Share
 
Comments
چھتیس گڑھ میں پہلے مرحلے کے انتخابات میں عوام نے بڑی تعداد میں ووٹ ڈالے۔ انہوں نے ڈر اور خوف کا ماحول پیدا کرنے والوں کو منھ توڑ جواب دیا: وزیر اعظم
ہمارا اصول ہے ’سب کا ساتھ، سب کا وِکاس‘ اور ہم اس امر کو لے کر عہد بستہ ہیں ترقی کے فوائد ہر شہری تک پہنچے: وزیر اعظم مودی
اٹل جی نے مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ ریاستیں پیدا کیں۔ یہ ایک پر امن تقسیم تھی اور آج دونوں ہی ریاستیں تیزی کے ساتھ ترقی کر رہی ہیں: وزیر اعظم مودی
کانگریس ’چائے والا‘ وزیر اعظم منتخب کرنے کا سہرا عوام کو نہیں دینا چاہتی: جناب مودی
جناب مودی کا کہناہے کہ کانگریس چائے والے کے وزیر اعظم بننے کا سہرا اس ملک کے 1.25 کروڑ عوام کو نہیں دینا چاہتی ہے۔

وزیر اعظم مودی نے ریاست چھتیس گڑھ، جہاں انتخابی سرگرمیاں زوروں پر ہیں، میں ایک بڑی ریلی سے خطاب کیا۔ امبیکاپور، چھتیس گڑھ میں پرجوش حمایتیوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چھتیس گڑھ میں پہلے مرحلے کے انتخابات عوام کی پرجوش شرکت حوصلہ افزا ہے اور اس ان لوگوں کو کرارا جواب ملا ہے جو چاہتےہیں کہ چھتیس گڑھ کے عوام ان سے ڈر کر رہیں۔

وزیر اعظم مودی نے مزید زور دیتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت محض چند لوگوں کے مفادات کے لئے کام نہیں کر رہی ہے اور ان کی حکومت ’سب کا ساتھ، سب کا وِکاس‘ کو لے کر پوری طرح عہدبستہ ہے۔ وزیر اعظم مودی نے کہا کہ یہ افسوسناک امر ہے کہ آزادی ملنے کے دہائیوں بعد بھی ملک میں رونما ہونے والی ترقی کے فوائد ہر شہری تک نہیں پہنچے ہیں۔ سابقہ کانگریس حکومت پر محض اپنے مفادات کا خیال رکھنے اور ملک کے عوام کے مفادات کو نظر انداز کرنے پر تنقید کرتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے وضاحت کی کہ کس طرح سابق وزیر اعظم آنجہانی اٹل بہاری واجپئی کے ذریعہ مدھیہ پردیش کی تقسیم اور چھتیس گڑھ کا قیام ایک پر امن عمل تھا ، دونوں ہی ریاستیں پھل پھول رہی ہیں۔ وہیں دوسری جانب کانگریس حکومت کے ذریعہ آندھرا پردیش کی تقسیم اور تیلنگانا کے قیام کے عمل کے نتیجے میں بے اطمینانی اور دونوں ریاستوں کے درمیان تناؤ پیدا ہوا۔

بعد ازاں وزیر اعظم نریندر مودی نے کانگریسی لیڈروں کی وزیر اعلیٰ ڈاکٹر رمن سنگھ کے زیر قیادت چھتیس گڑھ حکومت کے متعلق غلط معلومات فراہم کرانے پر نکتہ چینی کی۔ ریاستی حکومت پر کانگریس کے اس الزام کے لئے کہ رمن سنگھ حکومت نے یہ نہیں کیا وہ نہیں کیا،کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم نے خود ان سے ہی سوال پوچھ ڈالا۔ انہوں نے پوچھا کہ ، ’’اگر رمن سنگھ حکومت چھتیس گڑھ میں کچھ نہیں کر رہی ہے، تو کانگریس پارٹی کو ان فلاحی اسکیموں کا کریڈٹ لینے سے کس نے روکا جب ان کے کنبے نے چار پیڑھیوں تک اس ملک پر حکومت کی تھی؟کانگریس لیڈروں سے پوچھا جائے کہ وہ اب تک کیا کر رہے تھے؟‘‘

 

 

 

وزیر اعظم مودی نے اپنے خطاب کا خاتمہ عوام سے 20 نومبر کو چھتیس گڑھ میں دوسرے مرحلے کے انتخابات میں بڑی تعداد میں ووٹ ڈالنے کی اپیل کرتے ہوئے کیا۔

I am glad to be among the people of Ambikapur today. I remember when I had campaigned here during Lok Sabha elections, people here had made the background resembling the Red Fort. But a few people got annoyed at this: PM @narendramodi https://t.co/3MrqM6YXeK

20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Mann KI Baat Quiz
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
Business optimism in India at near 8-year high: Report

Media Coverage

Business optimism in India at near 8-year high: Report
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
سوشل میڈیا کارنر،29 نومبر 2021
November 29, 2021
Share
 
Comments

As the Indian economy recovers at a fast pace, Citizens appreciate the economic decisions taken by the Govt.

India is achieving greater heights under the leadership of Modi Govt.