کے بارے میں نہیں سوچتی، تاہم گھڑیالی آنسو بہاتی ہے۔ سوامی ناتھن کمیشن کی رپورٹ کے باوجود انہوں نے ایم ایس پی کا نفاذ نہیں کیا: وزیر اعظم مودی
تلنگانا کے وزیر اعلیٰ نے غریبوں کو مکانات فراہم کرانے کا وعدہ کیا تھا۔ کیا ہوا اُس وعدے کا؟ کہاں ہیں وہ مکانات؟ کیا ان کے وعدے جھوٹے نہیں تھے: وزیر اعظم مودی

وزیر اعظم نریندر مودی نے آج تلنگانا کے نظام آباد اور مہابابونگر میں دو بڑے عوامی جلسوں سے خطاب کیا۔ ریلیوں میں وزیر اعظم مودی نے عنقریب انتخابات کے عمل سے گزرنے والی ریاستوں کے بی جے پی حمایتیوں کا ان کی حکومت کے تئیں بھروسہ و یقین بنائے رکھنے کے لئے شکریہ ادا کیا۔

سب سے پہلے نظام آباد میں اپنے قیام کے دوران وزیر اعظم مودی نے کے چندر شیکھر راؤ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا، ’’اس ریاست کے وزیر اعلیٰ کانگریس کے نقش قدم پر چل رہے ہیں۔ ان کو لگتا ہے کہ اگر کانگریس بغیر کچھ کیے انتخابات جیت سکتی ہی تو یہ بھی جیت سکتے ہیں! لیکن انہیں یہ سمجھ لینا چاہئے کہ تلنگانا کے نوجوان زمینی حقائق سے آگاہ ہیں۔‘‘

انہوں نے ٹی آر ایس حکومت کو خالص سیاسی وجوہات کی بنا پر تغیراتی اسکیم آیوشمان بھارت یوجنا پر عمل درآمد نہ کرنے پر مزید تنقید کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا، ’’ہم نے نادار افراد کو معیاری اور واجبی لاگت پر حفظان صحت فراہم کرانے کے لئے آیوشمان بھارت یوجنا کا آغاز یا۔ تاہم اس ریاست کے وزیر اعلیٰ نے اس اسکیم کو ریاست میں نافذ کرا نے میں قطعاً کوئی دلچسپی نہیں دکھائی اور اس کو مسترد کر دیا کیونکہ اس کا آغاز مرکزی حکومت کے ذریعہ کیا گیا تھا۔‘‘ انہوں نے ملک میں پھیلی بدعنوانی کے لئے کانگریس کو نشانہ بنایا اور کہا، ’’ ’ٹیلی فون بینکنگ‘ کے ذریعہ کانگریس نے اپنے قریبی ساتھیوں کے قرض معاف کرائے۔ ‘‘

محبوب نگر میں اپنی دوسری ریلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے ایک مرتبہ پھر ریاستی حکومت پر تنقید کی اور کہا کہ تلنگانا کی حکمراں پارٹی کانگریس کی ہی طرح ہے کیونکہ دونوں ہی پارٹیوں کے لیڈر کنبہ پروری، ذات پات اور ووٹ بینک کی سیاست کی پشت پناہی کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا، ’’ٹی آر ایس حکومت نے تلنگانا کو برباد کر دیا۔ اس کی وجہ سیدھی ہے، چندر بابو نائیڈو کے تحت جب یہ ریاست آندھرا پردیش اور یو پی اے حکومت کا حصہ تھی، تب یہ لوگ چندر بابو نائیڈو کی زیر قیاد حکومت میں اُن کے شاگرد تھے۔‘‘

اس موقع پر وزیر اعظم موصوف نے تفصیل کے ساتھ بتایا کہ کس طرح کانگریس کے زیرنگرانی آندھرا پردیش کی تقسیم کے نتیجے میں آندھرا اور تلنگانا دونوں ہی ریاستوں کو مصیبتوں اور پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا۔ انہوں نے اس تقسیم کا موازنہ سابق وزیر اعظم آنجہانی اٹل بہاری واجپئی کی زیر قیادت حکومت کی نگرانی میں ہوئے مدھیہ پردیش اور بہار کی تقسیم سے کیا اور کہا، ’’جب اٹل جی نے تین ریاستوں مدھیہ پردیش، اترپردیش اور بہار کو تقسیم کیں تو اس میں سے کل چھ ریاستیں وجود میں آئیں اور دیکھئے آج یہ ریاستیں کیسے ترقی کر رہی ہیں۔‘‘

ریلی کے اختتام کے موقع پر وزیر اعظم مودی نے اپنے حمایتیوں سے تلنگانا میں عنقریب ہونے والے انتخابات میں بڑی تعداد میں بی جے پی کو ووٹ دینے کی اپیل اور کہا کہ ریاست میں ویسی ہی ترقی کی یقین دہانی کرائی جیسی بی جے پی کی زیر قیادت دیگر ریاستوں میں رونما ہوئی ہے۔

 

 

 

 

نجم آباد میں پی ایم کی تقریر کو پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
Why microeconomics and implementation matters: Policy lessons from PM Modi’s approach on development

Media Coverage

Why microeconomics and implementation matters: Policy lessons from PM Modi’s approach on development
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
India’s Top Gamers Meet ‘Cool’ PM Modi
April 13, 2024
PM Modi showcases his gaming prowess, impressing India's top gamers with his quick grasp of mobile, PC, and VR games!
PM Modi delves into gaming, sparking dialogue on innovation and digital empowerment!
Young gamers applaud PM Modi's agility and adaptability, give him ‘NaMo OP' badge

Prime Minister Narendra Modi engaged in a unique interaction with India's top gamers, immersing himself in the world of PC and VR gaming. During the session, Prime Minister Modi actively participated in gaming sessions, showcasing his enthusiasm for the rapidly evolving gaming industry.

The event brought together people from the gaming community including @gcttirth (Tirth Mehta), @PAYALGAMING (Payal Dhare), @8bitthug (Animesh Agarwal), @GamerFleet (Anshu Bisht), @MortaLyt (Naman Mathur), @Mythpat (Mithilesh Patankar), and @SkRossi (Ganesh Gangadhar).

Prime Minister Modi delved into mobile, PC, and VR gaming experiences, leaving the young gamers astounded by his quick grasp of game controls and objectives. Impressed by PM Modi’s gaming skills, the gaming community also gave him the ‘NaMo OP’ badge.

What made the entire interaction even more interesting was PM Modi's eagerness to learn trending gaming lingos like ‘grind’, ‘AFK’ and more. He even shared one of his lingos of ‘P2G2’ which means ‘Pro People Good Governance.’

The event served as a platform for a vibrant exchange of ideas, with discussions ranging from the youngsters’ unique personal journeys that led them to fame in this growing field of gaming, to the latest developments in the gaming sector.

Among the key topics explored was the distinction between gambling and gaming, highlighting the importance of responsible gaming practices while fostering a supportive environment for the gaming community. Additionally, the participants delved into the crucial issue of enhancing women's participation in the gaming industry, underscoring the need for inclusivity and diversity to drive the sector forward.

PM Modi also spoke about the potential for not just esports and gaming content creation, but also game development itself which is centred around India and its values. He discussed the potential of bringing to life ancient Indian games in a digital format, that too with open-source script so that youngsters all over the country can make their additions to it.