Share
 
Comments
"Narendra Modi campaigns in Chandigarh"
"Narendra Modi appeals to the voters to elect Kirron Kher and reject the corrupt Congress"
"UPA has become a burden for the nation and the people of India have understood that: Narendra Modi"

 

On the evening of Saturday 29th March 2014 Shri Narendra Modi addressed a large public meeting in Chandigarh. Shri Modi made a strong pitch to the voters of Chandigarh to elect Smt. Kirron Kher as their MP and defeat the corrupt ways of the Congress, which have been exposed after former Minister Shri Pawan Kumar Bansal has been given the ticket. “Chandigarh Ko Vikas Ki Kiran Chaiye, Na Ki Bhrashtachar Ka Pawan” (Chandigarh requires the rays of progress, not the winds of corruption) he affirmed. On the mood of the nation, Shri Modi affirmed that the mood was clear and that the nation has understood what a big burden the UPA has become.

Shri Modi said that coming to Chandigarh is like coming back to his own home, recalling the years he spent in Chandigarh when he was doing Party work in the 1990s. He raised issues pertaining to the ex-servicemen and took on the Congress for playing politics on the issue of ‘One Rank, One Pension’ for the servicemen. Shri Modi stressed on the importance of good governance for giving the youth of India a sound future. He talked about how technology can play a positive role in mitigating corruption, giving examples from his experience in Gujarat.

Taking on the UPA for giving a ticket to Shri Pawan Kumar Bansal, Shri Modi question why he was removed from the Ministry and if he was removed why was he given a ticket? “Corruption is a part of the Congress and a Congress Mukt Bharat is the way ahead for achieving a corruption free India,” pointed Shri Modi.

Shri Modi shared that vested interest groups have joined hands to prevent the NDA from coming to power and added that the Congress is wondering how can a tea-seller from a humble background challenge their might. 

Deputy CM of Punjab Shri Sukhbir Singh Badal was present on the occasion. Others present include Smt. Kirron Kher, Shri Satya Pal Jain, Smt. AartiMehra among others.

20 تصاویر سیوا اور سمرپن کے 20 برسوں کو بیاں کر رہی ہیں۔
Mann KI Baat Quiz
Explore More
It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi

Popular Speeches

It is now time to leave the 'Chalta Hai' attitude & think of 'Badal Sakta Hai': PM Modi
52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt

Media Coverage

52.5 lakh houses delivered, over 83 lakh grounded for construction under PMAY-U: Govt
...

Nm on the go

Always be the first to hear from the PM. Get the App Now!
...
وزیراعظم 3 دسمبر کو اِن فنیٹی فورم کا افتتاح کریں گے
November 30, 2021
Share
 
Comments
فورم کی خاص توجہ کا مرکز فورم کا موضوع‘ماوراء ہوگا جس کے ذیلی موضوعات میں فنٹیک- سرحدوں سے ماوراء، فنٹیک -مالیات سے ماوراء اور فنٹیک- آئندہ سے ماوراء شامل ہوں گے

وزیراعظم جناب نریندر مودی 3 دسمبر 2021 کو صبح 10 بجے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے اِن  فنیٹی فورم کاافتتاح کریں گے۔ جو فنٹیک کے موضوع پر مفکرین کا ایک فورم ہے۔

اس پروگرام کی میزبانی انٹر نیشنل فائنائشنل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی  ایف ایس  سی اے) کی طرف سے بھارتی حکومت کی سرپرستی میں 3 اور 4 دسمبر 2021 کو کی جارہی ہے۔اس میں گفٹ سٹی اوربلوم برگ کا تعاون شامل رہے گا۔جنوبی افریقہ اور برطانیہ اس فورم کے پہلے ایڈیشن میں شریک ممالک ہیں۔

اِن فینٹی فورم پالیسی، کاروبار اور ٹیکنالوجی سے جڑے ہوئے دنیا کے بہترین اور اعلی دانشوروں کو ایک جگہ پر جمع کر ے گا۔اس کامقصد تبادلہ خیال کرکے اس بارے میں قابل عمل معلومات متعارف کرانا ہوگا کہ کس طرح ٹیکنالوجی اور اختراعات، فنٹیک صنعتی برادری کے لئے جامع ترقی اور بڑے پیمانے پر انسانیت کی خدمت  کے سلسلے میں بہت سود مند ثابت ہوسکتی ہیں۔

 فورم کے ایجنڈے کی خاص توجہ اپنے موضوع‘ ماوراء’ پر رہے گی، اور اس کے کچھ ذیلی موضوعات بھی ہوں گے۔ ان موضوعات میں ‘فنٹیک سرحدوں کے ماوراء’کے تحت حکومت اور کاروباری ادارے مالیاتی شمولیت کو فروغ  دینےکے لئے عالمی نظام کی ترقی میں جغرافیائی سرحدوں سے ماوراء ہو کر غوروفکر کریں گے۔‘ فنٹیک مالیات کے ماوراء’ کے تحت خلائی ٹیکنالوجی، سبز ٹیکنالوجی  اور زرعی ٹیکنالوجی جیسے شعبوںکو ایک دوسرے میں ضم کرکے ایک پائیدار ترقی کے پروگرام کو آگے بڑھانے کی کوشش کی جائے گی۔‘ فنٹیک آئندہ سے ماوراء’ کے تحت اس بار پر توجہ کی جائے گی کہ مستقبل میں کوانٹم کمپیوٹنگ کس طرح فنٹیک صنعت کی نوعیت کو متاثر کرسکتی ہے اور نئے مواقع کو فروغ دے سکتی ہے۔

اس فورم میں 70 سے زیادہ ممالک کے نمائندے شرکت کریں گے۔ اس فورم میں تقریریں کرنے والوں میں خاص طور پر ملیشیا کے وزیر  خزانہ جناب ٹنکو ظفرالعزیز، انڈونیشیا کی وزیر خزانہ محترمہ مولیانی اندرا وتی، انڈونیشیا کی تخلیقی اقتصادیات کے وزیر جناب سنڈیاگا ایس یونو، ریلائنس انڈسٹریز کے چیئرمین اور مینجنگ ڈائریکٹر جناب مکیش امبانی، سافٹ بینک گروپ کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب مسایوشی سونگ، آئی بی ایم کارپوریشن کے چیئرمین اور سی ای او جناب اروند کرشنا، کوٹک مہندرا بینک لمٹیڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر اور سی ای  او جناب اودے کوٹک کے علاوہ دیگر لوگوں کے نام بھی شامل ہیں۔اس سال منعقد ہونے والے فورم میں کلیدی طور پر شرکت کرنے والوں میں نیتی آیوگ ، انویسٹ انڈیا ، فکی اور  نیسکام شامل ہے۔

انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی(آئی ایف ایس سی اے) جس کا ہیڈ کوارٹر گفٹ سٹی، گاندھی نگر گجرات میں ہے،انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز اتھاریٹی ایکٹ 2019 کے تحت قائم کی گئی ہے۔یہ ہندوستان میں انٹر نیشنل فائنانشیل سروسز سینٹرز(آئی ایف ایس سی) کے مالی مصنوعات ، مالی خدمات اور مالیاتی اداروں کی ترقی اور ضابطہ بندی کے لئے  ایک مکمل اتھاریٹی کی حیثیت سے کام کرتی ہے۔سردست، گفٹ  آئی ایف ایس سی ہندوستان میں واحد بین الاقوامی مالیاتی خدمات کا مرکز ہے۔