PM to inaugurate dedicate to nation and lay the foundation stone of multiple development projects worth more than Rs. 52,250 crore
Projects encompasses important sectors like health, road, rail, energy, petroleum & natural gas, tourism among others
PM to dedicate Sudarshan Setu connecting Okha mainland and Beyt Dwarka
It is India’s longest cable stayed bridge
PM to dedicate five AIIMS at Rajkot, Bathinda, Raebareli, Kalyani and Mangalagiri
PM to lay the foundation stone and dedicate to the nation more than 200 Health Care Infrastructure Projects
PM to inaugurate and dedicate to the nation 21 projects of ESIC
PM to lay foundation stone of the New Mundra-Panipat pipeline project

وزیر اعظم 24 اور 25 فروری، 2024 کو گجرات کا دورہ کریں گے۔ 25 فروری کو، صبح تقریباً 7:45 بجے، وزیر اعظم بیت دوارکا مندر میں پوجا اور درشن کریں گے۔ اس کے بعد صبح تقریباً 8:25 بجے سدرشن سیتو کا دورہ کریں گے۔ اس کے بعد وہ تقریباً 9:30 بجے دوارکادھیش مندر جائیں گے۔

دوپہر تقریباً 1 بجے، وزیر اعظم دوارکا میں 4150 کروڑ روپے سے زیادہ کے متعدد ترقیاتی منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔

اس کے بعد، تقریباً 3:30 بجے، وزیر اعظم ایمس راجکوٹ کا دورہ کریں گے۔ تقریباً 4:30 بجے، وزیر اعظم راجکوٹ کے ریس کورس گراؤنڈ میں 48,100 کروڑ روپے سے زیادہ کے متعدد ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح کریں گے، سنگ بنیاد رکھیں گے اور ملک کے نام وقف کریں گے۔

 

وزیر اعظم دوارکا میں

 

دوارکا میں ایک عوامی تقریب میں، وزیر اعظم تقریباً 980 کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر کردہ اوکھا مین لینڈ اور بیت دوارکا کو جوڑنے والے سدرشن سیتو کو ملک کے نام وقف کریں گے۔ یہ تقریباً 2.32 کلومیٹر کا ملک کا سب سے لمبا کیبل اسٹے پل ہے۔

سدرشن سیتو ایک منفرد ڈیزائن کا حامل ہے، جس میں شریمد بھگود گیتا کی آیات اور دونوں طرف بھگوان کرشن کی تصاویر سے مزین فٹ پاتھ شامل ہے۔ اس میں فٹ پاتھ کے اوپری حصوں پر سولر پینل بھی نصب ہیں، جو ایک میگا واٹ بجلی پیدا کرتے ہیں۔ یہ پل آمد و رفت میں آسانی پیدا کرے گا اور دوارکا اور بیت دوارکا کے درمیان سفر کرنے والے عقیدت مندوں کے وقت میں نمایاں کمی لائے گا۔ پل کی تعمیر سے پہلے، مسافروں کو بیت دوارکا تک پہنچنے کے لیے کشتیوں کی نقل و حمل پر انحصار کرنا پڑتا تھا۔ یہ مشہور پل دیو بھومی دوارکا کے ایک اہم سیاحتی مقام کے طور پر بھی کام کرے گا۔

وزیر اعظم دوسرے منصوبوں کے علاوہ این ایچ-927D کے دھوراجی-جمکنڈورنا-کالاوا سیکشن کو چوڑا کرنے، جام نگر میں علاقائی سائنس سینٹر؛ سکا تھرمل پاور اسٹیشن، جام نگر میں فلو گیس ڈیسلفرائزیشن (ایف جی ڈی) سسٹم کی تنصیب جیسے منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔

 

وزیر اعظم راجکوٹ میں

 

راجکوٹ میں ایک عوامی تقریب میں، وزیر اعظم 48,100 کروڑ روپے سے زیادہ کے متعدد ترقیاتی منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھیں گے، افتتاح کریں گے، اور ملک کو وقف کریں گے، جس میں دوسروں کے علاوہ صحت، سڑک، ریل، توانائی، پٹرولیم اور قدرتی گیس، سیاحت جیسے اہم شعبے شامل ہیں۔

ملک میں تیسرے درجے کی صحت کی دیکھ بھال کو مضبوط بنانے کی سمت ایک اہم قدم کے طور پر، وزیر اعظم جناب نریندر مودی راجکوٹ (گجرات)، بھٹنڈہ (پنجاب)، رائے بریلی (اتر پردیش)، کلیانی (مغربی بنگال) اور منگلاگیری (آندھرا پردیش) میں پانچ آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) کو ملک کے نام وقف کریں گے۔

وزیر اعظم 23 ریاستوں / مرکز زیر انتظام علاقوں میں 11,500 کروڑ روپے سے زیادہ کی مالیت کے 200 سے زیادہ ہیلتھ کیئر انفراسٹرکچر منصوبوں کا سنگ بنیاد بھی رکھیں گے اور ملک کے نام وقف کریں گے۔

وزیر اعظم کرائیکل، پڈوچیری میں جے آئی پی ایم ای آر کے میڈیکل کالج اور سنگرور، پنجاب میں پوسٹ گریجویٹ انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل اینڈ ایجوکیشنل ریسرچ (پی جی آئی ایم ای آر) کے 300 بستروں والے سیٹلائٹ سینٹر کا افتتاح کریں گے۔ وہ یانم، پڈوچیری میں جے آئی پی ایم ای آر کے 90 بستروں والے ملٹی اسپیشلٹی کنسلٹنگ یونٹ، چنئی میں نیشنل سینٹر فار ایجنگ؛ پورنیا، بہار میں نئے سرکاری میڈیکل کالج؛ آئی سی ایم آر کے 2 فیلڈ یونٹس، نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی کیرالہ یونٹ، الاپپوزا، کیرالہ میں اور نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ریسرچ ان ٹی بی (این آئی آر ٹی): نیو کمپوزٹ ٹی بی ریسرچ فیسیلٹی، ترولور، تمل ناڈو کا افتتاح کریں گے۔ وزیر اعظم پنجاب کے فیروز پور میں پی جی آئی ایم ای آر کے 100 بستروں والے سیٹلائٹ سینٹر، آر ایم ایل ہسپتال، دہلی میں میڈیکل کالج کی نئی عمارت؛ آر آئی ایم ایس، امفال میں کریٹیکل کیئر بلاک؛ جھارکھنڈ میں کوڈرما اور دمکا میں نرسنگ کالج سمیت صحت کے مختلف منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔

ان کے علاوہ، قومی صحت مشن اور وزیر اعظم - آیوشمان بھارت ہیلتھ انفراسٹرکچر مشن (پی ایم-اے بی ایچ آئی ایم) کے تحت، وزیر اعظم 115 منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھیں گے اور ملک کے نام وقف کریں گے۔ ان میں دیگر کے علاوہ پی ایم-اے بی ایچ آئی ایم کے تحت 78 منصوبے (کریٹیکل کیئر بلاکس کے 50 یونٹ، انٹیگریٹڈ پبلک ہیلتھ لیب کے 15 یونٹ، بلاک پبلک ہیلتھ یونٹس کے 13 یونٹ)، قومی صحت مشن کے تحت مختلف منصوبوں کے 30 یونٹ جیسے کمیونٹی ہیلتھ سینٹر، پرائمری ہیلتھ کیئر سینٹر، ماڈل اسپتال، ٹرانزٹ ہاسٹل وغیرہ شامل ہیں۔

وزیر اعظم پونے میں نیسرگ گرام کے نام سے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف نیچروپیتھی کا بھی افتتاح کریں گے۔ اس میں نیچروپیتھی میڈیکل کالج کے ساتھ ملٹی ڈسپلنری ریسرچ اینڈ ایکسٹینشن سنٹر کے ساتھ 250 بستروں کا ہسپتال شامل ہے۔ اس کے علاوہ، وہ جھجر، ہریانہ میں یوگا اور نیچروپیتھی کے علاقائی ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کا بھی افتتاح کریں گے۔ اس میں اعلیٰ سطح کے یوگا اور نیچروپیتھی ریسرچ کی سہولیات ہوں گی۔

تقریب کے دوران، وزیر اعظم ایمپلائیز اسٹیٹ انشورنس کارپوریشن (ای ایس آئی سی) کے تقریباً 2280 کروڑ روپے کے 21 منصوبوں کا افتتاح کریں گے اور ملک کے نام وقف کریں گے۔ ملک کے لیے وقف کیے جانے والے منصوبوں میں پٹنہ (بہار) اور الور (راجستھان) میں 2 میڈیکل کالج اور اسپتال، کوربا (چھتیس گڑھ)، ادے پور (راجستھان)، آدتیہ پور (جھارکھنڈ)، پھلواری شریف (بہار)، تروپور (تمل ناڈو)، کاکیناڈ (آندھرا پردیش) اور چھتیس گڑھ میں رائے گڑھ اور بھیلائی میں 8 اسپتال؛ اور راجستھان میں نیمرانہ، ابو روڈ، اور بھلواڑہ میں 3 ڈسپنسریاں شامل ہیں۔ راجستھان کے الور، بہرور اور سیتا پورہ، سیلاکی (اتراکھنڈ)، گورکھپور (اتر پردیش)، کیرالہ میں کوراتی اور ناویکولم اور پیڈیبھیماورم (آندھرا پردیش) میں 8 مقامات پر ای ایس آئی ڈسپنسریوں کا افتتاح بھی کیا جائے گا۔

خطے میں قابل تجدید توانائی کی پیداوار کو بڑھانے کی سمت میں ایک قدم کے طور پر، وزیر اعظم 300 میگاواٹ کے بھوج-II شمسی توانائی کے منصوبے سمیت قابل تجدید توانائی کے مختلف منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔

وزیر اعظم 9000 کروڑ روپے سے زیادہ کے نیو مندرا-پانی پت پائپ لائن پروجیکٹ کا بھی سنگ بنیاد رکھیں گے۔ 8.4 ایم ایم ٹی پی اے کی نصب صلاحیت کے ساتھ 1194 کلومیٹر لمبی مندرا-پانی پت پائپ لائن کو گجرات کے ساحل پر مندرا سے ہریانہ کے پانی پت میں انڈین آئل کی ریفائنری تک خام تیل کی ترسیل کے لیے شروع کیا گیا تھا۔

خطے میں سڑک اور ریل کے بنیادی ڈھانچے کو مضبوط کرتے ہوئے، وزیر اعظم سریندر نگر-راجکوٹ ریل لائن کو دو گنا کرنے، پرانے این ایچ-8E کے بھاؤ نگر- تلہجا (پیکیج-1)؛ این ایچ-751 کے پپلی-بھاؤ نگر (پیکیج-1) کو چار لین کا بنانے کے کام کو ملک کے نام وقف کریں گے۔ وہ دیگر کے علاوہ سمکھیالی سے سنتل پور سیکشن تک این ایچ-27 تک چھ لین کی پکی سڑک کا سنگ بنیاد بھی رکھیں گے۔

 

Explore More
لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن

Popular Speeches

لال قلعہ کی فصیل سے 77ویں یوم آزادی کے موقع پر وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خطاب کا متن
Video |India's Modi decade: Industry leaders share stories of how governance impacted their growth

Media Coverage

Video |India's Modi decade: Industry leaders share stories of how governance impacted their growth
NM on the go

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
PM Modi addresses a public meeting in Dwarka, West Delhi
May 22, 2024
Congress and the INDI alliance’s only agenda is Family First: PM Modi in Dwarka, West Delhi
Congress has destroyed many generations of SC-ST-OBC: PM Modi in Dwarka, West Delhi
INDI alliance is a symbol of every evil that exists in country today: PM Modi in Dwarka, West Delhi
Congress & INDI alliance are highly communal, casteist, family-oriented: PM in Dwarka, West Delhi

Addressing a massive gathering in Dwarka, West Delhi, Prime Minister Narendra Modi highlighted the critical role Delhi plays in shaping the nation's political landscape and urged voters to make informed choices in the ongoing elections.

During his speech, PM Modi emphasized the stark differences between the governance models of the BJP and the Congress-led INDI alliance. He underscored the BJP's commitment to fast-paced development and efficient governance, contrasting it with the slow progress and systemic injustice perpetuated by the Congress and its allies.

PM Modi presented a series of statistics to illustrate the transformative impact of BJP's policies compared to Congress' legacy. He highlighted significant achievements in infrastructure development, healthcare, education, and economic growth under the BJP government, showcasing the administration's dedication to serving all sections of society.

Furthermore, PM Modi denounced the communal and casteist agendas of the INDI alliance, accusing them of prioritizing vote-bank politics over the welfare of the nation. He criticized their divisive tactics and highlighted instances of communal violence and corruption under their rule.

He said, “The BJP’s development model says, Nation First. On the other hand, Congress and the INDI alliance’s only agenda is Family First. This INDI alliance is a symbol of every evil that exists in the country today. They are highly communal, casteist, and family-oriented. Our Delhi has been a direct witness to their communalism.”

“It was in this very Delhi that my Sikh brothers and sisters were burned alive with burning tires around their necks. Whose crime was this? Congress. Today, every party standing under the Congress umbrella is guilty of the Sikh riots. It is Modi who is delivering justice to the victims of the Sikh riots. As soon as Modi came to power, an SIT was formed. Hundreds of cases were reopened. The Congress leaders who were roaming freely have been punished by us,” he added.

Speaking about the Congress and INDI alliance’s misrule and caste-based politics, PM Modi said, “Who doesn’t know about the prestigious Jamia Millia Islamia Central University in Delhi? For 60 years, it remained a regular educational institution, even there, Dalits, backward classes, and tribals used to get reservations. But in 2011, the Congress government played a trick. Suddenly Jamia Millia University was declared a minority institution. This imposed a 50 percent reservation for Muslims in Jamia Millia University. Earlier, all SC/ST/OBCs used to get reservations in admissions. Now even that has been restricted based on religion.”

“Earlier, the authority of the Minority Educational Institution Commission was limited to colleges. But Congress suddenly included universities as well. Now you tell me. It has been almost a decade and a half, hundreds of admissions have happened, hundreds of recruitments have taken place, but all SC/ST/OBCs are not getting their rights. This is what they want to implement across the country,” he added.

Discarding Congress and INDI alliance’s appeasement and vote bank politics, PM Modi said, “Just today, the Calcutta High Court has given a big slap to this INDI alliance. The court has canceled all OBC certificates issued since 2010. Why? Because they issued unwarranted OBC certificates to Muslims. They have crossed every limit in their obsession with appeasement.”

Highlighting deep-rooted corruption in Congress and the INDI alliance, the Prime Minister said, “Many times, even though speaking thousands of lies, the truth eventually comes out of the Shehzada's mouth. Today, the Shehzada of Congress has accepted a big truth. The Shehzada has admitted that the system established during his grandmother's, father's, and mother's time, was vehemently opposed to Dalits, backward classes, and tribals. This very system of Congress has destroyed many generations of SC-ST-OBC. Today, the Shehzada himself has acknowledged this fact.”

PM Modi also reiterated his government's commitment to transparency and accountability, pledging to root out corruption and ensure justice for all. He emphasized the need for strong governance and urged voters to support BJP candidates in the upcoming elections to strengthen India's development trajectory.

“The Government of India is spending billions of rupees on the connectivity infrastructure in Delhi. The magnificent expressways we are building, and they are not only making travel easier but also helping to reduce the mountains of garbage. You will be amazed to know, that 150,000 metric tons of waste from Okhla and Ghazipur have been used in the Delhi-Mumbai Expressway,” said PM Modi.

The Prime Minister concluded his address by urging voters to participate actively in the electoral process and make their voices heard. He expressed confidence in the BJP's vision for a prosperous and inclusive India and called upon the people of Delhi to support BJP candidates in the upcoming polls.