Share
 
Comments
Fruits of science, technology and innovation must reach the common man and facilitate ease of living for the people: PM Modi
PM Modi urges PM-STIAC to establish strong linkages between educational institutions, R&D labs, industry and various government departments

The Prime Minister, Shri Narendra Modi, today met and interacted with the members of his Science, Technology and Innovation Advisory Council (PM-STIAC). This Council renders advice on all matters related to Science, Technology and Innovation and monitors the implementation of the Prime Minister’s vision on these issues.

Members of the Council briefed the Prime Minister on various steps being taken to nurture innovation and research in key sectors of science and technology.

The Prime Minister emphasized that the fruits of science, technology and innovation must reach the common man, solve common day-to-day problems, and facilitate ease of living for the people of India. In this context, he urged the Council members to work towards establishing strong linkages between the educational institutions, R&D labs, industry and various government departments. He reiterated the need to break silos among academic and research institutions.

The Prime Minister called for development of suitable platforms and mechanisms which can identify and nurture scientific talent among schoolchildren, and link them to Atal Tinkering Labs at the district and regional level. In this context, the Prime Minister mentioned some priority areas of research such as raising agricultural income, solutions for chronic and genetic diseases such as sickle cell anaemia, waste management and cyber security.

The meeting was attended by Principal Scientific Advisor to the Prime Minister, Prof. K. VijayRaghavan, members of the Council, and senior officers of the Government of India.

20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Mann KI Baat Quiz
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt

Media Coverage

52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
وزیراعظم 3 دسمبر کو اِن فنیٹی فورم کا افتتاح کریں گے
November 30, 2021
Share
 
Comments
فورم کی خاص توجہ کا مرکز فورم کا موضوع‘ماوراء ہوگا جس کے ذیلی موضوعات میں فنٹیک- سرحدوں سے ماوراء، فنٹیک -مالیات سے ماوراء اور فنٹیک- آئندہ سے ماوراء شامل ہوں گے

وزیراعظم جناب نریندر مودی 3 دسمبر 2021 کو صبح 10 بجے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے اِن  فنیٹی فورم کاافتتاح کریں گے۔ جو فنٹیک کے موضوع پر مفکرین کا ایک فورم ہے۔

اس پروگرام کی میزبانی انٹر نیشنل فائنائشنل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی  ایف ایس  سی اے) کی طرف سے بھارتی حکومت کی سرپرستی میں 3 اور 4 دسمبر 2021 کو کی جارہی ہے۔اس میں گفٹ سٹی اوربلوم برگ کا تعاون شامل رہے گا۔جنوبی افریقہ اور برطانیہ اس فورم کے پہلے ایڈیشن میں شریک ممالک ہیں۔

اِن فینٹی فورم پالیسی، کاروبار اور ٹیکنالوجی سے جڑے ہوئے دنیا کے بہترین اور اعلی دانشوروں کو ایک جگہ پر جمع کر ے گا۔اس کامقصد تبادلہ خیال کرکے اس بارے میں قابل عمل معلومات متعارف کرانا ہوگا کہ کس طرح ٹیکنالوجی اور اختراعات، فنٹیک صنعتی برادری کے لئے جامع ترقی اور بڑے پیمانے پر انسانیت کی خدمت  کے سلسلے میں بہت سود مند ثابت ہوسکتی ہیں۔

 فورم کے ایجنڈے کی خاص توجہ اپنے موضوع‘ ماوراء’ پر رہے گی، اور اس کے کچھ ذیلی موضوعات بھی ہوں گے۔ ان موضوعات میں ‘فنٹیک سرحدوں کے ماوراء’کے تحت حکومت اور کاروباری ادارے مالیاتی شمولیت کو فروغ  دینےکے لئے عالمی نظام کی ترقی میں جغرافیائی سرحدوں سے ماوراء ہو کر غوروفکر کریں گے۔‘ فنٹیک مالیات کے ماوراء’ کے تحت خلائی ٹیکنالوجی، سبز ٹیکنالوجی  اور زرعی ٹیکنالوجی جیسے شعبوںکو ایک دوسرے میں ضم کرکے ایک پائیدار ترقی کے پروگرام کو آگے بڑھانے کی کوشش کی جائے گی۔‘ فنٹیک آئندہ سے ماوراء’ کے تحت اس بار پر توجہ کی جائے گی کہ مستقبل میں کوانٹم کمپیوٹنگ کس طرح فنٹیک صنعت کی نوعیت کو متاثر کرسکتی ہے اور نئے مواقع کو فروغ دے سکتی ہے۔

اس فورم میں 70 سے زیادہ ممالک کے نمائندے شرکت کریں گے۔ اس فورم میں تقریریں کرنے والوں میں خاص طور پر ملیشیا کے وزیر  خزانہ جناب ٹنکو ظفرالعزیز، انڈونیشیا کی وزیر خزانہ محترمہ مولیانی اندرا وتی، انڈونیشیا کی تخلیقی اقتصادیات کے وزیر جناب سنڈیاگا ایس یونو، ریلائنس انڈسٹریز کے چیئرمین اور مینجنگ ڈائریکٹر جناب مکیش امبانی، سافٹ بینک گروپ کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب مسایوشی سونگ، آئی بی ایم کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب اروند کرشنا، کوٹک مہندرا بینک لمٹیڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر اور سی ای  او جناب اودے کوٹک کے علاوہ دیگر لوگوں کے نام بھی شامل ہیں۔اس سال منعقد ہونے والے فورم میں کلیدی طور پر شرکت کرنے والوں میں نیتی آیوگ ، انویسٹ انڈیا ، فکی اور  نیسکام شامل ہے۔

انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی ایف ایس سی اے) جس کا ہیڈ کوارٹر گفٹ سٹی، گاندھی نگر گجرات میں ہے،انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی ایکٹ 2019 کے تحت قائم کی گئی ہے۔یہ ہندوستان میں انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز(آئی ایف ایس سی) کے مالی مصنوعات ، مالی خدمات اور مالیاتی اداروں کی ترقی اور ضابطہ بندی کے لئے  ایک مکمل اتھاریٹی کی حیثیت سے کام کرتی ہے۔سردست، گفٹ  آئی ایف ایس سی ہندوستان میں واحد بین الاقوامی مالیاتی خدمات کا مرکز ہے۔