وزیراعظم جناب نریندر مودی کی صدارت میں مرکزی کابینہ نے بنیادی ڈھانچہ ترقیاتی فنڈ (آئی ڈی ایف) کے تحت 2025-26 تک مزید تین سالوں کے لیے 29,610.25 کروڑ روپے کی لاگت سے نافذ کیے جانے والے مویشی پروری انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ فنڈ (اے ایچ آئی ڈی ایف) کو جاری رکھنے کی منظوری دی ہے۔ یہ اسکیم ڈیری پروسیسنگ اور مصنوعات کے تنوع، میٹ پروسیسنگ اور مصنوعات کے تنوع، جانوروں کے فیڈ پلانٹ، نسل کی کثرت فارم، جانوروں کے فضلے سے دولت کے انتظام (ایگری ویسٹ مینجمنٹ) اور ویٹرنری ویکسین اور ادویات کی پیداوار کی سہولیات کے لیے سرمایہ کاری کو فروغ دےگی۔

بھارت سرکار 8 سال کے لیے 3 فیصد سود کی رعایت فراہم کرے گی جس میں شیڈول بینک اور نیشنل کوآپریٹو ڈیولپمنٹ کارپوریشن (این سی ڈی سی)، نابارڈ اور این ڈی ڈی بی سے 90 فیصد تک کے قرض کے لیے دو سال کی مہلت بھی شامل ہے۔ اہل اداروں میں افراد، نجی کمپنیاں، ایف پی او، ایم ایس ایم ای، سیکشن 8 کمپنیاں شامل ہیں۔ اب ڈیری کوآپریٹوز ڈیری پلانٹس کو جدید بنانے اور مضبوط بنانے کے لیے بھی فائدہ اٹھائیں گے۔

بھارت سرکار ایم ایس ایم ای اور ڈیری کوآپریٹوز کو 750 کروڑ روپے کے کریڈٹ گارنٹی فنڈ سے لیے گئے قرض کے 25 فیصد تک کریڈٹ گارنٹی بھی فراہم کرے گی۔

اے ایچ آئی ڈی ایف نے اب تک 141.04 لاکھ ایل ایل پی ڈی (لاکھ لیٹر یومیہ) دودھ کی پروسیسنگ کی صلاحیت، 79.24 لاکھ میٹرک ٹن فیڈ پروسیسنگ کی صلاحیت اور 9.06 لاکھ میٹرک ٹن میٹ پروسیسنگ کی صلاحیت کا اضافہ کیا ہے۔ یہ اسکیم ڈیری، گوشت اور جانوروں کے چارے کے شعبے میں پروسیسنگ کی صلاحیت میں 2-4 فیصد اضافہ کرنے میں کامیاب رہی ہے۔

مویشی پروری کا شعبہ سرمایہ کاروں کو لائیو سٹاک کے شعبے میں سرمایہ کاری کا موقع فراہم کرتا ہے جس سے یہ شعبہ منافع بخش بن گیا ہے جس میں ویلیو ایڈیشن، کولڈ چین اور ڈیری، میٹ، اینیمل فیڈ یونٹس سے لے کر تکنیکی طور پر مدد یافتہ مویشی پروری اور پولٹری ، جانوروں کے فضلے سے دولت پیدا کرنا اور ویٹرنری ادویات/ ویکسین یونٹوں کا قیام شامل ہے۔

ٹیکنالوجی کی مدد سے بریڈ کو بڑھانے والے فارمز، ویٹرنری ادویات اور ویکسین یونٹوں کو مضبوط بنانے، جانوروں کے فضلے سے دولت کے انتظام تک جیسی نئی سرگرمیوں کو شامل کرنے کے بعد، یہ اسکیم لائیو سٹاک سیکٹر میں بنیادی ڈھانچے کو اپ گریڈ کرنے کے لیے ایک بہت بڑے اکان کا مظاہرہ کرے گی۔

یہ اسکیم انٹرپرینیورشپ ڈیولپمنٹ کے ذریعے براہ راست اور بالواسطہ طور پر 35 لاکھ لوگوں کو روزگار فراہم کرنے کا ایک ذریعہ ہوگی اور اس کا مقصد لائیو سٹاک شعبے میں دولت پیدا کرنا ہے۔ اب تک اے ایچ آئی ڈی ایف نے تقریبا 15 لاکھ کسانوں کو براہ راست / بالواسطہ طور پر فائدہ پہنچایا ہے۔ اے ایچ آئی ڈی ایف کسانوں کی آمدنی کو دوگنا کرنے، نجی شعبے کی سرمایہ کاری لا کر لائیو سٹاک کے شعبے سے فائدہ اٹھانے، پروسیسنگ اور ویلیو ایڈیشن کے لیے جدید ترین ٹیکنالوجیلانے اور لائیو سٹاک مصنوعات کی برآمدات کو فروغ دے کر ملکی معیشت میں کم سے کم حصہ ڈالنے کے وزیر اعظم کے ہدف کے حصول کی راہ پر گامزن ہے۔ مستحق مستفیدین کے ذریعے پروسیسنگ اور ویلیو ایڈیشن انفراسٹرکچر میں اس طرح کی سرمایہ کاری سے ان پروسیسڈ اور ویلیو ایڈڈ اجناس کی برآمد کو بھی فروغ ملے گا۔

اس طرح اے ایچ آئی ڈی ایف میں سرمایہ کاری سے نہ صرف نجی سرمایہ کاری کو 7 گنا فائدہ ہوگا بلکہ کسانوں کو ان پٹ پر زیادہ سرمایہ کاری کرنے کی ترغیب ملے گی جس سے زیادہ پیداواری صلاحیت میں اضافہ ہوگا اور کسانوں کی آمدنی بڑھے گی۔

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
Getting excellent feedback, clear people across India voting for NDA, says PM Modi

Media Coverage

Getting excellent feedback, clear people across India voting for NDA, says PM Modi
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
Overwhelming support for the NDA at PM Modi's rally in Nanded, Maharashtra
April 20, 2024
For decades, Congress stalled the development of Vidarbha & Marathwada: PM Modi
The land of Nanded reflects the purity of India's Sikh Gurus: PM Modi
The I.N.D.I alliance only believe in vote-bank politics: PM Modi

Ahead of the Lok Sabha elections, PM Modi addressed a public meeting in Nanded, Maharashtra amid overwhelming support by the people of BJP-NDA. He bowed down to prominent personalities including Guru Gobind Singh Ji, Nanaji Deshmukh, and Babasaheb Ambedkar.

Speaking on the initial phase of voting for the Lok Sabha elections, PM Modi said, “We have the popular support of the First-time voters with us.” He added, “I.N.D.I alliance have come together to save and protect their corruption and the people have thoroughly rejected them in the 1st phase of polling.” He added that the Congress Shehzada now has no choice but to contest from Wayanad, but like he left Amethi he may also leave Wayanad. He said that the country is voting for BJP-NDA for a ‘Viksit Bharat’.

Lamenting the Congress for stalling the development of the people, PM Modi said, “Congress is the wall between the development of Dalits, Poor & deprived.” He added that Congress even today opposes any developmental work that our government intends to carry out. He said that one can never expect them to resolve any issues and people cannot expect robust developmental prospects from them.

Highlighting the dire state and fragile conditions of Marathwada and Vidarbha, PM Modi said, “For decades, Congress stalled the development of Vidarbha & Marathwada.” He “It is the policies of the Congress that both Marathwada and Vidarbha are water-deficient, its farmers are poor and there are no prospects for industrial growth.” He said that our government has enabled 'Nal se Jal' to 80% of households in Nanded. He said that our constant endeavor has been to facilitate the empowerment of our farmers through record rise in MSPs, income support through PM-KISAN, and the promotion of ‘Sree Anna’.

Highlighting the infra impetus in Nanded in the last decade, PM Modi said, “To treat every wound given by Congress is Modi's guarantee.” He added “The ‘Shaktipeeth highway’ and ‘Latur Rail Coach Factory’ is our commitment to a robust infra.” He said that we aim to foster the development of the Marathwada region in the next 5 years.

Elaborating on the relationship between the Sikh Gurus and Nanded, PM Modi said, “The land of Nanded reflects the purity of India's Sikh Gurus.” He added that we are guided by the principles of Guru Gobind Singh Ji. “Over the years we have celebrated the 550th birth anniversary of Guru Nanak Dev Ji, the 400th birth anniversary of Guru Teg Bahadur Ji, and the 350th birth anniversary of Guru Gobind Singh Ji,” said PM Modi. He said that the Congress has always opposed the Sikh community and is taking revenge for 1984. He said that it is due to this that they oppose the CAA that aims to bring the Sikh brothers and sisters to India, granting them citizenship. He said that it was our government that brought back the Guru Granth Sahib from Afghanistan and facilitated the Kartarpur corridor. He said that various other decisions like the abrogation of Article 370 and the abolition of Triple Talaq have greatly benefitted our Muslim sisters and brothers.

Taking a dig at the I.N.D.I alliance, PM Modi said “The I.N.D.I alliance only believe in vote-bank politics.” He added that for this they have left no stone unturned to criticize and disrespect ‘Sanatana’. He said that it is the same I.N.D.I alliance that boycotted the Pran-Pratishtha of Shri Ram.

In conclusion, PM Modi said that we all must strive to ensure that India becomes a ‘Viksit Bharat’, and for that, it is the need of the hour to vote for the BJP-NDA. He thanked the people of Nanded for their overwhelming support and expressed confidence in a Modi 3.0.